Chitral Times

May 28, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

محکمہ توانائی اور محکمہ سی این ڈبلیو کا سیلز ٹیکس آن سروسز کی مکمل تعمیل کرنے کا اعلان

Posted on
شیئر کریں:

محکمہ توانائی اور محکمہ سی این ڈبلیو کا سیلز ٹیکس آن سروسز کی مکمل تعمیل کرنے کا اعلان

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) خیبر پختونخوا محکمہ توانائی اور محکمہ سی این ڈبلیو سیلز ٹیکس آن سروسز کی مکمل ادائیگی کو یقینی بنائے گی اور اس ضمن میں خیبر پختونخوا ریونیو اتھارٹی کے ساتھ مکمل تعاون کیا جائے گا۔اس بات کا اعلان خیبر پختونخوا محکمہ توانائی اور محکمہ سی این ڈبلیو کے سیکرٹریز کی جانب سے جمعرات کے روز ڈی جی کے پی آر اے اور ان کی ٹیم کے ساتھ سول سیکرٹیریٹ میں منعقدہ دو الگ الگ میٹنگز میں کیا گیا۔کے پی آر اے کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق ڈی جی کے پی آر اے فوزیہ اقبال نے سیکرٹری محکمہ سی این ڈبلیو ادریس خان مروت اور سیکرٹری محکمہ توانائی حسان خان کو کے پی آر اے، سیلز ٹیکس آن سروسز سے متعلق تفصیلی بریفننگ دی۔

 

ڈی جی کے پی آر اے نے محکمہ سی این ڈبلیو کے افسران اور سیکرٹری کو بتایا کہ جولائی 2021 کے بعد فاٹا اور پاٹا میں اے ڈی پی اور پی ایس ڈی پی سکیموں کو حاصل ٹیکس استثنیٰ ختم ہو گیا ہے مگر ابھی بھی دیا جا رہا ہے جو کہ غلط ہے اور اس کو فل فور ختم ہونا چاہیے، انہوں نے مزید بتایا کہ سیلز ٹیکس آن سروسز اور سیلز ٹیکس آن گڈز کی درجہ بندی نہ ہونے اور اس کے درمیان فرق کا ادراک نہ ہونے کی وجہ سے کے پی ار اے کا پیسہ ایف بی آر کے اکاؤنٹ میں جا رہا ہے جس کو فوری طور پر روکنے کی ضرورت ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ محکمہ سی این ڈبلیو اور کے پی آر اے کے درمیان ڈیٹا شیئرنگ کا فقدان ہے جس کی وجہ سے ٹیکس کی مکمل تعمیل نہیں ہو رہی۔سیکرٹری سی این ڈبلیو ادریس خان کا کہنا تھا کہ ٹیکس کی ادائیگی ہماری مشترکہ ذمہ داری ہے اور ہر ایک نے اس میں اپنا کردار ادا کرنا ہے تاکہ ہماری صوبے کی ترقی ممکن ہو سکے۔اس میں کوئی مشکل نہیں اور ہماری تھوڑی سی کوشش واضح فرق لا سکتی ہے۔انہوں نے اپنے تمام افسران اور ماتحت اداروں کو احکامات جاری کیے کہ ٹیکس کی ادائیگی کو مکمل طور پر یقینی بنائیں اور کے پی آر اے کے ساتھ مکمل تعاون کو یقینی بنائیں۔ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ خیبر پختونخوا ریونیو اتھارٹی محکمہ سی این ڈبلیو سے تعلق رکھنے والے اکاؤنٹ افیسرز اور ایگزیکٹو انجینیئرز کے لیے ایک روزہ تربیتی ورکشاپ کا انعقاد کرے گی۔

 

مزید برآں محکمہ توانائی کے ساتھ میٹنگ میں ڈی جی کے پی آر اے فوزیہ اقبال کا کہنا تھا محکمہ توانائی کے نیچے کام کرنے والا انسپیکٹریٹ آف الیکٹریسٹی ابھی تک کے پی ار اے کے ساتھ رجسٹر نہیں ہے اور اس کے ساتھ ساتھ پختونخوا انرجی ڈیویلپمنٹ ارگنائزیشن اور خیبر پختونخوا آئیل اینڈ گیس کمپنی لمیٹڈ کی جانب سے ٹیکس کی مکمل ادائیگی کو یقینی بنانے کی ضرورت ہے۔ اس پر سیکرٹری محکمہ توانائی نے احکامات جاری کی کہ انسپیکٹریٹ اف الیکٹرسٹی کو فوری طور پر کی پی ار اے کے ساتھ رجسٹر کیا جائے اور ٹیکس کی ادائیگی کو یقینی بنایا جائے مزید براں پختونخوا انرجی ڈیویلپمنٹ ارگنائزیشن اور خیبر پختونخوا آئیل اینڈ گیس کمپنی لمیٹڈ کو احکامات جاری کی کہ ٹیکس کی ادائیگی کو مکمل طور پر یقینی بنا کر ملک و قوم کی ترقی میں اپنا کردار ادا کریں۔

خیبرپختونخوا میں کورونا پازیٹیو کیسز کے تناظر میں ایڈوائزری جاری

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ)ڈائریکٹر پبلک ہیلتھ ڈاکٹر ارشاد روغانی نے کہا ہے کہ کورونا کے جے این ون ویرئینٹ کے پھیلاؤ کے پیش نظر ایڈوائزری جاری کردی گئی ہے اور اسی سلسلے میں ہسپتالوں کو انفلوئینزا لائک ڈیزیز میں ٹیسٹنگ زیادہ کرنے کی ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ کورونا کے ویریئنٹ کے تعین کیلئے ہسپتالوں کو جینوم ٹیسٹنگ کیلئے سیمپلز پبلک ہیلتھ ریفرنس لیب بھجوانے کی ہدایات کی گئی ہیں۔ کورونا کیسز کی تفصیلات بتاتے ہوئے ڈائریکٹر پبلک ہیلتھ نے کہا کہ پشاور کے ہسپتالوں سے کورونا کے 9 مثبت کیسز آئے ہیں۔ ان کیسز میں پشاور سے 6 اور سوات سے تین شامل ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ جینوم سیکونسنگ کے بعد معلوم ہوا کہ کورونا کے دو نئے ویرئینٹ سامنے آئے ہیں۔ ان ویرئینٹ میں جے این ون اور جے این 1.8 شامل ہیں۔ ڈاکٹر ارشاد روغانی نے بتایاکہ عالمی ادارہ صحت کے مطابق کورونا جے این ون ویرئینٹ کا پھیلاو 83 فیصد ہے جبکہ اس ویرئنٹ کے پھیلاو جو روکھنے کیلئے پبلک ایڈوائزری بھی جاری کی گئی تاکہ عوام احتیاطی تدابیر اپنائیں۔


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
86624