Chitral Times

Oct 6, 2022

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

مصیبت کی اس گھڑی میں ریشن کا دورہ کرنے اور چترال میں بجلی کامسیلہ وقتی طور پر حل کرنے پر انجینرامیر مقام کا شکریہ۔۔۔ پی ایم ایل این سینیر رہنماوں کا پریس کانفرنس

Posted on
شیئر کریں:

مصیبت کی اس گھڑی میں ریشن کا دورہ کرنے اور چترال میں بجلی کامسیلہ وقتی طور پر حل کرنے پر انجینرامیر مقام کا شکریہ۔۔۔ پی ایم ایل این سینیر رہنما وں کا پریس کانفرنس

چترال (نمائندہ چترال ٹایمز) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما عبدالولی خان عابدایڈوکیٹ، سابق ایم پی اے سید احمد خان ایڈوکیٹ، محمد کوثر ایڈوکیٹ، نیاز اے نیازی ایڈوکیٹ اور خورشید حسین مغل ایڈوکیٹ نے پی ایم ایل (این) کے صوبائی صدر اور وزیر اعظم کے مشیر انجینئر امیر مقام کا مقامی قیادت کی جانب سے درخواست قبول کرتے ہوئے چترال کا دورہ کرنے اور اپرچترال کے گاؤں ریشن میں سیلاب سے متاثر ہ جگہے کا دورہ کرنے اور لویر چترال میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا مسئلہ وقتی طور پر حل کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا ہے۔

 

جمعرات کے روز چترال پریس کلب میں ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ریشن میں سڑک کی بندش اور پیڈو اور پیسکو کے درمیان بجلی کی فی یونٹ قیمت کے تعین میں تنازعے کے نتیجے میں بجلی کی بندش اپر اور لویر چترال میں گھمبیر مسائل کی صورت اختیار کرگئے تھے جس کے لئے امیر مقام کو مقامی قیادت نے چترال کا دورہ کرنے کی درخواست ملنے پر فوری طور پر وہ چترال تشریف لائے اور وفاقی حکومت کی جانب سے ممکنہ حل پیش انہوں نے ایک مرتبہ پھر ثابت کردیا کہ چترال کی ترقی کے لئے میاں نواز شریف اور ان کی پارٹی سے ذیادہ کوئی سنجیدہ اور مخلص نہیں۔انہوں نے کہاکہ کوہ یونین کونسل کے موری لشٹ کے مقام پر انہوں نے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے پیسکو اور پیڈو کے درمیاں تنازعے کی تصفیے تک بجلی کی روزانہ 20گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کو کم کرکے 12گھنٹے کرنے کا اعلان کیا اور ساتھ یہ اعلان کیا کہ وفاقی حکومت سے اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے وہ مکمل ذمہ داری لیتے ہیں جبکہ صوبائی حکومت کی طرف سے اس نوعیت کی ذمہ داری پی ٹی آئی سے تعلق رکھنے والے تین تحصیل چیرمین صاحبان شہزادہ امان، سردار حکیم اور جمشید لے لیں۔

انہوں نے کہاکہ ریشن کے مقام پر متاثرین سے لی گئی متبادل سڑک کے لئے معاوضے کو دس دنوں کے اندر اندر این ایچ اے کے ذریعے ادائیگی کرنے کا وعدہ کیا جبکہ دریا برد شدہ زرعی زمینوں اور گھروں کی معاوضے میں وفاقی حکومت کی جانب سے 50فیصد رقم کی ادائیگی کی بھی ذمہ داری لے لی اور اس کے ساتھ فیڈرل فلڈ کمیشن کے زریعے ریشن گاؤں کو مزید دریابردگی سے بچانے کے لئے صوبائی حکومت کی مدد کا اعلان کیا جس سے متاثرین میں خوشی اور اطمینان کی لہر دوڑ گئی۔ مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں نے کہاکہ ہم اس نازک موقع پر سیاست کرنے کی بجائے عوامی کی بہتر مفاداور اسے مصائب سے چھٹکارا دلانے کے لئے جدوجہد میں مصروف ہیں اور اسے جاری وساری رکھیں گے۔

chitraltimes pmln leadership chitral press confrence2


شیئر کریں: