Chitral Times

Apr 19, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

وزیر صحت کا صوبے میں خسرے کی پھیلتی ہوئی صورتحال کا نوٹس، عوام اپنے بچوں کو جلد سے جلد ایم آر ویکسین لگوالیں. سید قاسم علی شاہ

Posted on
شیئر کریں:

وزیر صحت کا صوبے میں خسرے کی پھیلتی ہوئی صورتحال کا نوٹس، عوام اپنے بچوں کو جلد سے جلد ایم آر ویکسین لگوالیں. سید قاسم علی شاہ

 وزیر صحت سید قاسم علی شاہ کا صوبے میں خسرے کی پھیلتی ہوئی صورتحال کا نوٹس، عوام اپنے بچوں کو جلد سے جلد ایم آر ویکسین لگوالیں، خسرہ کو کنٹرول کرنے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اُٹھائے جائیں، ایم ٹی آئیز میں آئسولیشن وارڈز جلد سے جلد قائم کرنے کے احکامات جاری، ویکسینیٹرز ایم ایس کے ڈسپوزل سے ہٹاکر ڈی ایچ او کے ماتحت کرنے کے احکامات جاری، وزیر صحت کی فوری پراونشل آؤٹ بریک کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایات جاری۔
ڈی آئی خان 185,پشاور 147, چارسدہ 113، صوابی 92 اور دیر لوئر 83 کیسز کے ساتھ سرفہرست، پچھلے چھ ماہ میں ہونے والے 22 اموات میں سے 13 میں خسرے کی تصدیق ہوچکی ہے: ڈائریکٹر ای پی آئی کی وزیر صحت کو ہنگامی بریفنگ

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) وزیر صحت سید قاسم علی شاہ نے صوبے میں خسرے کی پھیلتی ہوئی صورتحال کا نوٹس لیتے ہوئے ڈائریکٹر ای پی آئی سے ہنگامی رپورٹ طلب کرلی۔ وزیر صحت نے والدین سے اپیل کی ہے کہ اپنے بچوں کو جلد سے جلد ایم آر ویکسین لگوالیں۔ انہوں نے ہدایات جاری کیں کہ خسرہ کو کنٹرول کرنے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اُٹھائے جائیں۔ انہوں نے ایم ٹی آئی ہسپتالوں میں خسرہ کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے آئسولیشن وارڈز جلد سے جلد قائم کرنے کے احکامات جاری کردیئے۔ انہوں ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ سروسز کو احکامات جاری کئے کہ ویکسین سنٹرز کو فعال بنانے کیلئے ویکسینیٹرز کو ایم ایس کے ڈسپوزل سے ہٹاکر ڈی ایچ او کے ماتحت کریں۔ وزیر صحت نے فوری پراونشل آؤٹ بریک کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایات بھی جاری کیں۔
ڈائریکٹر ای پی آئی ڈاکٹر عارف نے متعلقہ حکام کے ہمراہ وزیر صحت کو خسرہ بارے ہنگامی بریفنگ دی۔ بریفنگ میں وزیر صحت کو بتایا گیا کہ برتھ ڈوز انیشیٹیو کے تحت ہسپتالوں میں لیبر روم کیساتھ ہی ویکسین سنٹر قائم کئے گئے ہیں،چوبیس گھنٹے کھُلے ان سنٹرز میں پچھلے دو سال کے اندر ایک لاکھ سے زائد نومولود بچے ویکسینیٹ ہوچکے ہیں۔ ان کو بتایا گیا کہ صوبہ میں خسرہ کے 3889 مُشتبہ جبکہ 1445 مصدقہ کیسز رجسٹرڈ ہوچکے ہیں۔ پچھلے چھ ماہ میں اب تک ہونے والی 22 اموات میں سے 13 میں خسرے کی تصدیق ہوچکی ہے۔ دو سے پانچ سال کے عمر کے بچے سب سے زیادہ متاثر ہورہے ہیں۔ ڈائریکٹر ای پی آئی نے بتایا کہ خسرے کو کنٹرول کرنے کیلئے صوبے کے 24 اضلاع کے 118 یونین کونسلز میں آؤٹ بریک رسپانس جاری ہے۔ ان اضلاع میں ڈی آئی خان 185,پشاور 147, چارسدہ 113، صوابی 92 اور دیر لوئر 83 کیسز کے ساتھ سرفہرست ہے۔


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
87008