Chitral Times

Jan 24, 2022

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

خیبر پختونخوا میں بارشوں اور برفباری کے مختلف حادثات میں آٹھ افراد جاں بحق،متعدد زخمی

شیئر کریں:

خیبر پختونخوا میں بارشوں اور برفباری کے مختلف حادثات میں آٹھ افراد جاں بحق،متعدد زخمی

پشاور( چترال ٹائمز رپورٹ)خیبر پختونخوا میں بارشوں اور برفباری سے مختلف حادثات میں اب تک کی اطلاعات کے مطابق آٹھ افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوئے ہیں۔ کئی گھروں کو نقصان بھی پہنچا ہے۔دیر بالا کے علاقے ڈوگ درہ میں شدید بارشوں اور برفباری کی وجہ سے مکان کی چھت گرنے سے ایک ہی خاندان کے پانچ افراد جان بحق ہوگئے.یہ واقعہ ڈوگ درہ کے علاقے میں پیش آیا. جان بحق افراد میں ماں,تین بیٹے اور ایک بیٹی شامل ہیں. پی ڈی ایم اے خیبر پختونخوا کے مطابق دیر بالا اور لوئر کوہستان میں مزید مختلف حادثات کے نتیجے میں تین افراد جاں بحق جبکہ ایک زخمی ہوا۔شانگلہ اور دیر بالا میں چار گھروں کوجزوی نقصان پہنچا۔ وزیراعلی خیبر پختونخوا کی ہدایت پر متاثرہ اضلاع میں امدادی کاروائیاں جاری ہیں۔

خیبر پختونخوا میں بارشوں اور پہاڑوں پر برفباری کا سلسلہ کل تک جاری رہنے کاامکان ہے۔سوات میں برف باری کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ مالم جبہ’ کالام اور بالائی علاقوں میں برفباری کی وجہ سے رابطہ سڑکیں بند ہیں۔ کالام میں دو فٹ، مالم جبہ میں ڈیڑھ فٹ تک برف پڑ چکی ہے۔ایبٹ آباد کے سیاحتی مقامات نتھیا گلی،ایوبیہ، خانسپور میں بھی برف باری کا سلسلہ جاری ہے اور سردی کی شدت میں اضافہ ہوا ہے۔

محکمہ موسمیات نے چترال، دیر، سوات، مالاکنڈ، کوہستان، شانگلہ، بونیر،مانسہرہ، ایبٹ آباد، ہری پور، صوابی، مردان، نوشہرہ، پشاور، چارسدہ، کوہاٹ، باجوڑ اور کرم میں وقفے وقفے سے بارش کی پیشگوئی کی ہے۔ شانگلہ، سوات، بونیر، دیر، چترال، کوہستان، بٹگرام، تورغر، مانسہرہ، ایبٹ آباد، کرم کے پہاڑوں پر برفباری کا امکان ظاہر کیا گیا ہے۔بارشوں اور برفباری کے پیش نظر ضلعی انتظامیہ اور متعلقہ اداروں کو اقدامات کرنے اور الرٹ رہنے کی ہدایات دی گئی ہیں۔پی ڈی ایم اے کے مطابق بالائی اضلاع میں تیز بارش اور برفباری کی وجہ سے روڈ بندش اور لینڈسلاڈینگ کا خدشہ ہے۔

مری میں سیاحوں کی ہلاکتیں کس وجہ سے ہوئیں؟ ماہرین نے بتادیا


مری(سی ایم لنکس) ماہرین کے مطابق مری میں برف کے طوفان سے گاڑیوں میں ہلاکتیں ہائپو تھرمیا سے ہوئیں۔ماہرین کے مطابق انسانی جسم کا درجہ حرارت 35 ڈگری سینٹی گریڈ سے نیچے آ جائے تو اسے ہائپو تھرمیا کہتے ہیں، ہائپوتھرمیا کی کیفیت انتہائی ٹھنڈی جگہ پر زیادہ دیر رکنے یا ٹھنڈے یخ پانی میں تیرنے سے پیدا ہوتا ہے۔ہائپوتھرمیا سے انسان کو دل کا دورہ اور گردے بھی فیل ہو سکتے ہیں،ہائپو تھرمیا میں آکسیجن کی مقدار کم ہونے سے انسان موت کی آغوش میں چلا جاتا ہے۔ اب تک ہائپو تھرمیا کے باعث مری میں ہلاکتوں کی تعداد 21 ہوگئی ہے۔ریسکیو کی جانب سے ہلاک ہونے والیافراد کی فہرست جاری کردی گئی۔ ہلاک ہونے والوں کا تعلق لاہور،گجرانوالہ،اسلام آباد،مردان اور کراچی سے ہے۔ گجرانوالہ سے 37 محمد اشفاق لاہور سے 31 سالہ معروف اشرف شامل ہیں۔

chitraltimes Mari incident 22 dies tourists 21

شیئر کریں: