Chitral Times

Feb 5, 2023

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

صوبے میں مچھلیوں کے غیر قانونی شکار کرنے والوں کے خلاف سخت قانونی کاروائی کافیصلہ

شیئر کریں:

صوبے میں مچھلیوں کے غیر قانونی شکار کرنے والوں کے خلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے، سیکرٹری محکمہ لائیو سٹاک اینڈ فشریز مختیار احمد
خیبرپختونخوا میں پہلی دفعہ فشریز بائیوڈائیورسٹی سنٹر پشاور کا قیام عمل میں لایا گیا ہے، بریفنگ

پشاور (چترال ٹائمز رپورٹ) سیکرٹری محکمہ لائیو سٹاک اینڈ فشریز مختیار احمد نے متعلقہ افسران کو ہدایت کی ہے کہ صوبے میں مچھلیوں کے غیر قانونی شکار کرنے کے خلاف متعلقہ قانون کے تحت سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے کیونکہ محکمہ فشریز کی طرف سے مچھلیوں کے غیرقانونی شکارپر مکمل پابندی عائد ہے یہ ہدایت انہوں نے فشریز کے حوالے سے ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جاری کی۔ اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل فشریز ڈاکٹر خسرو کلیم نے سیکرٹری مختیار احمد کو فشریز کے مختلف منصوبوں پر تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے بتایاکہ خیبرپختونخوا میں پہلی دفعہ فشریز بائیوڈائیورسٹی سنٹر کا پشاور میں قیام عمل میں لایا گیا ہے جس سے صوبے میں ناپید ہونے والی مچھلیوں کی افزائش کرکے قدرتی آبی ذخائر میں دوبارہ ذخیرہ کرنے سے ہمارے صوبے کی بہت اہم مچھلیوں کی تعداد میں اضافہ بھی ہوگا اورہمارے صوبے میں ٹھنڈا پانی،گرم پانی اور نیم سرد پانیوں کی مچھلیوں پر تحقیق میں بھی اہم کردار ادا کرے گا۔

 

انھوں نے بریفنگ میں مذید بتایا کہ صوابی کارپ ہیچر ی 170 کنال اراضی پرمشتمل ہے جس میں گرم پانی کی مچھلیوں کی افزائش نسل کی جائے گی اور صوبے میں موجود سب سے بڑا تربیلا ڈیم اینڈ خانپور ڈیم ہری پور میں ذخیرہ کرنے میں اہم کردار ادا کرے گا جس سے لاکھوں لوگ مستفید ہوں گے ریسرچ سنٹرل مدین سوات میں سرد پانی کی مچھلیوں یعنی ٹراؤٹ فش پر بھی تحقیق عمل میں لا ئی جائیگی،انھوں نے کہا کہ فش فیڈ جو ایک اہم جز ہے اس کی فارمولیشن پر بھی کام کیا جائیگا اور بہت کم قیمت پر ماہی پروری کرنے والے لوگوں کو اعلی کوالٹی کافش فیڈ میسر ہوگا انھوں نے کہا کہ مانسہرہ میں بھی ٹراؤٹ ھچری کا قیام عمل میں لاجائیگا۔سیکرٹری محکمہ لائیو سٹاک اینڈ فشریز مختیار احمد نے کہا کہ فشریز ڈیپارٹمنٹ صوبہ میں تفریحی ما ہی پروری میں بھی اہم کردار ادا کررہا ہے، تا ہم انہوں نے جولوگ مچھلیوں کے غیر قانونی شکار میں ملوث پائے جائیں انکے خلاف سخت قانونی کاروائی کی جائے۔ انھوں نے کہا کہ صوبے کے ہر ضلع اور تحصیل میں دفاتر قائم کئے گئے ہیں جو اس سلسلے میں مختلف قسم کے لائسنس کا اجرا کرتے ہیں۔

 


شیئر کریں: