Chitral Times

May 29, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

پولیس بھرتی کے تحریری امتحان میں جعل سازی کرنے پر 147 جعلی امیدواران گرفتار, ایٹا کے جدید ترین سافٹ وئیر نے جعل سازی کی تمام کوششیں ناکام بنا دیں، مقدمات درج

شیئر کریں:

پولیس بھرتی کے تحریری امتحان میں جعل سازی کرنے پر 147 جعلی امیدواران گرفتار, ایٹا کے جدید ترین سافٹ وئیر نے جعل سازی کی تمام کوششیں ناکام بنا دیں، مقدمات درج

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) خیبر پختونخوا پولیس میں بھرتی کے لئے منعقد ہونے والے تحریری امتحان میں سینکڑوں جعلی امیدوارن گرفتار کر لئے گئے۔تفصیلات کے مطابق پولیس بھرتی کے لئے ایٹا کے زیر اہتمام منعقد ہونے والے امتحان میں 46000 امیدواران نے کاغذات جمع کیے۔ پہلے مرحلے میں امیدواران کا فزیکل امتحان لیا گیا جس میں 13448 امیدواران کامیاب ٹھہرے۔جسمانی امتحان میں کامیاب ہونے والے امیدواران کا تحریری امتحان صوبہ بھر کے گیارہ امتحانی مراکز میں منعقد ہوا۔ حیران کن طور پر 147 امیدواران نے تحریری امتحان میں جعلسازی کے ذریعے اپنی جگہ کسی دوسرے فرد کو امتحان دلوانے کی کوشش کی، تاہم جدید ترین سافٹ وئیر نے جعلی سازی کی تمام کوششیں ناکام بنا دیں۔ ایٹا ذرائع کے مطابق ایٹا امتحان میں بیٹھنے کے لئے ہر امیدوار کی نہ صرف نادرا سے تصدیق لازمی ہے بلکہ بھرتی کے ہر مرحلے پر اسے ایک جدید ترین سافٹ وئیر کی مدد سے جانچا بھی جا تا ہے۔ ذرائع نے بتا یا کہ کئی امیدواران نے فزیکل ٹسٹ کے مرحلے پر بھی جعل سازی کرنے کی کوشش کی تھی تاہم وہ کامیاب نہ ہو سکے تھے۔

 

کئی امیدواران نے کاغذات میں ہیر پھیر کر کے تحریری امتحان میں اپنی جگہ کسی دوسرے فرد کو بٹھانے کی کوشش کی مگر جونہی امیدوارن کی جانچ سافٹ وئیر سے شروع کی گئی تو جعلی امیدوارن کی فوری طور پر شناخت ہو گئی کیونکہ سافٹ وئیر ایسے امیدواران کی تصدیق نہیں کر رہا تھا۔ ایسے تمام جعلی امیدوارن کو موقع پر گرفتار کر کے پولیس کے حوالے کر دیا گیا جن کے خلاف متعلقہ تھانوں میں دفعہ 468، 471، 419 اور 420 کے تحت مقدمات درج کر دئیے گئے ہیں۔ ایٹا ذرائع کے مطابق سب سے زیادہ جعلی سازی کے مرتکب افراد بنوں میں گرفتار کئے گئے جن کی تعداد 59 ہے۔ بٹگرام میں 31، کوہاٹ میں 23، مردان میں 9، سوات اور ایبٹ آباد میں 6,6، ڈیرہ اسماعیل خان میں 3،جبکہ ملاکنڈ، مانسہرہ اور پشاور میں 1, 1 امیدوار جعل سازی کرتے ہوئے گرفتار ہوا۔ ہری پور اور چترال میں جعل سازی کا کوئی بھی کیس سامنے نہیں آیا۔

 

رپورٹ کے مطابق تحریری امتحان میں کامیاب ہونے والے امیدواران کا کوالٹی چیک کا مرحلہ صوبہ کے تمام ڈویژنل ہیڈکوارٹرز میں منعقد ہو گا جس میں نہ صرف کامیاب امیدواران کے اصل کاغذات کو چیک کیا جائے گا بلکہ ان کی شناخت کو ایک مرتبہ پھر مذکورہ سافٹ وئیر کے ذریعے جانچا جائے گا۔ فائنل میرٹ لسٹ بناتے وقت ہر امیدوار کی ویڈیو شناخت کی جائے گی تاکہ یہ کنفرم کیا جا سکے کہ فزیکل اور تحریری امتحانات اور کوالٹی چیک کے مرحلہ پر ایک ہی امیدوار امتحان میں حاضر ہو ا ہے۔ یہی شناختی مواد انٹرویو کے مرحلہ کے لئے پولیس ڈپارٹمنٹ کے حوالے کیا جائے گا تاکہ اس موقع پر بھی یہ کنفرم کیا جاسکے کہ انٹرویو میں آنے والا امیدوار ہی بھرتی کے تمام مراحل سے گزرا ہے۔ ذرائع کا کہنا تھا کہ ان تمام اقدامات کے ذریعے سے یہ ناممکن بنا دیا گیا ہے کہ کوئی غلط امیدوار کسی بھی طرح سے بھرتی کے مراحل سے گزر سکے۔ ایٹا کی طرف سے فائنل میرٹ لسٹیں ایٹا کی ویب سائٹ اور پولیس ڈپارٹمنٹ کی ویب سائٹ پر اپ لوڈ کی جائیں گی تاکہ ہر امیدوار یہ جان سکے کہ میرٹ لسٹ میں شامل ہونے والا امیدوار کون سا ہے۔


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
88858