Chitral Times

Jan 29, 2023

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

چترال کی سڑکوں کیلیے مختص کا فنڈ کسی اور جگہ ٹرانسفر ہونے کی خبریں بالکل بے بنیاد ہیں فنڈز کی عدم دستیابی کی وجہ سے ترقیاتی کام عارضی طور پر بند ہوتے رہتے ہیں۔ وزیر مواصلات اسعد محمود

Posted on
شیئر کریں:

چترال کی سڑکوں کیلیے مختص کا فنڈ کسی اور جگہ ٹرانسفر ہونے کی خبریں بالکل بے بنیاد ہیں فنڈز کی عدم دستیابی کی وجہ سے ترقیاتی کام عارضی طور پر بند ہوتے رہتے ہیں۔ وزیر مواصلات اسعد محمود

اسلام آباد ( نمایندہ چترال ٹایمز ) تحریک تحفظ حقوق چترال کے وفد نے ایم پی اے چترال ہدایت الرحمن کی معیت میں وزیر مواصلات اسعد محمود سے اسلام آباد میں ملاقات کی۔ وفد میں چیئرمین تحریک تحفظ حقوق چترال پیر مختار، فدا الرحمن، روشن آرا سمیت ٹی ٹی ایج سی اسلام آبادکے ذمہ داراں شامل تھے۔

 

تحریک تحفظ حقوق چترال کی طرف سے جاری پریس ریلیز کے مطابق وفد نے چترال میں ترقیاتی کاموں خصوصا چترال بونی مستوج شندور روڈ ،گرم چشمہ روڈ اور بمبوریت روڈ پر کام کی بندش اور ناروا لوڈشیڈنگ سے متعلق شکایات وزیر مواصلات کے سامنے پیش کی ایم پی اے چترال نے بھی وزیر مواصلات کو کام کی بندش کی وجہ سے درپیش سفری مشکلات کے بارے میں تفصیل سے بریفنگ دی۔

وزیر مواصلات مفتی اسعد محمود نے تمام شکایات سننے کے بعد وفد کو یقین دلایا کہ چترال کا فنڈ کسی اور جگہ ٹرانسفر ہونے کی خبریں بالکل بے بنیاد ہیں فنڈز کی عدم دستیابی کی وجہ سے ترقیاتی کام عارضی طور پر بند ہوتے رہتے ہیں تاہم انہوں نے یقین دلایا کہ میں اس مسلے پر این ایج اے حکام سے بات کروں گا اور چترال کے لئے دستیاب فنڈ میں سے زیادہ حصہ ریلیز کراؤں گا۔ وزیر مواصلات نے خود چترال آنے کا بھی عندیہ دیا اور نہایت خوش اسلوبی اور ذمہ داری سے تمام شکایتیں سننے کے بعد مسلے کو حل کرنے کی یقین دہائی کرائی۔ وفد نے وزیر مواصلات سے بجلی کی لوڈشیڈنگ کے حوالے سے بھی کردار ادا کرنے اور متعلقہ محکموں سے بات کرنے کی درخواست کی جس پر وزیر مواصلات نے یہ مسلہ بھی متعلقہ محکموں کے سامنے رکھنے اور اسمبلی فلور پر اس کے بارے میں بات کرنے کی یقین دہانی کرائی۔

 

واضح رہے کہ تحریک تحفظ حقوق چترال نے مذکورہ مسائل کو فوری حل کرنے کے لئے احتجاجی مظاہرے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد وزیر مواصلات کی طرف سے مسلے پر مل بیٹھ کر بات کرنے کی پیشکش کی گئی تھی

آخر میں میں وفد نے وزیر مواصلات اور ایم پی اے چترال مولانا ہدایت الرحمن کا شکریہ ادا کیا کہ جنھوں نے ان مسائل کو سنجیدہ لیکر حل کرنے کی یقین دہانی کرائی اور تین دن تک ایم پی اے چترال تحریک تحفظ حقوق چترال کے وفد کے ساتھ اسلام آباد میں رہے۔

 


شیئر کریں: