Chitral Times

Mar 5, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

گستاخانہ مواد نہ ہٹانے پر پی ٹی اے نے وکی پیڈیا پاکستان میں بلاک کردیا

Posted on
شیئر کریں:

گستاخانہ مواد نہ ہٹانے پر پی ٹی اے نے وکی پیڈیا پاکستان میں بلاک کردیا

اسلام آباد(چترال ٹایمز رپورٹ )توہین آمیز مواد نہ ہٹانے پر پاکستان میں وکی پیڈیا کو بلاک کردیا گیا۔پاکستان ٹیلی کمیونی کیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) نیدنیا بھر میں آن لائن انسائیکلو پیڈیا سروس دینے والی ویب سائٹ وکی پیڈیا کو توہین آمیز مواد نہ ہٹانے پر پاکستان میں بلاک کر دیا۔پی ٹی اے کی جانب سے انتباہ کے باوجود توہین آمیز اور غیر قانونی مواد نہ ہٹانے پر وکی پیڈیا کو بلاک کیا گیا۔ اس سے قبل تو ہین آمیز مواد کو بلاک نہ کرنے یا نہ ہٹانے کی وجہ سے ملک میں وکی پیڈیا سروسز ڈی گریڈکی گء تھی۔حکام کا کہنا ہے کہ قابل اطلاق قانون اور عدالتی احکامات کے تحت نوٹس جاری کرکے مذکورہ مواد کو بلاک کرنے یا ہٹانے کے لیے وکی پیڈیا سے رابطہ کیا گیا تھا، اس کے علاوہ سماعت کا موقع بھی فراہم کیا گیا تاہم پلیٹ فارم نے نہ تو توہین آمیز مواد ہٹانے کی تعمیل کی اور نہ ہی اتھارٹی کے سامنے پیش ہوا۔پی ٹی اے کی ہدایات پر جان بوجھ کر عدم تعمیلی کے پیش نظر وکی پیڈیا کی سروسز کو پہلے 48 گھنٹوں کے لیے ڈی گریڈ کیا گیا تھا اور رپورٹ کردہ مواد کو بلاک یا ہٹانے کی ہدایت دی گئی تھی اور واضح کیا گیا تھا کہ وکی پیڈیا کی جانب سے تعمیل نہ کرنے کی صورت میں پلیٹ فارم پاکستان کے اندر بلاک کر دیا جائے گااور رپورٹ کردہ غیر قانونی مواد کوبلاک کرنے یا ہٹانے کے بعد ویب سائٹ پر سے پابندیاں اٹھائے جانے پر دوبارہ غور کیا جائے گا۔وکی پیڈیا کی جانب سے پی ٹی اے کی دی گئی مہلت کے دوران ہدایات پر عمل نہیں کیا اور نہ ہی توہین آمیر مواد ہٹایا جس پر وکی پیڈیا کو پاکستان میں بلاک کردیا گیا ہے۔ حکام نے واضح کیا ہے کہ پی ٹی اے ملک کے قانون اور ضوابط کے مطابق تمام پاکستانی شہریوں کے لیے محفوظ آن لائن تجربے کو یقینی بنانے کے لیے پرعزم ہے۔

 

آئی ایم ایف کی پی آئی اے کا خسارہ کم کرنے کی ہدایت

اسلام آباد(سی ایم لنکس) آئی ایم ایف نے پی آئی اے کا خسارہ کم کرنے اور آمدنی بڑھانے کے لیے اقدامات کی ہدایت کردی۔ آئی ایم ایف کی جانب سے حکومت کو متعدد اقدامات کی ہدایت کے بعد اب پی آئی اے میں اصلاحات لانے کی ہدایت کی گئی ہے۔آئی ایم ایف نے پی آئی اے کے خسارے میں کمی اور منافع بخش بنانے کے لیے پلان مرتب کرنے کی ہدایت کردی اور کہا ہے کہ پی آئی اے انتظامیہ خسارے میں کمی کے لیے ٹھوس اقدامات کرے، حکومت پاکستان پی آئی اے کے سالانہ اربوں روپے خسارے پر قابو پانے کے اقدام کو ممکن بنائے۔پی آئی اے کے ذرائع نے بتایا ہے کہ پی آئی اے کا مجموعی خسارہ 400 ارب روپے سے زائد ہے، آئی ایم ایف نے پی آئی اے کی آمدنی بڑھا کر بہتری لانے کی ہدایت دی ہے۔


شیئر کریں: