Chitral Times

Sep 18, 2021

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

وزیراعلیٰ نے مکھنیال میں جنگلاتی زمینوں کی خریدوفروخت اورغیرقانونی تعمیرات کا نوٹس، دفعہ 144نافذ

شیئر کریں:

وزیراعلیٰ نے مکھنیال میں جنگلاتی زمینوں کی خریدوفروخت اورغیرقانونی تعمیرات کا نوٹس،دفعہ 144نافذکرنیکی ہدایت

پشاور ( چترال ٹائمز رپورٹ ) وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد سے متصل ضلع ہری پور کے علاقہ مکھنیال میں جنگلاتی رقبے پر زمینوں کی خرید وفروخت اور وہاں پر غیر قانونی تعمیرات کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ حکام کو اس طرح کی تمام سرگرمیوں پر فی الفور پابندی عائد کرنے اور اس مقصد کے لئے دفعہ 144نافذ کرکے اس پر موئثر عملدرآمد کو یقینی بنانے کے لئے ضروری اقدامات کی ہدایت کی ہے۔


یہ ہدایات انہوں نے پیر کے روز مکھنیال میں جنگلات کے تحفظ اور وہاں پر کمرشل بنیادوں پر تعمیراتی سرگرمیوں کی روک تھام سے متعلق ایک اہم اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جاری کیں۔ قائم مقام چیف سیکرٹری ظفرعلی شاہ، وزیراعلیٰ کے پرنسپل سیکرٹری امجد علی خان، متعلقہ محکموں کے انتظامی سیکرٹریوں، کمشنر ہزارہ، ڈپٹی کمشنر اور ڈی پی او ہری پور، ڈائریکٹرجنرل گلیات ڈیویلپمنٹ اتھارٹی اور دیگر متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔

وزیراعلیٰ نے ڈپٹی کمشنر اور ڈی پی او ہری پور کو مکھنیال کے جنگلات اور ان کے گرد و نواح میں تعمیراتی سرگرمیوں پر دفعہ 144 پر موئثر عملدرآمد کو یقینی بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ جو بھی دفعہ 144 کی خلاف ورزی کرے اس کے خلاف پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ188 کے تحت سخت سے سخت کارروائی عمل میں لائی جائے۔

وزیراعلیٰ نے مکھنیال کے گزارا فارسٹ میں تجارتی عمارتیں تعمیر کرنے کے لئے غیر قانونی این او سی جاری کرنے والے متعلقہ تحصیل میونسپل آفیسر کو فوری طور پر ملازمت سے فارغ کرنے جبکہ فرائض سے غفلت برتنے والے محکمہ جنگلات کے متعلقہ چیف کنزر ویٹر کو معطل کرنے اور دیگر عملے کو اپنے عہدوں سے ہٹانے کے احکامات جاری کئے۔

اجلاس میں مکھنیال کے جنگلات کی باقاعدہ درجہ بندی اور حد بندی کا فیصلہ کرتے ہوئے گلیات ڈیویلپمنٹ اتھارٹی کو تین مہینوں میں ان جنگلات کی درجہ بندی اور حد بندی کا سارا عمل مکمل کرنے کی ہدایت کی گئی اور اس مقصد کے لئے محکمہ جنگلات، ریو نیو اور گلیات ڈیویلپمنٹ اتھارٹی کے اعلیٰ حکام پر مشتمل ایک کمیشن بنانے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔


اجلاس میں ان جنگلات کی درجہ بندی اور حد بندی کا عمل مکمل ہونے تک علاقے میں زمینوں کے انتقالات اور رجسٹریوںں کے اجرائپر پابندی کا فیصلہ کرتے ہوئے اس سلسلے میں محکمہ مال اور ضلعی انتظامیہ کو ضروری کاروائی عمل میں لانے کی ہدایت کی گئی۔ اسی طرح مکھنیال اور خانپور میں جنگلات اور قدرتی ماحول کو درپیش خطرات کے پیش نظر معدنیات کے جاری کردہ لیزز کو بھی فی الوقت منسوخ کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔

وزیر اعلی نے ضلعی انتظامیہ، پولیس اور دیگر متعلقہ اداروں کو مکھنیال میں غیر قانونی تعمیراتی سرگرمیوں پر کڑی نظر رکھنے اور ان کی روک تھام کے لئے اٹھائے جانے والے اقدامات کے بارے میں روزانہ کی بنیادوں پر رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی۔جنگلات کے تحفظ کو اپنی حکومت کی سب سے اہم ترجیح قرار دیتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہاکہ اس پر کسی بھی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے مکھنیال کے جنگلاتی رقبے کی زمینوں کی خریدو فروخت اور وہاں پر غیر قانونی تعمیرات میں ملوث عناصر کے خلاف بلا تفریق کارروائی عمل میں لانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ چاہے کوئی کتنا بھی بااثر ہو اسے نہیں چھوڑا جائے گا۔


شیئر کریں: