Chitral Times

Jan 28, 2023

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

وزیراعلیٰ کی زیر صدارت سینٹر آف ایکسیلنس برائے کاونٹرنگ وائلنٹ ایکسٹریم ازم کے بورڈ آف گورنرزکا اجلاس

Posted on
شیئر کریں:

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کی زیر صدارت سینٹر آف ایکسیلنس برائے کاونٹرنگ وائلنٹ ایکسٹریم ازم کے بورڈ آف گورنرزکا اجلاس

چترال ( چترال ٹایمز رپورٹ ) وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کی زیر صدارت سینٹر آف ایکسیلنس برائے کاونٹرنگ وائلنٹ ایکسٹریم ازم(Center of Excellence on Countering Violent Extremism) کے بورڈ آف گورنرز کا تیسرا اجلاس پیر کے روز وزیراعلیٰ ہاوس پشاور میں منعقد ہوا جس میں خیبرپختونخوا سنٹر آف ایکسیلنس آن کاوئنٹرنگ وائلنٹ ایکسٹریم ازم رولز 2022 کو صوبائی کابینہ کے سامنے پیش کرنے کی مشروط منظوری دی گئی۔ صوبائی وزیر برائے اعلیٰ تعلیم کامران بنگش اور ایم پی اے ڈاکٹر آسیہ اسدکے علاوہ متعلقہ محکموں کے انتظامی سیکرٹریز ، چیف کوآرڈنیشن آفیسر برائے سنٹر آف ایکسلینس اور دیگر بورڈ اراکین نے اجلاس میں شرکت کی۔

اس موقع پر وزیر اعلیٰ نے سنٹر آف ایکسیلنس کو فعال بنانے کیلئے متعلقہ حکام کو فنڈز جاری کرنے کی ہدایت کی ہے  اور کہا ہے کہ صوبائی حکومت اس سنٹر کو مکمل طور پر فعال اور دیر پا بنانے کے لیے تمام وسائل ترجیحی بنیادوں پر فراہم کرے گی۔سنٹر آف ایکسیلنس کے لیے مطلوبہ سٹاف کی بھرتی  کے حوالے سے شرکاءکو بتایا گیا کہ درکار پوسٹوں کی تشہیرکر دی گئی ہے اور جلد بھرتیوں کا عمل مکمل کر لیا جائے گا۔ اجلاس کو ” سنٹر آف ایکسلینس برائے کاونٹرنگ وائیلنٹ ایکسٹریم ازم” کے قیام کے اغراض و مقاصد ، سنٹر کے مجوزہ فنکشنز اور دیگر اہم پہلووں پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ یہ سنٹر صوبے میں پر تشدد سرگرمیوں ، تخریبی رویوں، نفرت اور انتہائ پسندی کی روک تھام کیلئے ایک تحقیقی ادارے کے طور پر کام کرے گا۔ مذکورہ سنٹر کا قیام نہ صرف پاکستان بلکہ ایشیاءبھر میں اپنی نوعیت کا ایک منفرد اقدام ہے۔ یہ ایک ریسرچ بیسڈ سنٹر ہو گا جس کا مقصد دہشت گردی ، شدت پسندی ، بنیاد پرستی اور پر تشدد رویوں سے پیدا ہونے والے مسائل کا خاتمہ کرکے دہشت اور تشدد سے پاک ایک پرامن معاشرے کی تشکیل ہے۔وزیراعلیٰ نے سنٹر کو جلد فعال بنانے کیلئے تیز رفتاری سے ضروری اقدامات اٹھانے کی ہدایت کی۔

 

وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبائی حکومت پی ٹی آئی کے منشور کے مطابق ایک خوشحال اور پرامن معاشرے کے قیام کیلئے ہر ممکن اقدامات اٹھا رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ سنٹر آف ایکسلنس کا قیام بھی انہی کوششوں کی ایک کڑی ہے جو صوبے میں شدت پسندی ، تخریبی اور پرتشدد سرگرمیوں اوررویوں کے خاتمے اور پرامن معاشرے کے قیام کیلئے صوبائی حکومت کی کاوشوں کو نتیجہ خیز بنانے میں اہم کردار ادا کرے گا۔


شیئر کریں: