Chitral Times

Nov 17, 2018

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • چترال کے یوٹیلٹی سٹورز میں آئل ، گھی اور چینی ناپید، ضلعی انتظامیہ اور ایم این اے نوٹس لیں

    April 23, 2018 at 11:33 pm

    چترال (نمائندہ چترال ٹائمز ) چترال کے تمام یوٹیلٹی سٹورز میں گزشتہ تین مہینوں سے کوکنگ آئل ، گھی اور چینی دستیاب نہیں۔ جس کی وجہ سے چترال کے عوام انتہائی مشکلات کا شکا رہیں۔گزشتہ سال سپریم کورٹ کی طرف سے غیر معیاری اور ناقص گھی اور آئل کی فروخت پر پابندی کے بعد یوٹیلٹی سٹورکارپوریشن کو مختلف کمپنیوں کی معیاری گھی اور آئل کے فروخت کی اجازت مل چکی تھی ۔ مگر تاحال یوٹیلٹی سٹور ز پر گھی ہے اور نہ آئل ۔ ذرائع کے مطابق یوٹیلٹی سٹور ز کارپوریشن آف پاکستان کے آربوں روپے حکومت پر قرض ہیں جو گزشتہ سالوں رمضان المبارک کے مہینے سبسیڈی کے مد میں عوام کو ریلیف دلوانے کے بعد کارپوریشن کو ادائیگی نہیں ہوئی ہے۔ جس کی وجہ سے کارپوریشن پر مختلف کمپنیوں کی خطیر رقم واجب الادا ہیں اور وہ مذید سامان کارپوریشن کو دینے سے گریزان ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ چترال کے تمام یوٹیلٹی سٹوروں پر اہلکارہاتھوں پر ہاتھ دھرے بیٹھے ہوئے ہیں ۔ یہ تین بنیادی اشیاء ضروریہ دستیاب نہ ہونے کی وجہ سے سٹور وں پر باقی سامان کی فروخت بھی نہ ہونے کے برابر ہے ۔ جس کی وجہ سے کارپوریشن کو بھی ماہانہ لاکھوں روپے کا نقصان اُٹھانا پڑرہا ہے ۔ چند مہینے پہلے چترال ٹاون میں ایک سپر یوٹیلٹی سٹور کا افتتاح بدست ایم این اے چترال ہوا تھا اور لوگوں کو خوشخبری سنادی گئی تھی کہ ایک چھت کے نیچے تمام اشیاء ضروریہ دستیاب ہونگے مگر وہاں پر بھی وہی حال ہے جو باقی سٹوروں پر ہے۔
    چترال کے مختلف مکاتب فکر نے ضلعی انتظامیہ ،وفاقی حکومت اور خصوصی طور پر ایم این اے چترال شہزادہ افتخار الدین سے مطالبہ کیاہے کہ چترال کے یوٹیلٹی سٹوروں پر گھی ، کوکنگ آئل اور چینی کی دسیتابی کو یقینی بنایا جائے ۔تاکہ ان سٹوروں کی افادیت میں اضافہ ہونے کے ساتھ عوام کو بھی ریلیف مل سکے ۔
    انھوں نے مذید کہا ہے کہ چترال میں ناقص اور غیر معیاری اشیا ء خوردنی خصوصا آئل اور گھی کی بھر مار ہونے کی وجہ سے چترال کے عوام میں ہارٹ آٹیک ، کینسر اور دوسری بیماریوں کا شکار ہوکر روزانہ کئی افراد لقمہ اجل بن رہے ہیں۔ جبکہ سپریم کورٹ آف پاکستان کی طرف سے گزشتہ سال ناقص گھی اور آئل کی فروخت کا نوٹس لیکر باقاعدہ لیبارٹری سے ٹیسٹ کروانے کے بعد چند کمپنیوں کی پراڈکٹ فروخت کرنے کی اجازت یوٹیلٹی سٹورز کارپوریشن آف پاکستان کو دی تھی ۔ جس کے بعد عوام تاحال معیاری گھی اور آئل کی آمد کا انتظار کررہے ہیں ۔

  • error: Content is protected !!