Chitral Times

Oct 6, 2022

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

جے یوآیی اورمسلم لیگ ن کے مابین بلدیاتی الیکشن کیلے اتحاد طے پاگیا

شیئر کریں:

جے یوآیی اورمسلم لیگ ن کے مابین بلدیاتی الیکشن کیلے اتحاد طے پاگیا

چترال( نمایندہ چترال ٹایمز ) جمیعت العلماء اسلام اور پاکستان مسلم لیگ ن کے مابین بلدیاتی الیکشن کے حوالے سے اتحاد طے پا گیا ۔ اور دونوں پارٹیوں کے قائدین نے اپر اور لوئرچترال کے امیداروں کے ناموں کا اعلان کردیا ۔ چترال پریس کلب میں دونوں پارٹیوں کے قائدین مولانا عبد الرحمن امیر جے یو آئی، نوید الرحمن صدر پاکستان مسلم لیگ ن ایم پی اے چترال مولانا ہدایت الرحمن امیدوار پی ایم ایل این شوکت الملک ، امیدوار جے یو آئی اپر چترال فتح الباری ، سابق ایم پی اے سید احمد ، قاری جمال عبد الناصر ، ایڈوکیٹ عبد الولی خا ن ، نیاز اے نیازی ایڈوکیٹ ، محمد کوثر ایڈوکیٹ اور درجنوں دونوں پارٹیوں کے کارکنان کی موجودگی میں ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ۔ کہ مسلم لیگ ن اور جے یو آئی کا یہ اتحاد ایک فطری اتحاد ہے ۔ کیونکہ قائد جمیعت مولانا فضل الرحمن اور مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف کا مشترک بیانیہ عمران خان کی فسطائی حکومت کے خلاف ہے ۔ جس نے ملک کو تباہی سے دوچار کر دیا ہے ۔ اور ملک کے غریب عوام اب خود کشیان کرنے پر مجبور ہوئے ہیں ۔

انہوں نے کہا ۔ کہ لوئر چترال میں مولانا عبد الرحمن اور شوکت الملک اور اپر چترال سے مولانا فتح الباری و پرویز لال جمیعت العلماء اسلام اور مسلم لیگ ن اپر اور لوئر چترال کے مشترکہ امیدوار ہیں جنہیں کامیاب کرنے کیلئے دونوں پارٹیوں کے قائدین وکارکنان جان کی بازی لگانے سے گریز نہیں کریں گے

۔ انہوں نے کہا ۔ کہ مسلم لیگ ن اور جے یو آئی کے اتحاد کا سہرا ایم پی اے ہدایت الرحمن کے سر ہے ۔ جنہوں نے اس سلسلے میں انتھک محنت کی ۔ اس موقع پر اس امر کا اظہار کیا گیا ۔ کہ دروش میں جمیعت کے چند ساتھی جو اتحاد سے خوش نہیں تھے ۔ ان کا موقف صوبائی قیادت نے سننے کے بعد ضلعی قیادت کا فیصلہ ماننے کی ہدایت کی ہے ۔ اس لئے ہمیں امید ہے ۔ کہ وہ صوبائی قیادت کے فیصلے کا احترام کرتے ہوئے جمیعت العلماء اسلام چترال کی ضلعی قیادت کا ساتھ دیں گے ۔ اس موقع پر مسلم لیگ ن کی طرف سے اپر چترال تحصیل تورکھو موڑکھو کے امیدوار محمد وزیر خان نے جمیعت کے امیدوار فتح الباری کے حق میں دستبردار ہونے کا اعلان کیا ۔ اور اپنی طرف سے ہر قسم کے تعاون کا یقین دلایا ۔

پریس کانفرنس میں اس امر کا اظہار کیا گیا ۔ کہ جماعت اسلامی اور جمیت کا کئی الیکشن میں چترال کی سطح پر کامیاب اتحاد ہوتے رہےہیں ۔ لیکن اس مرتبہ جماعت اسلامی کا رویہ اتحاد کیلئے مناسب نہیں تھا ۔ اور جماعت اسلامی کسی فارمولے کے تحت اتحاد کیلئے تیار نہیں تھی۔ تاہم جمیعت چترال کی ذاتی رائے بھی ابتدا سے یہ تھی ۔ کہ اپنے قائدین مولانا فضل الرحمن اور نواز شریف کے مشترکہ بیانیہ کا اتحاد چترال میں بھی قائم ہو ۔ جو کہ آج مکمل ہو چکا ۔ جس پر ہم خوشی کا اظہارکرتے ہیں ۔ پریس کانفرنس کے اختتام پر اتحاد کی خوشی میں مٹھائیاں تقسیم کی گئیں ۔

chitraltimes juif and pmln joined press confrence2
chitraltimes juif and pmln joined press confrence


شیئر کریں: