Chitral Times

Sep 29, 2022

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

دھمکی آمیز خط کی تحقیقات کیلیے درخواست مسترد،ایک لاکھ روپے جرمانہ

Posted on
شیئر کریں:

 

دھمکی آمیز خط کی تحقیقات کیلیے درخواست مسترد،ایک لاکھ روپے جرمانہ

اسلام آباد(سی ایم لنکس)اسلام آباد ہائیکورٹ نے دھمکی آمیزخط کی تحقیقات کیلیے دائردرخواست نا قابل سماعت قرار دے کر مسترد کردی،،غیرسنجیدہ درخواست پر درخواست گزار پر ایک لاکھ روپے جرمانہ عائد کر دیا۔اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے 5 صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ جاری کردیا۔عدالت کا کہنا ہے کہ کورٹ مطمئن ہے کہ غیرسنجیدہ درخواست سے ڈپلومیٹک کیبل کو متنازعہ بنانے کی کوشش کی گئی، سابق وزیراعظم پر درخواست میں لگائے گئے الزامات فرسودہ ہیں، ڈپلومیٹک کیبل کو متنازعہ بنانا اور مقدمہ بازی میں لانا ملک اور عوامی مفاد کے خلاف ہے،فیصلے میں مزید کہا گیا ہے کہ ہر شہری کی ذمہ داری ہے کہ ملکی سلامتی کے حساس معاملات کو سیاسی بنائے نہ سنسنی پیدا کرے، ڈپلومیٹ اور اسکی خفیہ معلومات،تعین کو سیاسی تنازعہ میں دھکیلنا قومی مفاد کے خلاف ہے۔درخواست میں سابق وزیراعظم عمران خان کا نام ای سی ایل میں ڈالنے اورسنگین غداری کا مقدمہ چلانے کی بھی استدعا کی گئی تھی۔ درخواست گزارنے سابق صدرجنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کا حوالہ دیا تو چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے تھے کہ عمران خان منتخب وزیراعظم تھے۔ ان کا پرویز مشرف کے ساتھ موازنہ نہ کیا جائے۔چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے درخواست گزارمولوی اقبال حیدرکی درخواست پرسماعت کی تھی، دوران سماعت چیف جسٹس نے درخواست گزارکوروسٹرم پرطلب کرکے استفسار کیا کہ آپ کی عدالت سے کیا استدعا ہے۔ مولوی اقبال حیدر کا کہنا تھا کہ امریکا کے ساتھ تعلقات کو نقصان پہنچا، معاملے کی تحقیقات کرانے کا حکم دیا جائے۔ سیکرٹری داخلہ پابند ہیں کہ وہ عمران خان کی حکومت گرانے کے لیے مبینہ دھمکی آمیز خط کی تحقیقات کرائیں۔وفاق کی ذمہ داری تھی کہ وہ معاملے کی تحقیقات کراتے اور معاملہ عالمی عدالت انصاف میں لے کر جاتے۔ عمران خان، فواد چودھری، شاہ محمود قریشی، ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری اور امریکہ میں پاکستان کے سابق سفیر اسد مجید کے نام بھی ای سی ایل میں شامل کیے جائیں۔متعلقہ افراد کے خلاف سنگین غداری کا مقدمہ چلانے کے لیے شکایت ٹرائل کورٹ کو بھجوانے کا حکم دیا جائے۔ جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے خلاف بھی غداری کیس میں ہائی کورٹ سے رجوع کیا تھا۔

…………………………………………..

 

 

شہباز شریف پاکستان کے 23ویں وزیراعظم منتخب

اسلام آباد(چترال ٹایمز رپورٹ) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر میاں شہباز شریف 174 ووٹ لیکر ملک کے 23ویں وزیراعظم منتخب ہوگئے۔خیال رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کامیاب ہونے کے بعد شہباز شریف اور شاہ محمود قریشی وزارت عظمیٰ کے عہدے کے لئے مدمقابل تھے، تاہم پی ٹی آئی کی جانب سے اجلاس کا بائیکاٹ کرنے اور قومی اسمبلی سے استعفے دینے کا اعلان کیا گیا جبکہ جی ڈی اے نے استعفے دینے سے انکار کردیا۔پی ٹی آئی کے ارکان ایوان سے باہر چلے گئے جبکہ اس سے قبل قاسم سوری نے اجلاس کو چلانے سے معذرت کرتے ہوئے کہا کہ میرا ضمیر گوارا نہیں کرتا کہ اس عمل کا حصہ بنوں۔ شہباز شریف کو ووٹنگ کے بعد پاکستان کا وزیراعظم منتخب کیا گیا، پاکستان مسلم لیگ (ق) کے چودھری سالک حسین اور طارق بشیر چیمہ نے بھی پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر کو ووٹ دیا۔

 

wazir azam

جہانگیرترین کا وطن واپسی کا فیصلہ

لاہور(سی ایم لنکس)پاکستان تحریک انصاف کے ناراض رکن جہانگیر ترین 16 اپریل کو پاکستان واپس آرہے ہیں۔ عون چوہدری نے کہا ہے کہ جہانگیر ترین 16 اپریل کو پاکستان آ رہے ہیں۔جہانگیر ترین وطن واپسی کے بعد اہم ملاقاتیں کریں گے۔جہانگیر ترین علاج کے لیے گذشتہ ماہ لندن گئے تھے۔ڈاکٹرز نے علاج مکمل ہونے کیبعد انھیں وطن واپس جانے کی اجازت دی۔

 


شیئر کریں: