Chitral Times

May 28, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

نئے تعلیمی سال کے آغاز تک تمام سکولوں میں طلباؤطالبات کو درسی کتابوں کی فراہمی یقینی بنائی جائے- وزیرتعلیم فیصل خان ترکئی

Posted on
شیئر کریں:

نئے تعلیمی سال کے آغاز تک تمام سکولوں میں طلباؤطالبات کو درسی کتابوں کی فراہمی یقینی بنائی جائے- وزیرتعلیم فیصل خان ترکئی

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) خیبر پختونخوا کے وزیرتعلیم فیصل خان ترکئی نے کہاہے کہ نئے تعلیمی سال کے آغاز تک تمام سکولوں میں طلباؤطالبات کو درسی کتابوں کی فراہمی یقینی بنائی جائے تاکہ بچوں کی تعلیم کا سلسلہ متاثر نہ ہو۔بجٹ معاملات کیلئے وہ خود محکمہ خزانہ اوردیگراعلیٰ حکام سے بات کریں گے تاکہ بروقت بجٹ جاری ہو اور سپلائی مکمل ہوسکے۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے خیبرپختونخواٹیکسٹ بک بورڈ کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں چیئرمین ٹیکسٹ بک بورڈ فرالثقلین، سپیشل سیکرٹری محکمہ تعلیم اسفندیارخٹک، ممبرٹیکسٹ بک بورڈ ولی خان اور دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔وزیرتعلیم کوبریفنگ میں بتایاگیاکہ پبلشرزکیساتھ معاملات ٹھیک جارہے ہیں اور ابھی تک تقریباً 28 فیصد کتابوں کی سپلائی کاعمل مکمل کیاگیا ہے جبکہ ہماری کل ڈیمانڈ تقریباً 3کروڑ 39 لاکھ کتابیں ہیں۔ صوبہ بھر میں کتابوں کی بروقت سپلائی کیلئے پرائمری لیول پر 453 سرکلز اور سیکننڈری لیول پر82 سرکلز قائم کئے گئے ہیں اور کتابوں کی سپلائی اپریل کے دوسرے ہفتے سے شروع ہوجائیگی۔ انہیں مزید بتایاگیاکہ امسال کتابوں کی سپلائی کی مقدار کو کم رکھاگیاہے اور حکومت کی پالیسی کے مطابق ہائی اور ہائیرسیکنڈری سکول لیول پر بچوں کو سابقہ طلباکے زیراستعمال کتابیں فراہم کی جائیگی۔ اس سے ایک تو اخرجات کنٹرول ہوں گے اور بچوں کو بروقت کتابوں کی سپلائی بھی یقینی بنائی جائیگی۔وزیرتعلیم فیصل خان ترکئی نے حکام کو ہدایت کی کہ پبلشرز کیساتھ مسلسل رابطے میں رہیں اورٹائم لائن کے مطابق کتابوں کی سپلائی پرکام جاری رکھاجائے۔ وزیرتعلیم نے کہاکہ مالی مسائل ضررو ہیں مگر تعلیم اولین ترجیح ہے اور ہم ہرممکن کوشش کریں گے کہ سکولوں میں موجود بچوں کو کولٹی تعلیم فراہم کرنے اور سکولوں سے باہر بچوں کو سکولوں میں لانے کیلئے ہرممکن اقدامات کریں گے۔ انہوں نے کہاکہ بروقت منصوبہ بندی کے تحت دورافتادہ اورپہاڑی علاقوں کے سکولوں میں کتابوں کی سپلائی کیلئے الگ لائحہ عمل تیارکریں تاکہ وہاں کی سپلائی بھی لیٹ نہ ہو۔ انہوں نے یہ ہدایت بھی کی کہ سابقہ کتابوں کو زیراستعمال لانے کیلئے طریقہ کار کے مطابق سکولوں کے پرنسپلز اورذمہ داروں کو ہدایات جاری کی جائیں۔

 

گومل زام ڈیم کمانڈ ایریا ڈ و یلپمنٹ پراجیکٹ محکمہ زراعت، حکومت خیبر پختونخوا اور USAID کا مشترکہ منصوبہ ہے جس میں ڈیم کے بننے کے بعد مین کنال اور ڈسٹری بیوٹری کنال کی تعمیر کے نتیجے میں ڈی آئی خان، ٹانک اور کلاچی کی 191139-وزیر زراعت خیبر پختونخوا کوبریفنگ ایکڑ زمین کوسیراب کیا جانا ہے

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) گومل زام ڈیم کمانڈ ایریا ڈ و یلپمنٹ پراجیکٹ محکمہ زراعت، حکومت خیبر پختونخوا اور USAID کا مشترکہ منصوبہ ہے جس میں ڈیم کے بننے کے بعد مین کنال اور ڈسٹری بیوٹری کنال کی تعمیر کے نتیجے میں ڈی آئی خان، ٹانک اور کلاچی کی 191139 ایکڑ زمین کوسیراب کیا جانا ہے اس منصوبے سے علاقے کے عوام کی زندگیوں میں نمایا ں بہتری آئیگی اور اعلیٰ قیمت والی فصلوں کی کاشت سے روزگار کے نئے مواقع پیدا ہو نگے۔ان خیالات کا اظہار وزیر زراعت خیبر پختونخوا محمد سجاد کو گومل زام ڈیم کمانڈ ایریا ڈ و یلپمنٹ پراجیکٹ سے متعلق دی گئی بریفنگ میں بتایا گیاجس میں دوسروں کے علاوہ سیکرٹری زراعت جاوید مروت، پراجیکٹ ڈائریکٹر گومل زام محمد زبیر بھی مو جود تھے۔ بریفنگ میں مزید بتایا گیا کہ گومل زام ڈیم کمانڈ ایریا ڈیویلپمنٹ پراجیکٹ کوحکومت خیبر پختونخواکے بڑے پراجیکٹس میں شمار کیا جاتا ہے اور یہ عرصہ نو سال سے زیرِ تکمیل ہے۔ مذکورہ پراجیکٹ کے تحت زیادہ تر اہداف پایہ ء تکمیل تک پہنچ چکے ہیں جس میں تقریبا ایک لاکھ ایکڑ تک کا علاقہ زیرسیراب لایا جا چکا ہے۔ اور مزید مختصر عرصہ میں پورا کمانڈ ایریا ڈیویلپ ہو جائے گا اور یہ پراجیکٹ کامیابی سے پایہ تکمیل تک پہنچ جائے گا۔ اس پراجیکٹ میں میں زراعت وامورِ حیوانات کے شعبہ جات میں پیداواری توسیع، ویلیو ایڈیشن اور مارکیٹنگ کی اصلاحات بھی نافذ کی جا رہی ہیں۔ جس سے علاقے میں زرعی انقلاب برپا ہوا ہے، اور زراعت و امورِ حیوانات کی پیداوار میں خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ علاقے میں روزگار کے مواقع بھی میسر ہوئے ہیں جن سے لوگوں کا معیارِ زندگی بلند ہوا ہے۔ پراجیکت کا عملہ علاقے میں سیکیورٹی کی انتہائی مخدوش صورتحال کے باوجود پراجیکٹ کی کامیابی کے لئے دن رات کوشاں ہے۔


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
86470