Chitral Times

اپر چترال کو بجلی دینے کیلئے پیڈو حکام تاحال معاہدہ پر دستخط نہیں کئے ، وزیراعلیٰ مداخلت کریں۔افتخار

چترال ( نمائندہ چترال ٹائمز ) چترال سے ممبر قومی اسمبلی شہزادہ افتخار الدین نے وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک سے اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اپر چترال کو گولین گول پراجیکٹ سے بجلی دینے کے سلسلے میں پیڈو حکام کو پیسکو کے ساتھ معاہدے کو عملی جامہ پہناکر دستخط کرنے کی ہدایت جاری کریں۔تاکہ سب ڈویژن مستوج کے دو لاکھ آبادی بھی اس پراجیکٹ سے مستفید ہوسکیں۔ جبکہ محکمہ پیڈو مختلف حیلہ بہانوں سے معاہدہ پر دستخط کرنے سے گریزاں ہے ۔ اور قومی اسمبلی کے قائمہ کمیٹی کی چترال کوغذی کے مقام پر منعقدہ اجلاس میں 5جنوری تک معاہدہ کیلئے واضح ہدایات کے باوجود آج تک پیڈو نے اس سلسلے میں کوئی قدم نہیں اُٹھا یا ہے ۔

چترال ٹائمز سے گفتگو کرتے ہوئے ایم این اے نے بتایا کہ قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں محکمہ پیڈو کو 5جنوری تک پیسکو کے ساتھ معاہدہ کرنے کی ہدایت کیگئی تھی مگر تاحال اس پر کوئی عمل درآمد نہیں ہوا ہے۔ جبکہ اس سلسلے میں پیسکو کے چیف انجینئر اور ڈائریکٹر پلاننگ نے بتایا ہے کہ انھوں نے 28دسمبر کے قائمہ کمیٹی کی اجلاس میں طے شدہ فیصلہ کی رو سے اب تک پانچ دفعہ پیڈو کے اعلیٰ حکام سے رابطہ کئے مگر کوئی مثبت جواب نہیں ملا۔ جس پر ایم این اے نے پیڈو کے پلاننگ آفیسر سے رابطہ کرنے پر انھوں نے بھی لاعلمی کا اظہار کیا ہے ۔

ایم این اے نے مذید بتایا کہ انھوں نے اس سلسلے میں چیف سیکریٹری خیبر پختونخوا اعظم خان کے نوٹس میں بھی لایا ہے کہ وہ ان دو اداروں کے درمیان معاہدہ کرانے میں کردار ادا کریں ۔ ایم این اے نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ وزیر اعلیٰ اور چیف سیکریٹری خیبر پختونخوا پیسکو اور پیڈو کے درمیان معاہد ہ کو حتمی شکل دینے میں کردار ادا کریں گے ۔ انھو ں نے کہاکہ سب ڈویژن مستوج کے عوام آئے روز جلسہ جلوسوں کا سلسلہ شروع کررکھے ہیں جو انتظامیہ اور حکومت کیلئے مسائل پیدا کرنے کے باعث بن سکتے ہیں جبکہ چترال ٹاون اور دروش کو بجلی دیکر اپر چترال کو محروم رکھا گیا تو مذید حالات خراب ہونے کا خدشہ ہے ۔ لہذا صوبائی حکومت کو اس پر سنجیدگی سے غورکرنا ہوگا۔

شہزادہ افتخار الدین نے انتہائی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سب ڈویژن مستوج گزشتہ تین برسوں سے بجلی سے محروم ہے ۔ اور علاقے کو بجلی دینے کی ذمہ داری صوبائی حکومت کے ماتحت محکمہ پیڈو کا ہے ۔ جو اب تک مختلف طریقوں سے علاقے کے عوام کوٹرخارہی ہے۔ اور گولین گول کی پہلی یونٹ کو چالو کیا جارہا ہے۔ اور ساتھ قائمہ کمیٹی کی کوغذی میں منعقد ہ اجلاس کے دوران پیڈو کے حکام کو گولین پراجیکٹ اور سوئچ یارڈ کا وزٹ کرایا گیا جہاں ٹیکنیکلی کوئی مسئلہ درپیش نہیں ہے۔ صرف پیڈو کی موجودہ ٹرانسمیشن لائن کے زریعے اپر چترال کو بجلی دینا ہے ۔ جس کیلئے پیسکو اور پیڈو کے درمیان معاہدہ پر دستخط کرنا ضروری ہے۔ جبکہ واپڈ ااور پیسکو حکام پیڈو کے ٹرانسمیشن لائن کے زریعے اپر چترال کو بجلی دینے کیلئے تیار ہیں۔

ایم این اے نے پی ٹی آئی کے بعض رہنماؤں اور کولیشن پارٹی جماعت اسلامی کے قائدین سے بھی اپیل کی ہے کہ وہ جلسہ جلوسوں کے بجائے اپنے اتحادی حکمرانوں کو دستخط کے میز لانے میں کردار ادا کریں ۔ شہزادہ افتخار الدین نے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ ان دونوں اداروں کے درمیان معاہدہ کو حتمی شکل دینے کیلئے پیڈو حکام کو ہدایت جاری کرکے اپر چترال کے دولاکھ آبادی کو اندھیروں سے نکالنے میں مدد کریں ۔

golen gole project switch yard

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں, چترال خبریں, گلگت بلتستانTagged ,
4156

گولین گول بجلی کے حوالے سے اسٹینڈنگ کمیٹی کا اجلاس چترال میں بلایا گیا ہے۔۔شہزادہ افتخار الدین

Posted on

بونی ( جمشید آحمد نمایندہ چترال ٹائمز)گولن گول106میگاواٹ بجلی گھر سے چترال کو بجلی دینے کے حوالے سے ایم این اے شہزادہ افتخار الدیں نے اسلام آباد سے چترال ٹائمز سے ٹیلی ٖفونک گفتگو کی۔ ان کے کہنے کے مطابق گولن گول پاور ہاوس سے چترال کو بجلی دینے کی منظوری ہوچکی ہے اس حوالے سے بجلی کی فراہمی کے سلسلے میں 20×26 mb دو عدد ٹرانسفر مر کی ضرورت ہے ایک عدد ٹرانسفرمر دروش گریڈ اسٹیشن میں پہنچ چکا ہے اور سب ڈویثرن مستوج کے لیے ایک عدد 20x26mb جوٹی لشٹ میں پہنچنا باقی ہے جوکہ عنقریب پہنچ جائے گا۔یہ ٹرانسفرمر نہ پہنچنے کی صورت میں پاور ہاوس کے سوچ چارٹ سے بجلی سب ڈویثرن مستوج کو دینے کی کوشیش کی جائے گی ۔ اس کے علاوہ دروش میں ٹرانسفر مرکی تنصیب اور بجلی کی ترسیل کے لیے کام جاری ہے جبکہ چترال ٹاون کے لیے 10mb ٹرانسفر مر جوٹی لشٹ پہنچ گیا تھا خراب نکلنے کی باعث واپس کر دیا گیا ہے اس کی جگہ دوسرا ٹرانسفر مر جلد پہنچا دیا جائے گا۔سب ڈویثرن مستوج کو بجلی دینے کے حوالے سے مزید بات کر تے ہوئے انہوں نے کہ اس سلسلے میں پیڈو اور پیسکو کے درمیان معاہدہ ہونا ضروری ہے اس سلسلے میں عنقریب اسٹنڈنگ کمیٹی کا ایک اہم اجلاس چترال میں بلایاگیا ہے جس میں پیڈو، پیسکوکے تمام حکام شرکت کریں گے اس کے بعد بجلی کی افتتاح کے لیے مناسب تاریخ کا فیصلہ کیا جائے گا۔

Posted in تازہ ترین, چترال خبریںTagged ,
3413

ہزہائی نس کی آمد نہ صرف اسماعیلی کمیونٹی بلکہ چترال اور پاکستان کیلئے خوش آئندہے۔۔شہزادہ افتخار الدین

چترال(نمائندہ چترال ٹائمز )ایم این اے چترال شہزادہ افتخار الدین نے کہا ہے کہ انکی صوابدیدی فنڈز سے جن جن علاقوں میں چھوٹے منصوبے دئیے گئے ہیں ۔ان کی معائنہ کیلئے پاک پی ڈبلیو ڈی کے انجینئرز چترال آرہے ہیں۔ جن کی تصدیق اور کام کی معیار و مقدار کی جانچ پڑتال کے بعد پراجیکٹ لیڈروں کو ادائیگی کی جائیگی ۔ وہ جمعہ کے دن اپنی رہائش گاہ زرگراندہ میں مختلف علاقوں کے وفود سے گفتگو کرتے رہے تھے ۔ انھوں نے اس موقع پر بعض سیاسی مخالفین کی طرف سے پھیلائے گئے بے سروپا بیانات پر انتہائی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ انھوں نے تمام چھوٹے منصوبے سیاسی وابستگیوں سے بالاتر ہوکر علاقے کی ترقی اور گزشتہ زلزلہ و سیلاب سے متاثرہ علاقوں کے چھوٹے موٹے مسائل کے حل کیلئے دیا ہے۔ انھوں نے بتایاکہ ہم نے پراجیکٹ لیڈر وں کے زریعے کام اس لئے دیا ہے کہ وہ اپنے علاقوں کے مسائل اور منصوبے دلچسپی سے مکمل کریں گے اور زیادہ سے زیادہ فنڈ ز پراجیکٹ پر خرچ کریں گے۔ اُنہوں نے پراجیکٹ لیڈروں پر زور دیا کہ وہ اپنے اپنے علاقوں میں ترقیاتی کے کاموں کو ایمانداری اور خلوص نیت سے پورا کریں۔انھوں نے کہا کہ گزشتہ چار سالوں کے اندر وفاقی حکومت کی طر ف سے آربوں روپے کے منصوبے چترال میں زیر تعمیرہیں۔ جبکہ کئی منصوبے پائپ لائن میں ہیں ۔ جن پر کام بہت جلد شروع کیا جائیگا۔ تاریخ میں پہلے کبھی اتنی خطیر فنڈز چترال کیلئے مختص نہیں ہوئے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ سیاسی مخالفین کی پیٹ میں مروڑ ہوگیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ اگر میں حسب اختلاف کے ڈیسک پر بیٹھ کر اگر ڈیسک بجاتا رہتا تو کیا یہ فنڈز یا ترقیاتی منصوبے ممکن تھے؟ ہر گز نہیں ۔ جبکہ میں ڈیسک بجانے کے بجائے گزشتہ چار سالوں کے اندر تقریبا پچاس آرب روپے سے زیادہ کے فنڈز چترال کیلئے منظور کروایا ہوں ۔جو کہ سب کے سامنے روز روشن کی طرح عیاں ہیں۔

ایم این اے نے بتایا کہ گولین گول ہائیدرو پراجیکٹ کی پہلی یونٹ کا افتتاح وزیر اعظم اس ماہ کے اخر میں کررہے ہیں ۔جہاں کام کی رفتار اور دوسرے انتظامات کا جائزہ لینے کیلئے چیئرمین واپڈا آج چترال پہنچ رہے تھے۔ مگر ناگزیر مصروفیات کی وجہ سے انھوں نے چترال کا دورہ ملتوی کردیا ۔ تاہم انھوں وفود کو یقین دلایا کہ اس ماہ کے اخر تک چترال کو گولین سے بجلی دی جائیگی ۔جس کیلئے ٹرانسفر میر و دیگر آلات کی تنصیب کا کام زور و شور سے جاری ہے۔ انھوں نے مختلف علاقوں کیلئے ٹرانسفر میر دینے کی یقین دہانی بھی کی ۔

ایم این اے نے اسماعیلی کمیونٹی کی روحانی پیشوا ہزہائی نس پرنس کریم آغا خان کی چترال آمد پر تمام اسماعیلی کمیونٹی کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ان کی آمدنہ صرف اسماعیلی کمیونٹی بلکہ چترال اور پاکستان کیلئے خوش آئندہے۔ اس موقع پر ایم این اے نے وفود کے مسائل بھی سنے اور اُنہیں حل کرنے کی یقین دہانی کی۔

MNA Chitral ifikhar2

Posted in تازہ ترین, چترال خبریں, گلگت بلتستانTagged ,
2590

25دسمبر سے لوئیر چترال سمیت سب ڈویژن مستوج کو بھی بجلی دینے کی منظوری دیدی گئی ۔۔شہزادہ افتخار

چترال ( نمائندہ چترال ٹائمز ) چترال سے ایم این اے شہزادہ افتخار الدین نے چترال خصوصا سب ڈویژن مستوج کے عوام کو خوشخبری دیتے ہوئے کہا ہے کہ انکی کوششوں سے گولین گول ہائیڈروپاور پراجیکٹ سے چترال ٹاون اور دروش سمیت سب ڈویژن مستوج کو 25دسمبر سے بجلی دینے کی حتمی منظوری دیدی گئی ۔ چترال ٹائمز سے ٹیلی فونک گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے بتایا کہ وفاقی وزیر برائے بجلی اویس لغاری سے متعدد بار میٹنگ اور انکی طرف سے چیف ایگزیکٹو آفیسر پیسکو پشاور کو ہدایت دینے کے بعد پیسکو حکام نے گولین گول بجلی گھر سے لوئیر چترال کے ساتھ بالائی چترال کو بھی بجلی دینے کیلئے انتظامات کو حتمی شکل دے رہی ہے۔ اس سلسلے میں ایک ٹرانسفر میر چند دنوں کے اند ر دروش میں نصب کیاجائیگا۔جبکہ سب ڈویژن مستوج کو چار میگاواٹ بجلی دی جائیگی۔ جبکہ اس سے زیادہ لوڈ پیڈو کی موجودہ لائن برداشت نہیں کرسکتی ۔ انھوں نے بتایا کہ سب ڈویژن مستوج کو جوٹی لشٹ گرڈ اسٹیشن سے بجلی دی جارہی ہے جسکی کیپسٹی چار میگاواٹ تک ہے۔ تاہم وفاقی حکومت کی طرف سے گزشتہ بجٹ میں تقریبا 55کروڑ روپے اس مد میں رکھے گئے ہیں۔ جبکہ باقی رقم بھی جلد ریلیز ہونگے، جس سے سب ڈویژن مستوج کیلئے کاغ لشٹ کے مقام پر ایک بڑا گرڈ اسٹیشن قائم کیا جائیگا۔اور 132KV کے لائن بچھائی جائیگی۔ اور ساتھ دروش اور ماربل سٹی گنگ میں بھی گرڈ اسٹیشن بنائے جارہے ہیں۔ ایم این اے نے چترال ٹائمز کو مذید بتایا کہ ٹوٹل سات فیڈر اپر اور لوئیر چترال کیلئے منظور ہوگئے ہیں۔ جس میں یارخون، لاسپور، گرم چشمہ ،( کریم آباد، آرکاری اینڈ گرم چشمہ ٹو گوبور)، مدک لشٹ ، آرندو، تورکہو تا ریچ اور موڑکہوتا شاگروم شامل ہیں۔ جس کے بعد ان علاقوں کو مکمل بجلی دی جائیگی۔ ایک سوال کے جواب میں ایم این اے نے بتایا کہ 25دسمبر کے بعد پہلے مرحلے میں پیڈو کی لائیں جن جن علاقوں تک پہنچ چکی ہیں وہاں تک بجلی دی جائیگی۔ انھوں نے مذید بتایا کہ چترال ٹاون ، ایون اور دروش تک بجلی دینے کی منظوری پہلے سے ہوچکی ہے۔ لہذا گولین گول 106میگاواٹ ہائیڈوپاور پراجیکٹ کی پہلی یونٹ 25دسمبر 2017سے چالو ہونے کے بعد چترال کے ان تمام علاقوں کو بجلی دی جائیگی جہاں پر پیسکو یا پیڈو کی لائین موجود ہیں ۔

Pesco letter to FM Power regarding Chitral electricity supply

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں, چترال خبریں, گلگت بلتستانTagged , ,
1540