Chitral Times

Oct 16, 2021

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

وزیراعلیٰ کا بجلی کی ناروالوڈشیڈنگ کانوٹس؛امتحانی مراکزمیں بجلی کی فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت

شیئر کریں:

پشاور ( چترال ٹائمز رپورٹ ) وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے صوبے کے بعض علاقوں میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ خصوصاً امتحانی مراکز میں بجلی کی فراہمی میں تعطل کا نوٹس لیتے ہوئے منگل کے روز چیف ایگزیکٹو آفیسر پیسکو اور چیف ایگزیکٹو آفیسر ٹیسکو سمیت دیگر متعلقہ حکام کا اجلاس طلب کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ نے پیسکو اور ٹیسکو کے اعلیٰ حکام کو صوبے میں میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے جاری سالانہ امتحانات کے دوران امتحانی مراکز میں بجلی کی بلاتعطل فراہمی کو ہر لحاظ سے یقینی بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ امتحانات کے دوران امتحانی مراکز میں بجلی کی فراہمی میں تعطل کسی صورت قبول نہیں۔


وزیر اعلیٰ نے حکام کو مزید ہدایت کی کہ گرمی کے موسم میں شہری علاقوں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کو کم سے کم کرنے اور لوگوں کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دینے کے لئے تمام تر دستیاب وسائل بروئے کار لائے جائیں۔ انہوں نے صوبے میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کے مسئلے پر مستقل بنیادوں پر قابو پانے کے لئے بجلی کے انفراسٹرکچر کی بہتری کے لئے جاری منصوبوں کی بروقت تکمیل کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے متعلقہ حکام کو اس سلسلے میں ٹھوس اقدامات اٹھانے کی ہدایت کی اور کہا کہ صوبائی حکومت ان منصوبوں کی بروقت تکمیل کے لئے درکار مالی وسائل کی فراہمی کو یقینی بنائے گی۔
<><><><><>


پشاور ( چترال ٹائمز رپورٹ )وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان سے منگل کے روز سپیکر صوبائی اسمبلی مشتاق احمد غنی کی قیادت میں ہزارہ کے منتخب عوامی نمائندوں کے ایک نمائندہ وفد نے ملاقات کی اورگزشتہ دنوں ضلع ایبٹ آباد اور دیگر علاقوں میں بارشوں اور سیلابی ریلوں سے ہونے والے نقصانات کے بارے میں وزیراعلیٰ کو تفصیلی آگاہ کیا۔ وفد کے دیگر اراکین میں صوبائی کابینہ ممبران اکبر ایوب خان، قلندر خان لودھی کے علاوہ رکن قومی اسمبلی علی خان جدون، رکن صوبائی اسمبلی نذیر عباسی اور سابق صوبائی وزیر یوسف ایوب شامل تھے۔ اس موقع پر طوفانی بارشوں کے نتیجے میں علاقے کے متاثرہ انفراسٹرکچر کی بحالی اور لوگوں کو پہنچنے والے مالی نقصانات کے ازالے سے متعلق امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزیراعلیٰ نے محکمہ ریلیف ، کمشنر ہزارہ اور دیگر متعلقہ حکام کو بارشوں سے ہونے والے نقصانات کی تفصیل اکھٹی کرکے جلد رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ ان بارشوں کے نتیجے میں لوگوں کو درپیش مشکلات کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے۔وزیراعلیٰ نے ایبٹ آباد میں سیلابی ریلے میں بہہ جانے والے چمبہ میرا پل کو ہنگامی بنیادوں پر دوبارہ تعمیر کرنے کا اعلان کیا ہے اور متعلقہ حکام کو ہدایت کی ہے کہ بارشوں سے متاثرہ ہونے والی رابطہ سڑکوں کی فوری بحالی کیلئے ٹھو س اقدامات ا ±ٹھائے جائیں۔ وزیراعلیٰ نے اپنی گفتگو میں کہا کہ متاثرہ لوگوں کو درپیش مشکلات کو جلد سے جلد دور کرنے کی بھر پور کوشش کی جائے گی اور ہر ممکن حد تک متاثرین کو سہولیات فراہم اور ا ن کے نقصانات کا ازالہ کیا جائے گا۔

وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت متاثرہ لوگوں کو مشکل کی اس گھڑی میں کبھی تنہا نہیں چھوڑے گی اور ہر ممکن حد تک ان کی داد رسی کی جائے گی۔ ایبٹ آباد سٹی میں غیر قانونی تجاوزات کے خاتمے سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبے کے دیگرعلاقوں کی طرح ایبٹ آباد سٹی میں بھی غیر قانونی تجاوزات کے خلاف بلا امتیاز کاروائی کی جائے گی جبکہ سڑکوں ، آبی گزرگاہوں و دیگر عوامی مقامات پر تجاوزات کو ہر صورت ہٹایا جائے گا۔ سپیکر مشتاق غنی اور وفد کے دیگر اراکین نے بارشوں سے متاثرہ انفراسٹرکچر کی بحالی اور لوگوں کے نقصانات کے ازالے کیلئے موقع پر احکامات جاری کرنے پر وزیراعلیٰ کا شکریہ ادا کیا۔


دریں اثناءوزیراعلیٰ نے صوبے کے مختلف اضلاع میں ان طوفانی بارشوں کی وجہ سے سیلابی ریلوں اور مکانات منہدم ہونے کے نتیجے میں چار افراد کے جاں بحق ہونے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے متاثرہ خاندانوں سے تعزیت کی ہے۔ وزیر اعلی نے جاں بحق افراد کے اہل خانہ سے دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے مرحومین کی مغفرت اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔ انہوں نے یقین دلایا ہے کہ صوبائی حکومت مشکل کی اس گھڑی میں متاثرین کے ساتھ کھڑی ہے، انہیں تنہا نہیں چھوڑا جائے گا اور ان کی ہر ممکن مدد کی جائے گی۔
<><><><><>

دریں اثناوزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان سے جنوبی اضلاع سے تعلق رکھنے والے صوبائی وزراءشاہ محمد وزیر ، ہشام انعام اللہ اور اقبال وزیر نے منگل کے روز ان کے دفتر میں ملاقات کی اور پشاور ڈی آئی خان موٹروے منصوبے کی سنٹرل ڈیویلپمنٹ ورکنگ پارٹی سے منظوری پر جنوبی اضلاع کے عوام کی طرف سے وزیر اعلیٰ کا شکریہ ادا کیا۔ صوبائی وزراء نے اس منصوبے کو جنوبی اضلاع کے عوام کا دیرینہ مطالبہ اور علاقے کی پسماندگی کو دور کرنے کے لئے ایک اہم منصوبہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ سی ڈی ڈبلیو پی سے اس منصوبے کی منظوری وزیر اعلیٰ کی ذاتی دلچسپی اور کوششوں کے ذریعے ممکن ہوا جس پر تمام جنوبی اضلاع کے عوام وزیر اعلیٰ محمود خان کے تہہ دل سے مشکور ہیں۔ صوبائی وزراء نے اس اہم اور تاریخی منصوبے کی منظوری پر وفاقی حکومت اور وزیر اعظم عمران خان کا بھی شکریہ ادا کیا۔

Chitraltimes cm kp talking delgation of parlimantarian

شیئر کریں: