Chitral Times

May 21, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

عید پر ون ویلنگ کی روک تھام اور سیاحتی مقامات پر ٹریفک مینجمنٹ کے حوالے سے اقدامات کئے گئے ہیں اور سیاحتی مقامات پر عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولیات دی جائیں گی۔ چیف سیکریٹری

Posted on
شیئر کریں:

عید پر ون ویلنگ کی روک تھام اور سیاحتی مقامات پر ٹریفک مینجمنٹ کے حوالے سے اقدامات کئے گئے ہیں اور سیاحتی مقامات پر عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولیات دی جائیں گی۔ چیف سیکریٹری

 

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) پیر کے روز چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا ندیم اسلم چوہدری اور انسپکٹر جنرل آف پولیس اختر حیات خان کی زیرصدارت عیدالفطر کے انتظامات کے حوالے سے اعلیٰ سطحی اجلاس منعقد ہوا جس میں ایڈیشنل چیف سیکرٹری محکمہ داخلہ عابد مجید اور متعلقہ سیکرٹریز شریک ہوئے جبکہ کمشنرز، ریجنل پولیس آفیسرز، ڈپٹی کمشنرز اور دیگر افسران نے بذریعہ ویڈیو لنک شرکت کی۔ اِجلاس میں عیدالفطر کی تیاریوں کے حوالے سے تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اس موقع پر چیف سیکرٹری نے عید کے دنوں میں انتظامیہ کو مکمل طور پر الرٹ رہنے کی ہدایت کی ہے۔اجلاس میں صوبے میں سیکیورٹی انتظامات کے حوالے سے جائزہ لیا گیا۔

 

افسران کو عید کے دوران اپنے ڈیوٹی اسٹیشن پر رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ چاند رات پر ہوائی فائرنگ کی روک تھام کیلئے سخت اقدامات اٹھائے جائیں۔ اجلاس میں عوام کیلئے ٹرانسپورٹ کی دستیابی اور سرکاری نرخ ناموں کے مطابق کرایوں کی وصولی کو یقینی بنانے کی ہدایت کی گئی۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ عید پر ون ویلنگ کی روک تھام اور سیاحتی مقامات پر ٹریفک مینجمنٹ کے حوالے سے اقدامات کئے گئے ہیں اور سیاحتی مقامات پر عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولیات دی جائیں گی، ندیوں، دریاؤں اور ڈیمز میں بغیر حفاظتی انتظامات کے کشتیاں چلانے پر پابندی عائد ہوگی، سیاحتی مقامات پر فیسلیٹیشن سنٹرز اپنا کام جوبیس گھنٹے جاری رکھیں گے۔ اجلاس کو محکمہ صحت کی طرف سے کسی بھی ایمرجنسی صورتحال سے نمٹنے کے لیے دی گئی ہدایات کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔ اس موقع پر ہسپتالوں میں سٹاف اور ادویات کی دستیابی کو یقینی بنانے کی ہدایات بھی جاری کی گئیں۔سیاختی مقامات پر پیٹرول پمپس پر تیل کی دستیابی یقینی بنانے کے لیے اقدامات بارے اجلاس کو آگاہ کیا گیا۔اس موقع پر چیف سیکرٹری نے ہدایات جاری کیں کہ عید کے موقع پر جیلوں اور یتیم خانوں کے دورے کیے جائیں گے۔

 

ڈپٹی کمشنر دفاتر میں 24 گھنٹے کنٹرول روم اپنا کام جاری رکھیں گے۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ تمام اضلاع کے لئے عید پر سیکیورٹی پلان جاری کردیئے گئے ہیں۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ چاند رات اور عیدگاہوں کی سیکیورٹی کے لئے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔ عید پر فیملیز کیلئے پارکس اور تفریحی مقامات پر سیکیورٹی اور لیڈیز پولیس کی تعیناتی کو یقینی بنایا جائے گا۔آئی جی پولیس نے آر پی اوز اور ضلعی پولیس افسران کو ہدایات جاری کیں کہ عید کے موقع پر بازاروں سمیت عوامی مقامات پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے جائیں اور چاند رات پر ہوائی فائرنگ کے تدارک کے لئے بھی خصوصی اقدامات اٹھائے جائیں۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ عیدکے دوران ریسکیو 1122 سمیت دیگر ادارے متحرک رہیں گے۔ چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا نے عید پر سیاحتی مقامات پر جاری ایس او پیز پر مکمل عمل درآمد کروانے کی ہدایت کی۔ اجلاس میں موبائل فون اسمگلنگ، فیبرک اسمگلنگ، تیل اور اشیائے خوردونوش کی اسمگلنگ کے تدارک کے حوالے سے بھی خصوصی ہدایات جاری کی گئیں۔ چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا کا مزید کہنا تھا کہ اشیائے خوردونوش کی ذخیرہ اندوزی کرنے والوں کے خلاف کاروائیاں جاری رکھی جائیں گی۔

 

 

عمران خان حکومت کے آخری سال میں ترسیلات زر اور برآمدات تاریخ کی بلند ترین سطح پر تھیں۔ مشیر خزانہ خیبرپختونخوا مزمل اسلم
پی ڈی ایم کی پچھلے دو سال اور اگلے دو سال کی کارکردگی 1950 سے بھی بدترین ہے۔ مشیر خزانہ خیبرپختونخوا مزمل اسلم

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے مشیر خزانہ مزمل اسلم نے ملک میں بڑھتی مہنگائی پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان کی حکومت جانے کے بعد پاکستان کی معاشی کارکردگی آج کس دھانے پر کھڑی ہے 9 اپریل 2022 کو عمران خان کی حکومت کے خلاف عدم اعتماد لائی گئی جسکو دو سال مکمل ہوگئے۔ مزمل اسلم نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کے خلاف عدم اعتماد لانے کا سبب مہنگائی بتایا گیا اور کہا گیا کہ پاکستان کی معیشت اچھی نہیں چل رہی اور عمران خان کی حکومت گرانے کے بعد پی ڈی ایم اسکو سدھاریگی۔ مشیر خزانہ خیبرپختونخوا نے کہا کہ عمران خان کی حکومت میں کرونا کے دو سال کے دوران کارکردگی پر پوری دنیاحیران تھی اور کرونا جیسی وبا ء کے دوران بھارت سمیت جب بڑی بڑی معیشیتں ناکام ہوگئیں،پاکستان کی شرح نمو کی رفتاربھارت سے زیادہ تھی اور کرونا وائرس کے دوران پاکستان کی معیشیت نا ہونے کے برابر سکڑی اور عمران خان حکومت کے آخری سال میں ترسیلات زر اور برآمدات تاریخ کی بلند ترین سطح پر تھیں۔ انہوں نے کہا عدم اعتماد کے بعد سب تہس نہس ہوگیا اور عمران خان کے دور حکومت کے آخری مہینے میں مہنگائی 12 فیصد سے بھی کم تھی۔

 

مشیر خزانہ خیبرپختونخوا نے کہا کہ ہم نے سنہرے دور کا سنا تھا لیکن عمران خان کی حکومت کے بعد ایک سیاہ دور کا آغاز ہوا اوراس سیاہ دور نے پاکستان کو 50 سال پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ مشیر خزانہ خیبرپختونخوا نے کہا کہ پی ڈی ایم سمیت شہباز حکومت نے سمجھا عمران خان کی چھوڑی ہوئی معاشی ترقی پر اقتدار پر بیٹھ جائینگے اور قدرت کا قانون ہے جب گروتھ منفی رہے تو اگلے سال گروتھ اوپر جاتی ہے۔ مشیر خزانہ نے کہا کہ پی ڈی ایم اتنی نااہل تھی کہ ورلڈ بینک، آئی ایم ایف سمیت اسٹیٹ بینک خود تخمینہ 2 فیصد بتارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم کی پچھلے دو سال اور اگلے دو سال کی کارکردگی 1950 سے بھی بدترین کارکردگی ہے اور پاکستان تین بار،1973، 1998 اور 2008 میں بحران کا شکار ہوا۔ مزمل اسلم نے کہا کہ اس پی ڈی ایم نے خود ہی اپنا مہنگائی کا ریکارڈ توڑ دیا ہے اور اس بدترین مہنگائی کے باعث مڈل کلاس طبقہ لوئر کلاس طبقے میں منتقل ہوچکا ہے۔ مشیر خزانہ خیبرپختونخوا نے کہا کہ ورلڈ بینک کی رپورٹ کے مطابق اس سال مزید ایک کروڑ لوگ غربت کی لکیر سے نیچے آجائینگے اور تباہ حال معیشیت کے باعث پورے پاکستان میں لاء اینڈ آرڈر کی صورتحال بری طرح بگڑ چکی ہے۔ مشیر خزانہ نے کہا کہ پاکستان کا نوجوان جو پاکستان کی امید تھی انکے لئے ملازمتوں کے مواقعے ختم ہوگئے اور پی ڈی ایم نے معیشیت کے ساتھ جو کہلواڑ کیا اسکے باعث پوری قوم گھوٹنوں پر بیٹھ گئی ہے اور مہنگائی کے باعث جرائم میں خطرناک حد تک اضافہ ہوچکا ہے۔

 

مشیر خزانہ نے کہا کہ سارا ملبہ ایس آئی ایف سی پر ڈال دیا گیا ہے اور حکومت ملک میں سرمایہ کاری لانے میں بر ی طرح ناکام ہوچکی ہے پچھلے سال نجی سیکٹر نے صرف 35 ارب روپے قرض لیا۔ مزمل اسلم نے کہا کہ یہ کہتے تھے سرکاری خرچے کم کرینگے،شہباز شریف سرکاری پیسوں پر 30، 31 لوگوں کو عمرے پر اپنے ساتھ لے گئے ہیں اور ہم کب اس ملک کے بارے میں سوچیں گے؟ مزمل اسلم نے کہا کہ برازیل سے 200 گائیں آئیں، شو شا چھوڑا گیا اعلی نسل کی گائیں کا، کیا 200 گائیں ملکی معیشیت کو ٹھیک کرینگی؟ انہوں نے کہا کہ پاکستان اس وقت معاشی تباہی کے دور سے گزر رہا ہے اور دور دور تک کچھ اچھے کی امید نظر نہیں آرہی۔مشیر خزانہ نے حکومت سے درخواست کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے ملک نہیں چل سکتا حکومت کی جانب سے پیدا کردہ اس بے یقینی کی صورتحال اور عوامی مینڈیٹ چوری کر کے ملک ترقی نہیں کرسکتا مینڈیٹ والی حکومتیں آئیں تو ملک ضرور ترقی کرسکتا ہے۔


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
87337