Chitral Times

May 19, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

گلگت بلتستان کے نئے وزیرِ اعلیٰ کے انتخاب کیلئے شیڈول جاری

شیئر کریں:

گلگت بلتستان کے نئے وزیرِ اعلیٰ کے انتخاب کیلئے شیڈول جاری

گلگت بلتستان(چترال ٹایمزرپورٹ) گلگت بلتستان کے نئے وزیرِ اعلیٰ کے انتخاب کے لیے شیڈول جاری کر دیا گیا۔اسمبلی سیکریٹریٹ میں 12 جولائی کو دن 2 بجے امیدواروں سے کاغذات نامزدگی وصول کیے جائیں گے۔وزیرِ اعلیٰ جی بی کے انتخاب کے لیے پولنگ 13 جولائی کو دوپہر 12 بجے اسمبلی ہال میں ہو گی۔واضح رہے کہ سپریم اپیلٹ کورٹ گلگت بلتستان نے جعلی ڈگری کیس میں پاکستان تحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے وزیرِ اعلیٰ خالد خورشید کو نااہل قرار دیا تھا۔پی ٹی آئی نے خالد خورشید کی جگہ راجہ اعظم کو وزیرِ اعلیٰ کا امیدوار نامزد کیا ہے۔سپریم اپیلٹ کورٹ نے گلگت بلتستان کے نئے وزیرِ اعلیٰ کے انتخاب کے شیڈول کی منظوری دی تھی۔اسپیکر اسمبلی نذیر احمد ایڈووکیٹ نے وزیرِ اعلیٰ کے انتخاب کا نیا شیڈول سپریم اپیلٹ کورٹ میں پیش کیا تھا جسے عدالت نے منظور کر لیا تھا۔

الیکشن کمیشن کے پنجاب میں بلدیاتی انتخابات کیلئے تمام انتظامات مکمل

اسلام آباد(سی ایم لنکس)الیکشن کمیشن آف پاکستان نے پنجاب میں بلدیاتی انتخابات کے لیے تمام انتظامات مکمل کر لیے ہیں۔الیکشن کمیشن آف پاکستان میں چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی زیرِ صدارت اجلاس میں پنجاب اور اسلام آباد میں بلدیاتی انتخابات کا معاملہ زیرِ غور آیا۔الیکشن کمیشن کے حکام نے کہا کہ اسلام آباد کے بلدیاتی انتخابات کے انعقاد اور شیڈول دینے کے لیے تیار ہیں، وزارتِ داخلہ 12 جولائی تک مخصوص نشستوں کی تعداد کا نوٹیفکیشن دے۔الیکشن کمیشن نے مطالبہ کیا کہ وزارتِ داخلہ امیدواروں کے لیے انتخابی اخراجات کی حد کے رولز مہیا کرے۔اجلاس میں پنجاب کے بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کے بارے میں بریفنگ دی گئی اور بتایا گیا کہ پنجاب میں انتخابی گروپوں کی رجسٹریشن 17 جولائی کو مکمل ہو جائے گی۔الیکشن کمیشن کے حکام نے کہا کہ پنجاب حکومت کو لکھا جائے کہ ای وی ایم اور آئی ووٹنگ سے متعلق ترامیم کو مدِ نظر رکھا جائے، فوری الیکشن کے لیے پنجاب حکومت لوکل گورنمنٹ ایکٹ اور رولز میں ضروری ترمیم کرے۔الیکشن کمیشن کے حکام نے بتایا کہ پنجاب حکومت کو کہا ہے کہ بلدیاتی انتخابات کے دوران ای وی ایم کا استعمال ممکن نہیں، پنجاب حکومت کو بتا دیا ہے کہ آئی ووٹنگ کی سہولت بھی فراہم نہیں کی جا سکتی۔الیکشن کمیشن کے حکام کے مطابق پنجاب حکومت نے لوکل گورنمنٹ کے رولزمیں ترمیم کر دی، جبکہ ووٹنگ کا طریقہ کار بھی الیکشن ایکٹ 2017ء کے تحت مہیا کر دیا ہے۔الیکشن کمیشن کے حکام کا مزید کہنا ہے کہ رولز کے ساتھ لوکل گورنمنٹ ایکٹ میں ترمیم ضروری ہے، لوکل گورنمنٹ ایکٹ اور رولز ایک دوسرے سے متصادم نہیں ہونے چاہئیں۔الیکشن کمیشن نے ہدایت کی ہے کہ صوبائی حکومت پنجاب کو اس معاملے پر تحریر کیا جائے۔

 

وفاقی دارالحکومت میں بلدیاتی انتخابات کے شیڈول کی اجرا کے لئے وزارت داخلہ 12 جولائی تک مخصوص نشستوں کی تعداد کا نوٹیفکیشن اور امیدواروں کے لئے انتخابی اخراجات کی حد کے رولز مہیا کرے، الیکشن کمیشن

اسلام آباد(چترال ٹایمزرپورٹ)چیف الیکشن کمشنر نے حکم دیا ہے کہ وزارت داخلہ 12 جولائی تک مخصوص نشستوں کی تعداد کا نوٹیفکیشن اور امیدواروں کے لئے انتخابی اخراجات کی حد کے رولز ہر صورت الیکشن کمیشن کو مہیا کرے تاکہ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بلدیاتی انتخابات کا شیڈول جاری کیا جا سکے۔ الیکشن کمیشن سے جاری بیان کے مطابق چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی زیر صدارت پیر کو اہم اجلاس منعقد ہوا جس میں چیف الیکشن کمشنر اور الیکشن کمیشن کے معزز اراکین کے علاوہ سپیشل سیکرٹری اور دیگر سینئر افسران نے شرکت کی۔اجلاس میں بتایا گیا کہ معزز عدالت عالیہ اسلام آباد کے حکم کی روشنی میں الیکشن کمیشن وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے بلدیاتی انتخابات کے انعقاد اور شیڈول دینے کے لئے مکمل طور پر تیار ہے، البتہ 22 جون 2023 کے اجلاس کے دوران وزارت داخلہ کے نمائندگان نے مخصوص نشستوں کی تعداد کے نوٹیفکیشن اور امیدواروں کے لئے انتخابی اخراجات کی حد کے لئے رولز بنانے کے لئے درخواست کی تھی جس پر الیکشن کمیشن نے وزارت داخلہ کو مذکورہ بالا دستاویزات مہیا کرنے کی ہدایت کی مگر تاحال وزارت داخلہ کی طرف سے جواب موصول نہیں ہوا۔الیکشن کمیشن نے حکم دیا کہ وزارت داخلہ کو فوری طور پر خط تحریر کیا جائے کہ وہ 12 جولائی تک مخصوص نشستوں کی تعداد کا نوٹیفکیشن اور امیدواروں کے لئے انتخابی اخراجات کی حد کے رولز ہر صورت الیکشن کمیشن کو مہیا کرے تاکہ الیکشن کمیشن وفاقی دارالحکومت میں بلدیاتی انتخابات کا شیڈول جاری کرے۔ صوبہ پنجاب کے بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کے بارے میں بریفنگ کے دوران الیکشن کمیشن کو بتایا گیا کہ پنجاب میں انتخابی گروپوں کی رجسٹریشن کا عمل 17 جولائی کو مکمل ہو جائے گااور الیکشن کمیشن نے صوبہ میں بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کے لئے تمام انتظامات مکمل کر لئے ہیں مگر پنجاب لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2022 کے سیکشن 47(1) کے تحت لوکل گورنمنٹ انتخابات کا انعقاد ای وی ایم پر ہوگا اور ووٹروں کو آئی ووٹنگ کی سہولت بھی میسر ہوگی۔ اس سلسلے میں الیکشن کمیشن نے متعدد بار صوبائی حکومت کو تحریر کیا ہے کہ لوکل گورنمنٹ انتخابات کے دوران ای وی ایم کا استعمال ممکن نہیں اور آئی ووٹنگ کی سہولت بھی فراہم نہیں کی جا سکتی۔ صوبائی حکومت پنجاب نے اس سلسلے میں لوکل گورنمنٹ کے رولز 35(4) میں ضروری ترمیم کردی ہے اور ووٹنگ کا طریقہ کار بھی الیکشن ایکٹ 2017 کے تحت مہیا کر دیا ہے لیکن لوکل گورنمنٹ ایکٹ میں ترمیم ضروری ہے تاکہ لوکل گورنمنٹ ایکٹ اور رولز ایک دوسرے سے متصادم نہ ہوں۔اس پر الیکشن کمیشن نید فتر کو حکم دیا کہ فوری طور پر صوبائی حکومت پنجاب کو تحریر کیا جائے کہ الیکشن ایکٹ 2017کی دفعات 103اور 94 میں وفاقی گورنمنٹ کی طرف سیای وی ایم اور آئی ووٹنگ سے متعلق ترامیم کو مد نظر رکھتے ہوئے لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2022 اور رولز میں ضروری ترمیم کرے تاکہ صوبہ میں الیکشن کا فوری انعقاد یقینی بنایا جائے۔


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
76538