Chitral Times

Nov 29, 2021

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

دارالامان میں قانونی و نفسیاتی ماہرین کی تعیناتیوں و تعلیمی سہولیات کی فراہمی یقینی بنایا جائے۔قائمہ کمیٹی

شیئر کریں:

پشاور (چترال ٹائمز رپورٹ) خیبر پختونخوا اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے محکمہ زکوٰۃ، عشر، سماجی بہبود، خصوصی تعلیم و ترقی خواتین کی چیئر پرسن ایم پی اے ستارہ آفرین نے صوبے میں قائم تمام دارالامان میں قانونی و نفسیاتی ماہرین کی تعیناتیوں کے بشمول وہاں پر دستکاری مراکز اور بچوں کے لئے تعلیمی سہولیات کی فراہمی یقینی بنانے کے احکامات جاری کئے ہیں۔ یہ احکامات انہوں نے جمعرات کے روز اسمبلی کانفرنس ہال پشاور میں کمیٹی کے منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جاری کئے۔ انہوں نے محکمہ سوشل ویلفیئر کی بھرتیوں میں معذور افراد کیلئے مختص کوٹہ 2فیصد سے 4فیصد تک بڑھانے کی کوششوں کو بھی خوش آئندہ قرار دیا۔اس موقع پر منتظمین محکمہ زکوٰۃ، عشر، سماجی بہبود، خصوصی تعلیم و با اختیار خواتین نے شرکاء اجلاس کو بتایا کہ اس وقت صوبہ بھر میں کل 9 دارالامان قائم ہیں جبکہ 2سو ملین روپے کی لاگت سے مزید 5 دارالامان کے قیام کے لئے بھی انتظامات کئے جا رہے ہیں۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ سال 2018 اور 19 میں معذور افراد کی فلاح و بہبود پر 2کروڑ 97 لاکھ روپے خرچ ہوئے جبکہ سال-21 2020 میں 3500 معذور طلبہ میں فی طالب العلم مبلغ 7ہزار روپے کے حساب سے تقسیم  کیے گئے۔ اس کے علاوہ محکمہ اپنی متعلقہ سرگرمیوں و اقدامات پر سال 2021 اور 22 میں کل 13سو 22 ملین روپے خرچ کر رہا ہے۔اجلاس میں ایم پی اے شگفتہ ملک کی جانب سے محکمے سوشل ویلفیئر میں سال 2013 تا 2021 تک کی بھرتیوں کے حوالے سے سوال کا موصول شدہ جواب انہوں نے غیر تسلی بخش قرار دیا۔ جس پر کمیٹی کی چیئر پرسن ستارہ آفرین نے انتظامیہ کو مذکورہ معلومات بمعہ بھرتیوں کے لئے قواعدوضوابط،اخباری اشتہارات، تمام بھرتی شدہ افراد کے ڈومیسائل و شناختی کارڈز، تعلیمی اسناد، سکیلز اور بھرتی کمیٹی ممبران کے ناموں کی مکمل تفصیلات ایم پی اے شگفتہ ملک کو اگلے تین دنوں میں فراہم کرنے کے احکامات جاری کئے۔

شگفتہ ملک نے محکمہ کی جانب سے موصول جواب میں ذکر کردہ نکتہ کہ محکمہ سماجی بہبود نے سال 2018 اور 19 میں معذور افراد کی فلاح و بہبود پر 2کروڑ 97 لاکھ روپے خرچ کئے ہیں، کی تفصیلات و مقصد فلاح و بہبود پر کمیٹی ممبران کو بریف کرنے کی بھی درخواست کی، جس کے لئے انتظامیہ کو متعلقہ ہدایات جاری کردی گئیں۔ ایم پی اے شگفتہ ملک نے بھرتیوں سے متعلق تمام محکموں میں معذور افراد کے لئے مخصوص کوٹہ یقینی بنانے پر بھی زور دیا۔ اجلاس میں ایم پی اے حمیرا خاتون کی جانب سے محکمہ زکوٰۃ انتظامیہ سے گزشتہ 2سالوں کے دوران صوبہ بھر میں قائم کردہ لوکل زکوٰۃ کمیٹیوں اور زکوٰۃ فنڈز سے مستفید ہونے والے مستحقین کی تفصیلات اور اعداد و شمار سے متعلق سوال کا موصول شدہ جواب ناکافی و غیر تسلی بخش قرار دیا گیا۔ انہوں نے زکوٰۃ مستحقین کے حوالے سے عوامی آگاہی اور اس سلسلے میں محکمانہ اقدامات پر بھی کمیٹی ممبران کو تفصیلات سے آگاہ کرنے کی درخواست کی، جس پر سیر حاصل گفتگو کے لئے چیئرپرسن ستارہ آفرین نے انتظامیہ کو مکمل تیاری کرنے کی جانب سے ایم پی اے حمیرا خاتون کا سوال اگلے کمیٹی اجلاس تک ملتوی کر دیا۔

اجلاس میں ایم پی اے بصیرت خان نے بھی ضم اضلاع و بالخصوص ضلع خیبر میں   محکمہ زکوٰۃ، عشر، سماجی بہبود، خصوصی تعلیم و ترقی خواتین کی فعالیت و اقدامات سے متعلق کمیٹی کو تفصیلات سے آگاہ کرنے کی درخواست پر چیئرپرسن ستارہ آفرین نے متعلقہ انتظامیہ کو احکامات جاری کئے۔ ایم پی اے بصیرت خان نے ضم اضلاع میں اس محکمے کا عملہ پورا کرنے پر بھی زور دیا۔ اجلاس میں ایم پی اے حافظ عصام الدین کی جانب سے وزیرستان میں مذکورہ محکمہ کے زیر انتظام تقسیم کردہ 1ہزار سلائی مشینوں کی تفصیلات بمعہ وصول کنندہ گان کی تفصیلات و معلومات کمیٹی کو پیش کرنے کی درخواست پر بھی متعلقہ انتظامیہ کو ہدایات جاری کی گئی۔ ایم پی اے ریحانہ اسمعیل نے سینئر سٹیزن ایکٹ کی مد میں مختص کردہ 1کروڑ روپے فنڈز کے استعمال اور میرج ایکٹ سے متعلق بھی کمیٹی ممبران کو بریف کرنے کی درخواست کی جس پر ستارہ آفرین نے انتظامیہ کو احکامات جاری کئے۔ اجلاس میں ممبران کمیٹی و اراکین صوبائی اسمبلی ساجدہ حنیف، رابعہ بصری، ملیحہ علی اصغر خان اور شاہدہ بی بی کے بشمول سیکرٹری محکمہ زکوٰۃ، عشر، سماجی بہبود، خصوصی تعلیم و با اختیار خواتین، ڈائریکٹرز سماجی بہبود و زکوٰۃ و دیگر متعلقہ افسران سمیت اسسٹنٹ ایڈوکیٹ جنرل بھی اجلاس میں شریک ہوئے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


شیئر کریں: