Chitral Times

Dec 2, 2022

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

این ڈی ایم اے کی موسم سرما کے دوران سیاحتی مقامات پرسیاحوں کے حوالے سے ضروری ہدایات جاری

شیئر کریں:

این ڈی ایم اے کی موسم سرما کے دوران سیاحتی مقامات پرسیاحوں کے حوالے سے ضروری ہدایات جاری

اسلام آباد( چترال ٹایمز رپورٹ )نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی(این ڈی ایم اے)نے موسم سرما کے دوران ملک کے سیاحتی مقامات پرسیاحوں کی بڑی تعداد میں ا?مدورفت کے پیش نظرضروری ہدایات جاری کردی ہیں۔این ڈی ایم اے نے متعلقہ محکموں، اداروں و دیگر شراکت داروں کو سیاحوں کی رہنمائی اور سہولت کیلئے پیشگی اطلاعات و احتیاطی اقدامات کے متعلق رہنما اصول وضع کئے ہیں۔این ڈی ایم اے کی جانب سے جاری کردہ ہدایات میں سیاحوں سے کہاگیا ہیکہ وہ سیاحتی مقامات کے سفر کی منصوبہ بندی سے قبل موسمی صورتحال کے بارے میں درست معلومات حاصل کرنے کیلئے محکمہ موسمیات پاکستان اور این ڈی ایم اے کی ویب سائٹس ضرورملاحظہ کریں۔اس کے علاوہ روانگی سے قبل نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس کی ویب سائٹ یا ہیلپ لائن سے راستوں کی صورتحال کے بارے میں آگاہی حاصل کریں، اپنے ساتھ سفری ضروریات کی بنیادی اشیا بشمول پینے کا صاف پانی اور کھانے کی خشک اشیا، ضروری ادویات اورگاڑیوں کے ٹائر چین اوردیگرضرورت آلات کو ساتھ رکھیں

 

۔سردی سے بچنے کیلئے گرم ملبوسات کے ساتھ ساتھ سیاحتی مقامات پررہائش کے پیشگی بندوبست کو بھی یقینی بنائیں۔ این ڈی ایم اے نے مقامی انتظامیہ اور ہوٹل انتظامیہ کے لئے بھی ہدایات جاری کی ہیں جن میں متعلقہ علاقوں میں مناسب مانیٹرنگ اور رپورٹنگ کا نظام وضع کرنے پر زور دیا گیا ہے اورکہا گیا ہے کہ نا گہانی موسمی صورتحال کے خطرے سے دوچار علاقوں کی آبادیوں کو پیشگی خبردارکرنے اور بروقت اطلاعات کی فراہمی کا انتظام کیا جائے۔اسی طرح متعلقہ محکموں کے ساتھ مل کرکسی بھی متوقع صورتحال کے پیش نظر ضروری مشینری کی دستیابی کو یقینی بنایا جائے۔ علاوہ ازیں مختلف علاقوں کی ضروریات کے مطابق طبی وسائل، عملہ، آلات اورادویات کا انتظام بروقت کیا جائے، ب

 

رف باری میں راستوں کو صاف رکھنے اورفوری ضرورت کی غذائی اشیا کی دستیابی کو یقینی بنانے پر بھی زور دیا گیا ہے۔این ڈی ایم اے نے سیاحتی علاقوں میں سیاحوں کی سہولت کیلئے قائم مراکزکو فعال بنانے کی ہدایت کی ہے۔ این ڈی ایم اے کے جاری کردہ ہدایات میں کہا گیا ہے کہ برف باری کے موسم میں سیاحوں کی بڑی تعداد میں ا?مدکے پیش نظرشاہراہوں کوکھلا رکھنے اور ٹریفک کی روانی کو برقراررکھنے کیلئے منیجمنٹ پلان وضع کئے جائیں۔اسی طرح سیاحوں اور مقامی باشندو ں کی کسی بھی ہنگامی صورتحال میں مدد کیلئے ہوٹل اور ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشنوں کے ساتھ رابطے رکھے جائیں۔سیاحوں اور مسافروں کوغیرمتوقع صورتحال سے خبرداررکھنے اور ایسی صورتحال میں احتیاطی تدابیر اختیارکرنے کیلئے رہنمائی فراہم کرنے کا انتظام کیا جائے۔

 

مضر صحت ایئرکوالٹی: دنیا کے آلودہ ترین ممالک میں پاکستان تیسرے نمبر پر آگیا

اسلام آباد(سی ایم لنکس) دنیا کے آلودہ ترین ممالک میں پاکستان تیسرے نمبر پر آگیا جبکہ دو بڑے شہر پہلے دس آلودہ ترین شہروں میں شامل ہیں۔تفصیلات کے مطابق دنیا کے تمام ممالک میں ایئر کوالٹی کو مانیٹر کرنے والی ویب سائٹ کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ مضر صحت ایئر کولٹی کے اعتبار سے دنیا میں پاکستان کا تیسرا نمبر ہے۔ایئر کوالٹی انڈیکس میں کہا گیا ہے کہ لاہور کا فضائی معیار بھی مضر صحت ہے اور دنیا کے آلودہ ترین شہروں کی فہرست میں لاہور تیسرے نمبر پر آگیا، جہاں ایئرکوالٹی انڈیکس 205 ریکارڈ کی گئی۔انڈیکس کے مطابق کراچی کا فضائی معیار بھی انتہائی مضر صحت ہیاور 191 ایئر کوالٹی انڈیکس کیساتھ کراچی آلودہ ترین شہروں کی فہرست میں چوتھے نمبرپر آگیا۔154 سے200 درجے تک آلودگی مضر صحت ہے، 201 سے 300درجے تک آلودگی انتہائی مضر صحت ہے جبکہ 301 سے زائد درجہ خطرناک آلودگی کوظاہر کرتا ہے۔کراچی چوتھے نمبر پر انتہائی ناقص سے غیر صحت بخش رینج میں ہے۔دوسری جانب محکمہ تحفظ ماحول نے لاہور میں گزشتہ 24 گھنٹے کی ایئرکوالٹی کے اعدادو شمار جاری کردیئے۔ترجمان محکمہ تحفظ ماحول نے بتایا کہ ٹاؤن ہال،مال روڈپرائیرکوالٹی انڈیکس115، ٹاؤن شپ میں ائیرکوالٹی انڈیکس96 اور کرول گھاٹی میں اے کیوآئی 249 ریکارڈ کیا گیا۔


شیئر کریں: