Chitral Times

Aug 18, 2018

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • ایف ایس سی نتائج ، چوبیس گھنٹوں کے اندر تین طالب علموں کی خودکشی ، وجہ امتحان میں کم نمبر یا فیل

    August 7, 2018 at 10:34 pm

    چترال ( آن لائن ) ایف اے ایف ایس سی کے نتائج میں کم نمبر آنے پر چترال میں چوبیس گھنٹوں کے اندر خودکشی کے تین واقعات رونما ہوئے جن میں دو طالبات دریا میں چھلانگ لگاکر لاپتہ ہیں جبکہ ایک طالب علم شدید زخمی ہے ۔ تینوں کی عمریں 17سے آٹھارہ سال کے درمیان بتائی جارہی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق بورڈ آف انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن پشاور کے حالیہ ایچ ایس ایس سی کے نتائج گزشتہ دن آوٹ ہوتے ہی دلبرداشتہ ہوکر چترال میں چوبیس گھنٹوں کے اندر تین طالب علموں نے خودکشی کی ۔خودکشی کا پہلا واقعہ ریچ تورکہو میں گزشتہ دن پیش آیا تھا۔ جبکہ دوسرا واقعہ گرم چشمہ بلپھوک کے مقام پر پیش آیا جہاں ایک پرائیویٹ کالج کی طالبہ صفورہ دختر روزی من خان ساکنہ موغ نے ایف ایس سی میں دو مضامین میں فیل ہونے کی وجہ سے دلبرداشتہ ہوکر دریائے چترال میں کود کر اپنی زندگی کا چراغ گل کردیا ہے ۔ لاش تاحال نہیں ملی ہے ۔ تیسرا واقعہ کریم آباد لٹکوہ میں پیش آیا ہے جہاں ربی الدین ولد حاجی نامی فسٹ ائیر کا طالب علم خود پر بارہ بور رائفل سے فائر کرکے خودکشی کی کوشش کی ہے ۔ وجہ فسٹ ائیر میں ایک مضمون میں فیل ہونابتایا جارہاہے۔ جس کو زخمی حالت میں مقامی ہسپتال پہنچاکر ابتدائی طبی امداد دینے کے بعد پشاور ریفر کیا گیا ہے ۔ پولیس تینوں واقعات میں انکوائری کررہی ہے ۔ یادرہے کہ واقعہ پہلا واقعہ تورکہو ریچ کے مقام پر پیش آیا جہاں فسٹ ائیر کی طالبہ نے مبینہ طور پر کم نمبر آنے پر دلبرداشتہ ہوکر دریائے چترال میں چھلانگ لگاکر خودکشی کی ہے جسکی لاش کی تلاش جاری ہے ۔
    دریں اثنا ریسکیو1122 چترال کی ٹیم کی طرف سے چترال شہرکے مقام پر دریا میں لاشوں کی تلاش جاری ہے ۔

  • error: Content is protected !!