Chitral Times

Sep 26, 2022

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

کویتی سرمایہ کار کمپنی انر ٹیک ہولڈنگ صوبے میں ایک ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گی۔۔وزیراعلیِ

Posted on
شیئر کریں:

کویتی سرمایہ کار کمپنی انر ٹیک ہولڈنگ صوبے میں ایک ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گی۔۔وزیراعلیِ

خیبرپختونخوا میں غیر ملکی سرمایہ کاری کے سلسلے میں اہم پیشر فت
صوبائی حکومت کی طر ف سے انر ٹیک ہولڈنگ کو سرمایہ کاری کے لئے ایل او آئی جاری۔
انر ٹیک ہولڈنگ کی طرف سے صوبے میں سرمایہ کاری خوش آئند ہے ۔
خیبرپختونخوا میں غیر ملکی سرمایہ کاری کے لئے ماحول سازگار ہے۔ محمود خان

پشاور ( چترا ل ٹایمز رپورٹ ) خیبر پختونخوا حکومت کی رواں سال دبئی ایکسپومیں کامیاب شرکت کے نتائج آنا شروع ہوگئے ہیں، ایکسپو میں دستخط کی گئی مفاہمتی یاد داشتوں کو عملی جامہ پہنانے پر پیشرفت جاری ہے اس سلسلے میںصوبائی حکومت نے کویتی سرمایہ کار کمپنی انرٹیک ہولڈنگ کو خیبر پختونخوا میں سرمایہ کاری کیلئے لیٹر آف انٹنٹLetters of Intent (LoIs) جاری کر دیئے ہیں،کویتی سرمایہ کار کمپنی صوبے میں ایک ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گی۔ یاد رہے کہ دبئی ایکسپو کے دوران انرٹیک ہولڈنگ اور صوبائی حکومت کے درمیان مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کے مفاہمت کی یاداشت پر دستخط کئے گئے تھے ۔
اس سلسلے میںمنگل کے روز وزیراعلیٰ ہاﺅس پشاور میں ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا جس کے مہمان خصوصی وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان تھے جبکہ صوبائی کابینہ اراکین تیمور سلیم جھگڑا، بیرسٹر محمد علی سیف ، عبدالکریم اورایڈیشنل چیف سیکرٹری شہا ب علی شاہ کے علاوہ چیف ایگزیکٹیو آفیسر انرٹیک ہولڈنگ عبد اﷲالمطہری ،چیئرمین پاک کویت انوسٹمنٹ کمپنی محمد اے۔ایم الفارس اور دیگرنجی وسرکاری حکام نے تقریب میں شرکت کی۔

اس موقع پر صوبائی حکومت کی طرف سے کویتی سرمایہ کار کمپنی انرٹیک ہولڈنگ کو سرمایہ کاری کے لئے باقاعدہ لیٹر آف انٹینٹ جاری کئے گئے ۔ مذکورہ کمپنی 84 میگاواٹ گورکن مٹلتان اور 69 میگاواٹ لاوی کی سائٹس پر دو گرین ہائیڈروجن پلانٹس قائم کرے گی ، توانائی کے ان منصوبوں پر سرمایہ کار کمپنی 250 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گی۔ اس کے علاوہ انرٹیک ہولڈنگ خان پور میں سیٹلائٹ اینڈ سمارٹ سٹی کے قیام پر 750 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گی۔ سیٹلائٹ اینڈ سمارٹ سٹی منصوبے کی تکمیل کے بعد تین سے چار ارب ڈالر کی سرمایہ کاری متوقع ہے جبکہ اس منصوبے کی تکمیل سے سالانہ 80 سے 100 ملین ڈالر کی معاشی سرگرمیاں پیدا ہونگی۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ محمود خان نے کہاکہ صوبائی حکومت نے دبئی ایکسپو میں غیر ملکی سرمایہ کمپنیوں کے ساتھ 8 ارب ڈالر کے 44 ایم او یوز پر دستخط کئے تھے جس کے حوصلہ افزا نتائج سامنے آرہے ہیں۔کویتی سرمایہ کار کمپنی کی طرف سے صوبے میں سرمایہ کاری انتہائی خوش آئند ہے۔اُنہوںنے صوبے میں خطیر سرمایہ کاری کرنے پر انرٹیک ہولڈنگ کے منتظمین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ صوبائی حکومت کمپنی کو ہر ممکن سہولیات اور تعاون فراہم کرے گی۔ یہ سرمایہ کاری صوبے میں مزید غیر ملکی سرمایہ کاری کے لیے راہیں کھولے گی۔محمود خان نے کہاکہ گرین ہائیڈروجن پلانٹس منصوبے صوبے میں ماحول دوست توانائی کو فروغ دینے میں ایکسنگ میل ثابت ہونگے جبکہ سیٹلائٹ اینڈ سمارٹ سٹی کا قیام صوبے میں پائیدار شہری ترقی کے لئے بنیادیں فراہم کرے گا۔اُنہوںنے مزید کہاکہ خیبر پختونخوا میں غیر ملکی سرمایہ کاری کے لئے ماحول سازگار ہے،صوبائی حکومت غیرملکی سرمایہ کاروں کو ایک ہی چھت تلے تمام خدمات اور سہولیات فراہم کر رہی ہے، اُنہوںنے کہاکہ صوبائی حکومت غیر ملکی سرمایہ کاری کو فروغ دے کر لوگوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے کے لئے جامع منصوبہ بندی کے تحت اقدامات اٹھا رہی ہے۔صوبائی حکومت کے دور رس اقدامات کے نتیجے میں صوبہ تجارتی، صنعتی اور معاشی سرگرمیوں کا مرکز بن جائے گا۔

chitraltimes cm kpk mahmood presending shiled to kuwaiti company

<><><><><><>

دریں اثنا وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے خیبرپختونخوا کے اہم منصوبے چشمہ رائٹ بینک لفٹ کنال کی سنٹرل ورکنگ ڈویلپمنٹ پارٹی سے منظوری پر صوبے بالخصوص جنوبی اضلاع کے عوام کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ منصوبہ نہ صرف خیبر پختونخوا بلکہ پورے ملک کی زرعی خود کفالت میں سنگ میل ثابت ہوگا، منصوبے کی تکمیل سے جنوبی اضلاع کی تین لاکھ ایکڑ بنجر اراضی سیراب ہوگی، علاقے میں زراعت کی ترقی سے معاشی سرگرمیوں کو فروغ ملے گاجس کے نتیجے میں لوگوں کےلئے روزگار کے نئے مواقع پیدا ہونگے۔ یہاں سے جاری اپنے ایک بیان میں وزیر اعلیٰ نے کہا ہے کہ یہ منصوبہ گزشتہ تین دہائیوں سے تاخیر کا شکار تھا اور صوبائی حکومت پچھلے تین سالوں سے مسلسل اس منصوبے کی منظوری پر کام کر رہی تھی اور صوبائی حکومت کی انتھک کوششوں سے بالآخر منصوبہ سی ڈی ڈبلیو پی سے منظور ہوا اور اب یہ منصوبہ عملدرآمد کےلئے فیڈرل پی ایس ڈی پی میں شامل کیا جائے گا۔


شیئر کریں: