Chitral Times

خیبر میڈیکل یونیورسٹی(کے ایم یو)کے زیر اہتمام میڈ یکل اینڈ ڈینٹل ایڈمشن ٹسٹ(ایم ڈی کیٹ) بیک وقت صو بے کے سات شہروں میں 26نومبر 2023کو منعقد ہو گا, ایم ڈی کیٹ کے دوبارہ انعقاد کیخلاف درخواستیں خارج

خیبر میڈیکل یونیورسٹی(کے ایم یو)کے زیر اہتمام میڈ یکل اینڈ ڈینٹل ایڈمشن ٹسٹ(ایم ڈی کیٹ) بیک وقت صو بے کے سات شہروں میں 26نومبر 2023کو منعقد ہو گا, ایم ڈی کیٹ کے دوبارہ انعقاد کیخلاف درخواستیں خارج

پشاور (چترال ٹائمز رپورٹ) خیبر میڈیکل یونیورسٹی(کیایم یو)کے زیر اہتمام میڈ یکل اینڈ ڈینٹل ایڈمشن ٹسٹ(ایم ڈی کیٹ) پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل(پی ایم ڈی سی)اسلام آباد اور صوبائی حکومت کی منظوری کے بعد بیک وقت صو بے کے سات شہروں پشاور،مردان،ایبٹ آباد،سوات، چکدرہ، کوہاٹ اور ڈیرہ اسماعیل خان میں 26نومبر 2023کو منعقد ہو گا جن میں پشاورکے چارسنٹرز اسلامیہ کالجیٹ گراونڈ پشاور، ہاسٹل نمبر 2گراونڈ پشاور یونیورسٹی، پاکستان فار سٹ انسٹی ٹیوٹ گراونڈ پشاور،یونیورسٹی پبلک سکول بلمقابل پشاور یونیورسٹی، عبدالولی خان یونیورسٹی مردان،کے ایم یو آئی ایم ایس کوہاٹ، گومل میڈیکل کالج ڈی آئی خان، ایوب میڈیکل کالج ایبٹ اباد، یونیورسٹی آف ملاکنڈ چکدرہ اور یونیورسٹی آف سوات چارباغ شامل ہیں۔ خیبرپختونخوا میں پی ایم ڈی سی کے ذریعے رجسٹرڈ ہونے والے ہر امیدوار کے لیے لازمی ہے کہ وہ کیا یم یو کی افیشل ویب سائٹ (www.cas.kmu.edu.pk) میں اپنا مکمل نام اورقومی شناختی کارڈ، پاسپورٹ یا فارم” ب”نمبر درج کرکے 17نومبر سیاپنا ایڈمٹ کارڈ رول نمبر سلپ ڈاؤن لوڈ کر کے پرنٹ لیسکتے ہیں۔ امید واروں کی سہولت کی لئے ٹریفک پلان افیشل ویب سائٹ (www.cas.kmu.edu.pk) پر شئیر کیا گیا ہے، پر عمل درامد یقینی بنائے۔ امتحانی مراکز میں تمام امیدواروں کو بال پوائنٹ، کلپ بورڈ اور فوڈ پیکٹ جوس بسکٹ اور درکار اشیائفراہم کی جائے گی اور امیدواروں کو خالی ہاتھ اور جیبوں کے امتحانی مرکز جانے کی اجازت ہوگی۔امیدواروں کو سیل فون، اسمارٹ ڈیجیٹل گھڑیاں، کیمرے، ہیڈ فون، بلوٹوتھ، قلم، پنسل، کلپ بورڈ، ربڑ، شارپنر، کیلکولیٹر، کتابیں یا نوٹ، بیگ، پرس، پاؤچ، دھاتی قلم، کریڈٹ کارڈ، بینک اے ٹی ایم کارڈ کو امتحانی مرکز میں لیجانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ اگر کسی کے پاس امتحانی مرکزکے اندرموبائل فون یا الیکٹرانک ڈیوائس برآمد ہوا یا امتحان کے دوران استعمال ہونے والا کوئی اور غیر قانونی آلہ برآمد ہوا تو اسے امتحانی مرکز میں تعینات پولیس ٹیم کے حوالے کیا جائے گا اور اس کے خلاف ایف آئی آر درج کی جائے گی۔

 

برآمد شدہ ڈیوائس کوضبط کر لیا جائے گا اور ملوث امیدوار کا پیپر منسوخ کیا جائگا۔ اور آئندہ کے لئیامیدوار کے ایم یو کے زیرانتظام کسی بھی امتحان میں شرکت کرنے پردو سال کے لئے پابندی ہوگی اوروہ نااہل تصور ہوگا۔ امیدواران کو چاہیے کہ وہ ٹیسٹ شروع ہونے سے کم از کم ایک گھنٹہ قبل یعنی 7:30بجے صبح امتحانی مراکز پہنچ جائیں امتحانی مرکز کے داخلی دروازے صبح 09.30 بجے تک بند کر دیے جائیں گے اور امتحانی مراکز کو صبح 10 بجے سیل کر دیا جائے گا اس کے بعد کسی کو اندر جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ ٹیسٹ صبح ٹھیک 10:00 بجے شروع ہوگا اور 01:30 بجے ختم ہوگا۔ امید واروں کے پاس اصل دستاویزات شناختی کارڈ، پاسپورٹ، فارم ب موجود ہونا چاہئے نیزفوٹو کاپیاں قابل قبول نہیں ہونگی۔ خیبر میڈیکل یونیورسٹی کی طرف سے جاری کردہ ایڈمٹ کارڈ/رول نمبر سلپ کا پرنٹ آؤٹ جس پر حالیہ رنگین تصویر چسپاں کی گئی ہو قابل قبول ہوگی۔ اگر کوئی امیدواراصل دستاویزات شناختی کارڈ، پاسپورٹ، فارم ب اور اپنا ایڈمٹ کارڈ لانے میں ناکام رہتا ہو تو اس کو ٹیسٹ میں شرکت کی اجازت نہیں ہوگی اسکے علاوہ کوئی اور دستاویز ٹیسٹ میں شرکت کے لئے قابل قبول نہیں ہوگی۔ امتحانی مراکز میں داخلے سے پہلے امیدواروں کی جسمانی تلاشی لی جائے گی۔ والدین اور رشتہ داروں کو امتحانی مرکز کے احاطے کے اندر اور اس کے آس پاس جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ حکومت کی طرف سے نافذ دفعہ 144 کے تحت، سیکورٹی وجوہات کی بنا پر مرکز کے باہر ان کے قیام کا کوئی انتظام نہیں ہوگا۔ وہ اپنے بچوں کو اپنے متعلقہ امتحانی مراکز پر چھوڑ دیں اور ٹیسٹ ختم ہونے کے بعد انہیں لے جانے کا انتظام خود کرے۔ امیدواروں کی کسی بھی اشیاء کو رکھنے کے لیے مراکز پر کوئی انتظام نہیں ہوگا۔ اگر کسی امیدوار کے پاس مذکورہ بالا ممنوعہ اشیاء خصوصاً موبائل فون سنٹر کے اندر پایا جائیتو اسے غیر قانونی ذرائع کا استعمال سمجھا جائے گا اور امیدوار کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہوگی۔ دیگر امتحانی مرکز کے کسی امیدوار کو کسی دوسرے امتحانی مرکز میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوگی۔ تمام امیدواروں کو صرف ان کے ایڈمٹ کارڈ پر امتحانی مرکز میں حاضر ہونے کی اجازت ہوگی۔ نیز کسی بھی قیمت پر مرکز کی تبدیلی کی اجازت نہیں ہے۔ امتحان کے دوران انتظامیہ کی طرف سے دی گئی ہدایات اواعلانات کو غور سے سنیں اور ڈیوٹی اسٹاف سے سوالات کے بارے کسی کو اجازت نہیں ہوگی۔

 

 

سندھ، خیبرپختونخوا میں ایم ڈی کیٹ کے دوبارہ انعقاد کیخلاف درخواستیں خارج

اسلام آباد(سی ایم لنکس)سپریم کورٹ نے خیبرپختونخوا اور سندھ میں ایم ڈی کیٹ ٹیسٹ کے دوبارہ انعقاد کیخلاف درخواستیں خارج کردیں۔جسٹس یحیی آفریدی کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی۔ سپریم کورٹ نے سپریم کورٹ نے کے پی اور سندھ میں ایم ڈی کیٹ کے ٹیسٹ کے دوبارہ انعقاد کا ہائیکورٹ کا فیصلہ برقرار رکھا۔پشاور ہائیکورٹ نے ایم ڈی کیٹ ٹیسٹ میں نقل کی بنیاد پر دوبارہ انعقاد کو صوبائی حکومت کا اختیار قرار دیا تھا۔

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
81820