Chitral Times

Oct 2, 2022

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

چترال گلگت روڈ عوامی احتجاج کے باعث کوغوزی  کے مقام پر دن بھر بند رہی، انتظامیہ اور مظاہرین کے درمیان مذاکرات کامیاب ، ٹریفک شام کے بعد بحال 

Posted on
شیئر کریں:

چترال گلگت روڈ عوامی احتجاج کے باعث کوغوزی  کے مقام پر دن بھر بند رہی، انتظامیہ اور مظاہرین کے درمیان مذاکرات کامیاب ، ٹریفک شام کے بعد بحال

چترال (نمائندہ چترال ٹایمز) چترال گلگت روڈ جمعہ کے روز کوغوزی کے مقام پر بجلی کے لئے عوامی اجتجاج کے باعث چودہ گھنٹے موٹر گاڑیوں اور پیدل کے لئے بند رہی جس سے دونوں طرف لگ بھگ آٹھ سو گاڑیوں میں ہزاروں مسافر پھنس کر رہ گئے۔ پھسے ہوئے مسافروں میں بچے، خواتین ، بیمار اور سرکاری ملازمتوں کے لئے ٹیسٹ انٹرویو میں شامل ہونے کے لئے جانے والوں کے علاوہ عدالت میں پیشی کے لئے جانے والے بھی شامل تھے ۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ اپر چترال لےجائی جانے والی ایک میت کی گاڑی کو بھی پانچ گھنٹوں تک روکے رکھا گیا جسے بالآخر کندھوں پہ اٹھاکر گاؤں سے گزارنے کے بعد دوسری گاڑی میں بھیجا گیا۔ کوغوزی میں بلاک کردہ مقام پر ایک مسافر کا کہنا تھا کہ احتجاجیوں نے قانون کو مکمل طور پر اپنے ہاتھ میں لے رکھا تھا اور حکومت کی رٹ کہیں نظر نہیں آرہا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ انتہائی ضروری کام پر پیدل چل کر گاوں عبور کرنے والوں پر پتھراؤ کیاگیا اور کئی ایک کو زدو کوب کرنے کے واقعات پیش آئے۔ ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی جانب سے احتجاجیوں کو غیر ضروری ڈھیل دینے اور ہزاروں مسافروں کو ان کے رحم و کرم پر چھوڑ نے پر عوام میں مایوسی پھیل گئی۔ احتجاجیوں نے سڑک کے بیچوں بیچ انار لگاکر وہاں چٹائی اور بستر بچھانے کے بعد چولہے جلاکر کھانا پکانا شروع کر دیا تھا۔

ڈی سی لویر چترال انوارالحق کا کہنا تھا کہ احتجاجیوں نے خواتین اور بچوں کو انسانی ڈھال بنادیا ہے جس کی وجہ سے ان کے خلاف فورس نہیں کیا جا سکتا ہے اور معاملے کو افہام و تفہیم کے ذریعے ہی حل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ بعدازاں نماز مغرب کے بعد سڑک کو موٹر گاڑیوں کی ٹریفک کے لئے آزاد کردیا گیا ۔ ذرائع کے مطابق اہالیان کوغوزی نے اسسٹنٹ کمشنر چترال کی موجودگی میں پیڈو اور پیسکو کے اہلکاروں کے ساتھ مذاکرات میں اپنے مطالبات منوالئے ہیں جن میں کوغوزی گاؤں کو گولین گول بجلی گھر کے سوئچ یارڈ سے براہ راست بجلی کی فراہمی ، پیڈو ریٹ کے مطابق بلوں کی ادائیگی ، پیڈو کے تین اہلکاروں کا کوغوزی میں ہمیشہ دستیابی، احتجاج کرنے والوں کے خلاف ایف آئی آر درج نہ کرنا شامل ہیں۔ 100روپے کی اشٹام پیپر پہ تحریر شدہ اس معاہدہ نامہ میں یہ بھی درج ہے کہ معاہدے پر عملدرآمد نہ ہونے پر فریق دوم (اہالیان کوغوزی) کو کوئی بھی قدم اٹھانے کا اختیار حاصل ہوگا۔

chitraltimes koghuzi protest for electricity

chitraltimes deed with district administration and koghuzi protesters chitraltimes deed with district administration and koghuzi protesters2


شیئر کریں: