Chitral Times

Jan 17, 2022

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

سرکاری سکولوں میں اساتذہ کی کمی پوری کرنےکیلئے 23315 اساتذہ بھرتی کیے جائیںگے۔وزیرتعلیم

Posted on
شیئر کریں:

پشاور (چترال ٹائمز رپورٹ) خیبر پختونخوا کے وزیر برائے ابتدائی و ثانوی تعلیم شہرام خان ترکئی نے کہا ہے کہ سرکاری سکولوں میں اساتذہ کی کمی پوری کرنے کے لیے پورے صوبے کے تمام اضلاع سے مرد و خواتین کی بھرتی کیلئے اشتہارات شائع ہو چکے ہیں اور پورے صوبے میں مختلف کیڈر کے تقریبا 23315 مرد و خواتین اساتذہ میرٹ پر بھرتی کیے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ان اساتذہ کی بھرتی سے سکولوں میں اساتذہ کی کمی پورے ہونے میں مدد ملے گی اور قابل و ذہین اساتذہ میرٹ پر بھرتی ہو کر سسٹم میں شامل ہو جائیں گے جس سے محکمہ تعلیم میں درس و تدریس کے عمل میں مزید بہتری آئے گی۔

اپنے یہاں سے جاری شدہ اپنے بیان میں وزیر تعلیم شہرام خان ترکئی نے کہا کہ ٹیسٹنگ ایجنسی ایٹا کو یہ ذمہ داری سونپ دی گئی ہے اور ان کو ہدایت ہے کہ جلد از جلد بھرتی کا عمل مکمل کریں جس کے لئے تمام اضلاع سے سے اشتہارات شائع ہونے کا عمل جاری ہے اور جلد ہی ٹسٹ و انٹرویو کا عمل شروع ہوگا۔ وزیر تعلیم نے مزید کہا کہ تعلیم کو بطور پیشہ اپنانے والے قابل و ذہین نوجوانوں کے لیے یہ بہترین موقع ہے وہ اپلائی کرے اور ٹیسٹ و انٹرویو کے لئے محنت کریں بطور پیشہ محکمہ تعلیم میں اساتذہ کو بہترین سروس سٹرکچر اور ترقی کے مواقع موجود ہیں۔

آسامیوں کی تفصیلات کے حوالے سے وزیر تعلیم نے کہا کہ ان آسامیوں میں پی ایس ٹی، سی ٹی، سی ٹی آئی ٹی، ٹی ٹی، پی ای ٹی، اے ٹی، اور ڈی ایم کی 13967 میل اور 8,757 فیمیل اسامیاں شامل ہیں۔ جب کہ 591 ایس ایس ٹیز آسامیوں بشمول ٹوٹل 23315 آسامیوں پر بھرتی کا عمل مکمل ہو گا۔ جس میں اقلیت اور معذور افراد کے لیے بھی کوٹہ مختص ہے۔ شہرام خان ترکئی نے مزید کہا کہ ان آسامیوں کے علاوہ کوالٹی ایجوکیشن کے لئے الگ سے تین ہزار اسکول لیڈر بھی بھرتی کیے جائیں گے۔ جو کہ تکمیل کے مراحل میں ہے اور جلد ہی وہ آسامیاں بھی مشتہر کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ سنگل نیشنل کریکولم کے مطابق غریب و امیر کو یکساں تعلیم تک رسائی یقینی بنائی گئی ہے اور اب میرٹ پر اساتذہ بھرتی ہونے سے سسٹم میں مزید بہتری آئے گی۔ وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ تعلیم اولین ترجیح ہے اور محکمہ میں ہنگامی بنیادوں پر اصلاحات کا عمل جاری۔


شیئر کریں: