Chitral Times

Sep 27, 2023

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

صوبے میں معاشی ترقی اور کاروباری سرگرمیوں کے فروع کے لئے ہر ممکن تعاون کیا جائے گا۔ چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا ندیم اسلم چوہدری

Posted on
شیئر کریں:

صوبے میں معاشی ترقی اور کاروباری سرگرمیوں کے فروع کے لئے ہر ممکن تعاون کیا جائے گا۔ چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا ندیم اسلم چوہدری

پاک افغان انٹر نیشنل ایکسپو کے انعقاد سے دونوں ممالک کے درمیان کاروبار کے زبردست مواقع پیدا ہوں گے۔ کوارڈینیٹر ایف پی سی سی آئی سرتاج احمد خان

پشاور(چترال ٹایمزرپورٹ) صوبے میں معاشی ترقی اور کاروباری سرگرمیوں کے فروع میں پاک افغان ایکسپو کلیدی کردار ادا کرے گا، اس ایکسپو سے پاکستان اور افغانستان کے کاروباری حلقے کو ایک دوسرے کے قریب لانے اور کاروباری شراکت داری کے حوالے سے سنگ میل ثابت ہو گا ان خیالات کا اظہار کوارڈینیٹر ایف پی سی سی آئی سرتاج احمد خان نے چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا ندیم اسلم چوہدری کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاک افغان تجارت کے حجم کو بڑھانا وقت کی اہم ضرورت ہے جس کے لئے حکومت کو تاجر برادری کے ساتھ مل کر کام کرنا ہو گا۔

 

سرتاج احمد خان نے اس موقع پر کہا کہ پشاور میں نمک منڈی ایشیاء کی سب سے بڑی قیمتی پتھروں کی منڈی ہے اسے بین الاقوامی لیول پر جیم ایکسپورٹ سٹی میں تبدیل کیا جائے تاکہ صوبے میں معاشی سرگرمیوں میں مزید پیش رفت ہو سکے انہوں نے یہ بھی کہا کہ اس جیم ایکسپورٹ سٹی کے لئے صوبائی حکومت اراضی دے دیں جسے فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کامرس اور آل پاکستان ایسکپورٹر ایسوسی ایشن مرکزی حکومت کے ساتھ مل کر تعمیر کرنے کا منصوبہ بنا چکے ہیں جس پر چیف سیکرٹری نے اتفاق کرتے ہوئے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

 

اس موقع پر سرتاج احمد خان نے چیف سیکرٹری کو سیلابوں کے فوری بعد چترال کا دورہ کرکے بحالی کے کاموں میں تیزی لانے پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ چترال سیلابوں سے بری طرح متاثر ہوئے اور دوبارہ بحالی کے لئے حکومت کو بڑے گرانٹ فراہم کرنا ہوگا بصورت دیگر سیلاب کی تباہ کاریوں کا آزالہ ممکن نہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگلے سال ایف پی سی سی آئی صوبائی حکومت سے مل کر جشن شندور کو بین الاقوامی لیول پر منانے کے لئے اشتراک عمل کی تجویز پیش کی جسے چیف سیکرٹری نے مکمل اتفاق کیا۔

 

اس موقع پر چیف سیکرٹری نے بات کرتے ہوئے بزنس کمیونٹی کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی یقین دہانی کرائی ان کا کہنا تھا کہ چترال کی تعمیر و ترقی میری اولین ترجیح ہے اور اس سلسلے میں ہم ایک جامع حکمت عملی کے ساتھ کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم پاک افغان بین الاقوامی ایکسپو میں بھر پور شرکت کریں گے۔

چیف سیکرٹری نے مزید کہا کہ جن اضلاع کے چیمبروں کو پلاٹ کی ضرورت ہے انہیں پلاٹ دیا جائے گا تاکہ اضلاع کی سطح پر کاروباری مواقع پیدا ہو سکیں اور مقامی تاجروں کے مسائل حل ہو جائے۔

اس موقع پر سابقہ نگران صوبائی وزیر محمد عدنان جلیل بھی موجود تھے انہوں نے بھی صوبے میں کاروباری سرگرمیوں کے فروع اور بزنس کمیونٹی کو درپیش مشکلات کے حوالے سے چیف سیکرٹری کو آگاہ کیا۔


شیئر کریں: