Chitral Times

خواتین کو معاشی اور سماجی طور پر بااختیاربنانا ریاست ومعاشرتی مجموعی ترقی کا ضامن ہے،گورنر غلام علی کا سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے زیراہتمام خواتین کے حوالے سے منعقدہ عالمی کانفرنس سے خطاب 

Posted on

خواتین کو معاشی اور سماجی طور پر بااختیاربنانا ریاست ومعاشرتی مجموعی ترقی کا ضامن ہے،گورنر غلام علی کا سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے زیراہتمام خواتین کے حوالے سے منعقدہ عالمی کانفرنس سے خطاب

گورنر کی شہید بینطیر وویمن بھٹو یونیورسٹی کے زیر انتظام سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے تعاون سے خواتین کو بااختیار بنانے اور انکی ترقی سے متعلق دو روزہ عالمی کانفرنس کے پہلے روز افتتاحی سیشن میں شرکت

افغان طالبات میں الیکٹرانک ٹیبلیٹس تقسیم کئے، پاکستان و افغان خواتین کی تیار کردہ مصنوعات کی نمائش کا بھی معائنہ کیا، تخلیقی صلاحیتوں پر خواتین کی حوصلہ افزائی کی

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) گورنرخیبرپختونخوا حاجی غلام علی نے کہاہے کہ خواتین کا معاشی و سماجی طور پر بااختیار ہونا معاشرے کی ترقی کا ضامن ہے،خواتین کے ساتھ امتیازی سلوک میں انسانی رویوں کو تبدیل کرنیکی ضرورت ہے،عورت کائنات کی عظیم ترین ہستی ہے جسے عزت و تحفظ اور تمام حقوق مذہب اسلام نے دیئے ہیں،اسلام نے عورت کو جو مقام و مرتبہ دیا وہ رہتی دنیا تک کوئی بھی نہیں دے سکتا،حضرت خدیجۃ الکبری ٰرضی اللہ عنہا پہلی خاتون تھیں جنہوں نے تجارت شروع کی،خواتین کو بھی چاہئے کہ وہ اسلامی اصولوں کے مطابق کاروبار میں اپنے شوہر، والدین، بھائیوں کے ساتھ شراکت دار و مددگار بنیں۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے پیرکے روز شہید بینطیر وویمن بھٹو یونیورسٹی کے زیر انتظام سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے تعاون سے خواتین کو بااختیار بنانے اور انکی ترقی سے متعلق دو روزہ عالمی کانفرنس کے پہلے روز افتتاحی سیشن سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ کانفرنس میں وائس چانسلر شہید بینطیر بھٹو وویمن یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹرصفیہ احمد،سابق نگران صوبائی وزیرحاجی فضل الٰہی،یواین ایچ سی آر کے ہیڈ کوفی اوہینیناڈومو، سی ای او سرحد رورل سپورٹ پروگرام مسعود الملک، ایف پی سی سی آئی کے کوآرڈینیٹر سرتاج خان،ڈاکٹرفرحانہ خورشید، حسین شہیدسہروردی، افغان کمشنریٹ کے نمائندہ فضل ربی اور مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی خواتین اورطالبات نے شرکت کی۔ گورنر نے کانفرنس میں افغان طالبات میں الیکٹرانک ٹیبلیٹس تقسیم کئے، پاکستان و افغان خواتین کی تیار کردہ مصنوعات کی نمائش کا بھی معائنہ کیا، خواتین کی تخلیقی صلاحیتوں اور انکی کاروباری دلچسپیوں پر خواتین کی حوصلہ افزائی کی۔

 

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے گورنرنے کہاکہ بہت جلد پاک افغان ایکسپو منعقد کرنے جا رہے ہیں جس میں پاک و افغان خواتین کو کاروباری مواقع و سہولیات اسلامی اصولوں کے مطابق فراہم کی جائیں گی۔جیم اسٹون بہت بڑی مارکیٹ ہے، خواتین کو اس شعبہ میں ہنر مند بنا کر انہیں کاروبار کے قابل بنایا جا سکتا ہے۔خواتین جیولری سے زیادہ لگاو رکھتی ہیں، قیمتی پتھروں کی پالشنگ، کٹنگ سے متعلق خواتین کو تربیت ملنی چاہئے۔مالیاتی امدادی اداروں کو چاہئے کہ طالبات کیلئے تعلیمی شعبہ میں خصوصی اسکالرشپس فراہم کریں۔انہوں نے کہاکہ یونیورسٹیوں کو ہمیشہ کہتا آیا ہوں کہ ڈگریوں کو ملازمتوں کے حصول کا ذریعہ نہ بنائیں بلکہ جو طلباء وطالبات فارغ التحصیل ہورہے ہیں وہ نہ صرف اپنے روزگار کے اہل بنائیں بلکہ اُن کو دوسرے لوگوں کو روزگار دینے کاوسیلہ مند بھی بناناہوگا۔ گورنرنے کہاکہ اسلام سے پہلے عورت کی حیثیت ایک زرخرید غلام سے زیادہ نہیں تھی۔ اس کا نہ کوئی حق تھا نہ عزت و مقام، بیٹیوں کو زندہ دفن کردیاجاتاتھا۔پھردین اسلام کی روشنی پھیلی، نبی کریم ﷺ نے لوگوں کو عورت کا مقام اورمرتبہ بتایا اور دین اسلام نے دختر کشی کی اس بہیمانہ رسم کو غیرانسانی فعل قراردیا۔ رسول اکرم ﷺ نے بیٹی کی پیدائش اور اس کی پرورش پر جنت کا پروانہ جاری کیا۔ اسلام نے لوگوں کو ظلمت اور جہالت سے نکالااور انہیں انسانیت کا کھویا ہوا مقام واپس دلایا۔ گورنرنے کہاکہ عورت پر کسی قسم کی سختی اور بوجھ نہیں، مسلمان خواتین کو بھی چاہئیے کہ وہ دین اسلام کے بتائے ہوئے اصولوں پرتجارت اورنجی زندگی گزارنے کو ترجیح دے اور حضرت خدیجۃ الکبریٰ رضی اللہ عنہاکے نقش قدم پرچل کرتجارت کو وسعت دینے کی کوشش کریں۔خواتین کی تعلیم کے ساتھ ان کی عزت ووقار کا تحفظ بہت اہم ہے۔ خواتین کو ان کی زندگی کے بنیادوں پرفیصلوں کا اختیار دینا اورخواتین کی سیاسی وسماجی حیثیت تسلیم کئے بغیر کوئی معاشرہ ترقی نہیں کرسکتا۔ اسلامی معاشرے مین خواتین کو برابرکے حقوق حاصل ہیں بلکہ یہ اسلام ہی ہے کہ جس نے خواتین کو انتہائی عزت واحترام بخشی ہے اور آئین پاکستان اورقوانین میں بھی زندگی کے ہرشعبہ میں خواتین کے حقوق کا تحفظ کیاگیا ہے۔ گورنرنے کہاکہ بہترین کردارسازی نہ ہونے اور اخلاق سے دورہونا صنفی ناانصافی ک جنم دیتاہے، ہمیں معاشرے میں اخلاقیات اور کردار سازی پرزیادہ توجہ دینے کی ضرورت ہے۔

 

علاوہ ازیں گورنرسے کوہاٹ چیمبرآف کامرس اینڈانڈسٹری کے 12 رکنی وفد نے رشیدپراچہ اور آل پاکستان ایکسپورٹ ایسوسی ایشن کے 15 رکنی وفد نے صدر نوید اسلم کی قیادت میں گورنرہاوس میں الگ الگ ملاقات کی۔ ملاقات میں تاجروں اور ایکسپورٹرز کودرپیش مسائل سے گورنر کو آگاہ کیاگیاجس پر گورنرنے مسائل کے حل کیلئے اپنی جانب سے مکمل تعاون کا یقین دلایااور بعض مسائل کے حل کیلئے موقع پر ہی احکامات جاری کئے۔ دریں اثناء گورنرسے تاریخی دارالعلوم سوات کے 12 رکنی وفد نے قاری فتحت اللہ کی قیادت میں اورنوشہرہ سے تعلق رکھنے والے مسیحی برادری کے 15 رکنی نمائندہ وفد نے بھی گورنرہاوس میں الگ الگ ملاقات کی اور مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا۔

chitraltimes governor kp haji ghulam ali attended srsp program at shaheed banazir university 1

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
82542

سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے زیر اہتمام ایون میں کلچر اینڈ سپورٹس ایونٹ کا انعقاد

سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے زیر اہتمام ایون میں کلچر اینڈ سپورٹس ایونٹ کا انعقاد

چترال ( نمایندہ چترال ٹایمز ) سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے چائلڈ پروٹیکشن پراجیکٹ کے تحت کلچر اینڈ سپورٹس ایونٹ کے طور پر ایک ٹورنامنٹ گورنمنٹ ہائیر سکینڈری سکول ایون کے طلباء کے مختلف کلاسز کے مابین سکول گرونڈ ایون میں منعد ہوا ۔ جس میں سکول کی 9ٹیموں نے حصہ لیا ۔ ٹورنامنٹ کا فائنل میچ جماعت نہم آرٹس گروپ اور سائنس گروپ کے مابین کھیلا گیا ۔ جس میں سنسنی خیز مقابلے کے بعد سائنس گروپ نے کامیابی حاصل کی اور ٹرافی اپنے نام کر لی ۔

ٹورنامنٹ کے اختتامی تقریب کے مہمان خصوصی چیرمین ویلج کونسل ایون ون وجیہ الدین تھے ۔ جبکہ دیگر مہمانوں میں سکول کے اساتذہ مفتی حسام الدین ، استاد سردار داود ،استاد مختار احمد ، کونسلر عبد الصمد ، یوتھ کونسلر صہیب عمراور ایس آر ایس پی کی طرف سے عبادارحمن سو شل آرگنائزر ،اورمحمد آصف ویلج سیکرٹری وی سی ون موجود تھے ۔ سابق چیرمین محکم الدین نے صدر تقریب کے فرائض انجام دی ۔استاد سجاد احمد نے ٹورنامنٹ میں ریفری کی خدمات انجام دیں ۔

 

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مہمان خصوصی چیرمین ویلج کونسل ایون ون وجیہ الدین نے کہا ۔ کہ ایس آر ایس پی نے طلباء کو صحتمند اور ہم نصابی سرگرمیوں میں مصروف رکھنے کیلئے ٹورنا منٹ کا انعقاد کیا ۔ اس سے بچوں کی کھیلوں میں دلچسپی کو بڑھانے ، صلاحیتوں کو ابھارنے کے ساتھ ساتھ ذہنوں کو صحتمند رکھنے میں مدد ملے گی ۔ اور صحتمند ذہن ہی ملکی ترقی میں کردار ادا کر سکتی ہے ۔ انہوں نے طلباء پر زور دیا ۔ کہ وہ اپنے والدین اور اساتذہ کرام کا احترام کریں ۔ اورکامیابی اچھے اخلاق کے حامل محتنی طلباء ہی کے قدم چومتی ہے ۔ انہوں نے اچھی اور معیاری تعلیم کے حصول پر زور دیا ۔

چیرمین وی سی نے اس بات کو خوش آیند قرار دیا ۔ کہ ایون کے کئی نوجوان سپورٹس میں اپنی اچھی کاردگی کی بدولت مختلف اداروں میں جاب حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں ۔ انہوں طلباء کیلئے ٹورنامنٹ منعقد کرنے پر ایس آر ایس پی کا شکریہ ادا کیا ۔ اور اس ٹورنامنٹ کو کامیاب بنانے میں گورنمنٹ ہائیر سکینڈری سکول ایون کے پرنسپل احسان الحق و دیگر اساتذہ کے تعاون کی تعریف کی ۔تقریب سے ایس آر ایس پی کے ایس او عباد الرحمن اور صدر محفل محکم الدین نے بھی خطاب کیا ۔ تقریب کے اختتام پر ونر ٹیم جماعت نہم سائنس گروپ اور رنر اپ ٹیم آرٹس گروپ میں ٹرافی اور مہمانوں و طلباء میں میڈلز تقیسم کئے گئے ۔

chitraltimes srsp tournament ayun ghss 5 chitraltimes srsp tournament ayun ghss 4 chitraltimes srsp tournament ayun ghss 3 chitraltimes srsp tournament ayun ghss 2

Posted in تازہ ترین, چترال خبریںTagged
75922

سرحد رورل سپورٹ پروگرام کی جانب سے چائلڈ پروٹیکشن پراجیکٹ کے تحت کمیونٹی بیسڈ اسٹیک ہولڈرز ڈائیلاگ  کا اہتمام

سرحد رورل سپورٹ پروگرام کی جانب سے چائلڈ پروٹیکشن پراجیکٹ کے تحت کمیونٹی بیسڈ اسٹیک ہولڈرز ڈائیلاگ  کا اہتمام

چترال (نمایندہ چترال ٹایمز ) سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے یونیسیف کی مالی تعاون سے چائلڈ پروٹیکشن پراجیکٹ کے تحت جمعہ کے روز کمیونٹی بیسڈ اسٹیک ہولڈرز ڈائیلاگ کا اہتمام کیا گیا جس میں بچوں کے تحفظ اور دوسرے امور سے متعلق اداروں کے نمائندوں اور سول سوسائٹی کے درمیان لنک قائم کرنے اور میکینزم بنانے کے لئے ایک دوسرے سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ سوشل ویلفئیر ڈیپارٹمنٹ، نادرا، بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام، لوکل گورنمنٹ ڈیپارٹمنٹ، پولیس، ایجوکیشن اور ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کے علاوہ علمائے کرام، میڈیا، بار ایسوسی ایشن، سول سوسائٹی کے نمائندوں نے ریفرل پاتھ وے کے حوالے سے اپنے اپنے کرداروں پر روشنی ڈالی۔ اس موقع پر ڈسٹرکٹ افیسر سوشل ویلفئرنصرت جبین،الخدمت فاونڈیشن، حمیدہ ایجوکیشن اینڈ بورڈ اکیڈیمی، یونیسیف کے نیوٹریشن پراجیکٹ، فزیکلی اینڈ مینٹلی چیلنجڈ سکول کے علاوہ شاہی جامع مسجد کے خطیب مولانا خلیق الزمان نے بچوں کی تحفظ اور کفالت سے متعلق اپنے اپنے اداروں کی کارکردگی بیان کی۔

ایس آر ایس پی کے ڈسٹرکٹ پروگرام منیجر طار ق احمد اور چائلڈ پروٹیکشن افیسر صلاح الدین نے پراجیکٹ کے حوالے سے بتایاکہ گزشتہ سال کے سیلاب زدہ علاقوں میں چائلڈ پروٹیکشن کمیٹیاں بنائی گئی ہیں جبکہ safeاسپیس کے نام سے متاثرہ علاقوں میں بچوں کے مشاغل کے لئے جگہے قائم کئے گئے ہیں جہاں بچوں کی دلچسپی کے حامل کھلونے رکھے گئے ہیں جبکہ ان علاقوں میں بچوں کے حقوق، بچوں کے خلاف تشدد کا خاتمہ اور ان کی حفاظت کے سلسلے میں آگہی سیشن منعقد کئے گئے جن میں سینکڑوں افراد نے شرکت کی۔ انہوں نے کہاکہ اسی پراجیکٹ کے تحت ماہرین نفسیات کی خدمات حاصل کرکے سیلاب زدہ علاقوں میں بچوں کی انفرادی نفسیاتی کونسلنگ کا اہتمام بھی کیا جارہا ہے۔انہوں نے بتایاکہ سیلاب سے متاثر ہ ویلج کونسلوں میں لوکل گورنمنٹ کے تعاون سے بچوں کی برتھ رجسٹریشن کا کام مفت کرنے کا اہتمام بھی کیا گیا ہے جس سے متعلقہ علاقوں کے والدین بھر پور فائدہ اٹھائیں۔

مہمان خصوصی ڈسٹرکٹ ایجوکیشن افیسر (مردانہ) محمود غزنوی نے اپنے خطاب میں والدین پر زور دیاکہ وہ اس وقت ہی بچوں کے بارے میں سوچنا شروع کرے جب وہ شادی کے بندھن میں باندھنے جارہے ہوں اور بچوں کی پیدائش کے ساتھ اپنی نازک اور حساس ذمہ داریوں کا مکمل ادراک کرے۔ انہوں نے کہاکہ چائلڈ پروٹیکشن سب سے بہترین انوسٹمنٹ ہے جو دور رس اثرات کے حامل ہے اور ہمیں اپنے اپنے گھروں کے ماحول کو اس طرح بنانے کی ضرور ت ہے کہ ہر مرحلے پر چائلڈ پروٹیکشن کا احساس تروتازہ رہے۔ انہوں نے کہاکہ معاشرے میں ہر قدم پر فتنے سر اٹھائے کھڑے ہیں اوریہی چائلڈ پروٹیکشن کی بہترین صورت ہے کہ ہم اپنے بچوں کی ماحول پر اور ان کے ساتھ کھیلنے والے بچوں پر کڑی نظر رکھیں۔ انہوں نے اپنے محکمے کی طرف سے ایس آر ایس پی کی طرف سے شروع کردہ چائلڈ پروٹیکشن پراجیکٹ کو کامیاب بنانے کے لئے ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا.

chitraltimes srsp workshop for stakeholders dialogue on child protection 2 chitraltimes srsp workshop for stakeholders dialogue on child protection 3 chitraltimes srsp workshop for stakeholders dialogue on child protection 5 chitraltimes srsp workshop for stakeholders dialogue on child protection 7 chitraltimes srsp workshop for stakeholders dialogue on child protection 1

chitraltimes srsp workshop for stakeholders dialogue on child protection 4

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
75206

سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے چائلڈ پروٹیکشن پراجیکٹ کے تحت کمیونٹی بیسڈ اسٹیک ہولڈرز ڈائیلاگ کا اہتمام 

Posted on

سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے چائلڈ پروٹیکشن پراجیکٹ کے تحت کمیونٹی بیسڈ اسٹیک ہولڈرز ڈائیلاگ کا اہتمام

چترال ( نمائندہ چترال ٹائمز ) سرحد رورل سپورٹ پروگرام کے یونیسیف کی مالی تعاون سے چائلڈ پروٹیکشن پراجیکٹ کے تحت کمیونٹی بیسڈ اسٹیک ہولڈرز ڈائیلاگ کا اہتمام کیا گیا جس میں بچوں کی فلاح وبہبود اور دوسرے متعلقہ امور سے متعلق اداروں کے نمائندوں اور سول سوسائٹی کے درمیان لنک قائم کرنے اور میکینزم بنانے کے لئے ایک دوسرے سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ سوشل ویلفئیر ڈیپارٹمنٹ، نادرا، بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام، لوکل گورنمنٹ ڈیپارٹمنٹ، پولیس، ایجوکیشن اور ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کے علاوہ علمائے کرام، میڈیا، بار ایسوسی ایشن، سول سوسائٹی کے نمائندوں نے ریفرل پاتھ وے کے حوالے سے اپنے اپنے کرداروں پر روشنی ڈالی۔ اس موقع پر ڈسٹرکٹ افیسر سوشل ویلفئرنصرت جبین، اے ڈی او ایجوکیشن عائشہ، ڈپٹی ڈائرکٹر نادرا مختار اعظم خان، ڈپٹی ڈائرکٹر بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام، 2022ء کے سیلاب زدہ علاقوں کے ویلج کونسلوں کے چیرمین اور ویلج سیکرٹریز، ڈسٹرکٹ خطیب، صدر چترال پریس کلب اور دوسروں نے ڈائیلاگ میں حصہ لیا۔ اس موقع پر چائلڈ پروٹیکشن افیسرزصلاح الدین اور عبادالرحمن نے پراجیکٹ کے حوالے سے بتایاکہ گزشتہ سال کے سیلاب زدہ علاقوں میں چائلڈ پروٹیکشن کمیٹیاں بنائی گئی ہیں جبکہ safeاسپیس کے نام سے متاثرہ علاقوں میں بچوں کے مشاغل کے لئے جگہے قائم کئے گئے ہیں جہاں بچوں کی دلچسپی کے حامل کھلونے رکھے گئے ہیں جبکہ ان علاقوں میں بچوں کے حقوق، بچوں کے خلاف تشدد کا خاتمہ اور ان کی حفاظت کے سلسلے میں آگہی سیشن منعقد کئے گئے جن میں سینکڑوں افراد نے شرکت کی۔ انہوں نے کہاکہ اسی پراجیکٹ کے تحت ماہرین نفسیات کی خدمات حاصل کرکے سیلاب زدہ علاقوں میں بچوں کی انفرادی نفسیاتی کونسلنگ کا اہتمام بھی کیا جارہا ہے۔ اس سے قبل ایک تھئٹر شوکے زریعے چترال میں بچیوں کی خودکشی کی بڑھتی ہوئی واقعات کو اجاگر کیاگیا

chitraltimes srsp program 4 chitraltimes srsp program 5 chitraltimes srsp program 1

chitraltimes srsp program 3

Posted in تازہ ترین, چترال خبریںTagged
75117