Chitral Times

Jan 23, 2022

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کا دورہ بٹگرام، متعدد ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح

شیئر کریں:

وزیراعلیٰ کا ہزارہ ڈویژن کو دو ڈویژنز میں تقسیم کرکے اباسین کے نام سے نئے ڈویژن کے قیام کا اعلان
ہزارہ اور ملاکنڈ ڈویژنز کے بعض اضلاع پر مشتمل زون 6 کے قیام کا بھی اعلان
گزشتہ روز پشاور اور خیبرپختونخوا کے عوام نے پیپلز پارٹی کو آئینہ دکھا دیا، محمود خان
پیپلز پارٹی پورے پاکستان سے تین ہزار لوگ بھی اکھٹے نہیں کر سکی، وزیراعلیٰ
مجھ پر اور میرے لیڈر پر تنقید کرنے والے اپنے صوبے کے عوام کو پینے کا پانی نہیں دے سکتے، وزیراعلیٰ
بلاول آصف زرداری کا بیٹا ہے وہ بھٹو کا جان نشین کھبی نہیں بن سکتا، محمود خان
احساس پروگرام کے تحت عنقریب فوڈ کارڈ کا اجراءکیا جا رہا ہے، محمود خان


پشاور (چترال ٹائمز رپورٹ ) وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے جمعرات کے روز ضلع بٹگرام کا ایک روزہ دورہ کیا جہاں ا ±نہوں نے مجموعی طور پر 21 کروڑ روپے سے زائد مالیت کے پانچ مختلف ترقیاتی منصوبوں کاافتتاح کیااور عوامی اجتماع سے خطاب بھی کیا۔ ان منصوبوں میں میدان تا کرواڑ سڑک، بٹگرام پائی مال روڈ، کاکرشنگ آر سی سی پل، 300 کے وی کاکرشنگ اور250 کے وی بٹہ موری منی ہائیڈرو پاور پراجیکٹس شامل ہیں۔ان بجلی گھروں سے علاقے کے ساڑھے چھ سو سے زائد گھرانوں کو سستی بجلی کی سہولت میسر آئے گی۔ اس کے علاوہ مساجد ، ہیلتھ کیئر یونٹس، ٹوارسٹس فسلیٹیز اور دکانوں کو بھی سستی بجلی فراہم کی جائے گی۔ وزیراعلیٰ نے بٹگرام میں بڑے عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے ہزارہ ڈویڑن کو دو حصوں میں تقسیم کرکے اباسین کے نام سے نئے ڈویژن کے قیام اور ہزارہ اور ملاکنڈ کے بعض اضلاع پر مشتمل زون 6 کے قیام کا اعلان بھی کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات کے بعد تحصیل الائی کو باقاعدہ ضلع کا درجہ دینے کا اعلامیہ بھی جاری کیا جائے گا۔

ا نہوںنے کہاکہ شعبہ صحت اور تعلیم کا فروغ موجودہ صوبائی حکومت کے ترجیحی شعبوں میں سرفہرست ہیں اور اس مقصد کیلئے ٹھوس اقدامات ا ±ٹھائے جارہے ہیں۔ صوبے کے 35 ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتالوں کی تجدید کاری اور اپ گریڈیشن کے منصوبے پر کام جاری ہے۔اس کے علاوہ تمام ڈی ایچ کیو ہسپتالوں میں طبی عملے اور آلات کی کمی کو پورا کیا جارہا ہے۔ اس کے علاوہ سرکاری سکولوں کو چھ ارب روپے مالیت کا فرنیچر فراہم کیا جارہا ہے اور سکولوں میں اساتذہ کی کمی کو پورا کرنے کیلئے نئے اساتذہ بھرتی کئے جارہے ہیں۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ موجودہ دور حکومت میں سرکاری سکولوں کا معیار بلند کرکے پرائیوٹ سکولوں کے برابرلایا جارہا ہے تاکہ امیر اور غریب کا بچہ یکساں تعلیم حاصل کرسکے۔ ا ±نہوںنے کہاکہ ملک میں یکساںنصاب تعلیم رائج کرنا وزیراعظم عمران خان کا ایک غیر معمولی کارنامہ ہے جس سے ملک میں امیر اور غریب کا فرق ختم ہو جائے گا۔

وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبے کے ذہین اور مستحق طلبہ کو تعلیمی اخراجات کی مد میں مالی معاونت فراہم کرنے کے لئے ایجوکیشن کارڈ جیسا منفرد منصوبہ شروع کیا جا رہا ہے جس سے متوسط گھرانوں کے بچے بھی ملک کے معیاری اعلیٰ تعلیمی اداروں میں مفت تعلیم حاصل کر سکیں گے۔ ا نہوںنے مزید کہاکہ موجودہ حکومت اس مہنگائی پر قابو پانے اور عوام کو ریلیف دینے کیلئے بھر پور اقدامات کر رہی ہے۔ احساس پروگرام کے تحت فوڈ کارڈ کا جلد اجراءکیا جائے گاجس سے ملک کا غریب اور متوسط طبقہ بھر پور مستفید ہو گا۔ صوبے کی تاریخ میں پہلی بار آئمہ مساجد کو اعزازیہ دیا جارہا ہے اور خطیبوں کی تنخواہوںمیںاضافہ کیا جارہاہے۔محمود خان نے کہاکہ صوبے کے تمام اضلاع میں ترقیاتی کام زور و شور سے ہو رہے ہیں۔ اس وقت ضلع بٹگرام میں سات ارب روپے کے مختلف ترقیاتی منصوبوں پر کام جاری ہے جبکہ آئندہ دو سالوں میں ضلع میں مزید ترقیاتی منصوبے بھی شروع کئے جائیں گے۔

محمود خان نے کہاکہ موجودہ مہنگائی کی سب سے بڑی وجہ سابق نالائق حکمرانوں کی غلط معاشی پالیسیاں تھیں جن کا خمیازہ ملک کے غریب عوام کو بھگتنا پڑ رہا ہے۔ موجودہ حکومت نے 21 ارب ڈالر گزشتہ حکمرانوں کے لئے ہوئے قرضوں پر سود کی مد میں ادا کئے۔گزشتہ ادوار میں کسی نے مذہب کے نام ، کسی نے قومیت کے نام اور کسی نے روٹی ، کپڑا اور مکان کے نام پر عوام کو صرف دھوکہ ہی دیا ہے لیکن اب قوم اور صوبے کے غیور عوام نے ان لوگوں کو یکسر مسترد کر دیا ہے اور یہ کبھی بھی اقتدار میں نہیں آسکتے۔

ا نہوںنے کہاکہ عمران خان پر تنقید کرنے والے پہلے اپنے گریبان میں جھانکیں کہ ا نہوںنے پاکستان کو کس نہج پر پہنچایا ہے۔ بلاول بھٹو زرداری نے گزشتہ روز پشاور میں ایک جلسہ کیا جس میں وہ پورے پاکستان سے تین ہزار بندے بھی اکھٹے نہ کر سکا۔ انہوںنے کہاکہ وہ پشاور اور خیبر پختونخو اکے عوام کے مشکور ہیں جنہوں نے پیپلز پارٹی کو آئینہ دکھایا۔ا نہوںنے مزید کہاکہ اندرونی سندھ کے لوگوں کو پینے کا پانی تک دستیاب نہیں اوروزیراعلیٰ سندھ پشاور میں جلسہ کر رہے ہیں۔ عمران خان وہ واحد لیڈر ہیں جنہوںنے عوام خصوصا ً نوجوانوں کو اپنا حق لینے اور باعزت طریقے سے زندگی گزارنے کا شعور دیا ہے۔ عمران خان کو سلیکٹڈ کہنے والے خود سیلکٹڈ ہیں جنہیں یہ بھی نہیں پتہ کہ آلو کلو کے حساب سے بکتے ہیں یا درجن کے حساب سے۔

وزیراعلیٰ نے کہاکہ خیبرپختونخوا کے عوام نے 2013 اور2018 کے انتخابات میں پاکستان تحریک انصاف پر بھر پور اعتماد کیا اور آئندہ انتخابات میں بھی وہ پی ٹی آئی کے ساتھ ہیں۔ انہوںنے مزید کہاکہ خیبرپختونخوا کے عوام وزیراعظم عمران خان سے مطمئن ہیں اور انشاءاﷲاگلی بار بھی وہ وزیراعظم ہوں گے۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ وہ یقین سے کہہ سکتے ہیں کہ 2018 ءکے انتخابات کی طرح صوبے کے عوام بلدیاتی انتخابات میں بھی عمران خان پر بھر پور اعتماد کا اظہار کریں گے۔ سابق حکمران ملک کو بیرونی قرضوں میں ڈبو کر اب مہنگائی کا رونا روتے ہیں۔صوبائی کابینہ اراکین شوکت یوسفزئی، تاج محمد ترند ، سابق صوبائی وزیر محمد یوسف خان ترند اور دیگر نے بھی جلسے سے خطاب کیا۔



شیئر کریں: