Chitral Times

May 16, 2021

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

وزیر اعلی کا اچانک موٹروے ٹول پلازہ کا دورہ، شہریوں کو بے جاتنگ کرنے پر ایکسائز کے پندرہ اہلکار معطل

شیئر کریں:

پشاور( چترال ٹائمز رپورٹ ) وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے ہفتے کے روز موٹروے ٹول پلازہ پشاور پر ایکسائز ناکہ بندی کا اچانک دورہ کرکے ناکہ بندی پر موجود تمام  اہلکاروں کو معطل کرکے ان کے خلاف انکوائری کرنے کا حکم دیا۔ وزیر اعلی کو مذکورہ ناکہ بندی پر ایکسائز عملے کی طرف سے شہریوں کو بے جا تنگ کرنے اور رشوت لینے کی شکایت موصول ہوئی تھیں۔ عوامی شکایات کا نوٹس لیتے ہوئے وزیر اعلی نے بغیر کسی پروٹوکول ناکہ بندی کا اچانک دورہ کیا۔ جس وقت وزیر اعلی ناکہ بندی پر پہنچے تو ایکسائز اہلکار چیکنگ کے نام پر مسافروں کو بے جا تنگ کرنے میں مصروف تھے۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعلی نے کہا کہ صوبہ بھر کے تمام اُمور پر ان کی کڑی نظر ہے ، سرکاری اہلکاروں کا کام عوام کی خدمت اور ان کو سہولیات فراہم کرنا ہے نہ کہ ان کا بے جا تنگ کرنا ہے، سرکاری اہلکاروں کی طرف سے اس طرح کے کام کسی صورت قبول نہیں اور نہ ہی عوامی خدمت میں کوتاہی نہیں برداشت کی جائے گی۔انہوں نے مزید کہا کہ تمام حکومتی امور میں شفافیت ترجیح ہے، عوامی شکایات پر سب کے خلاف کاروائی ہوگی۔

درایں اثناء وزیر اعلی کی ہدایت کی روشنی میں ڈائریکٹر جنرل ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن نے چیکنگ کے نام پر مسافروں کو بے جا تنگ کرنے اور رشوت طلب کرنے کے الزام میں ایکسائز موبائل سکواڈ کے پندرہ اہلکار فوری طور پر معطل کرنے کے احکامات جاری کئے۔
معطل ہونے والے اہلکاروں میں موبائل سکواڈ کے انچارج اے ایس آئی لال گل سمیت چودہ دیگر اہلکار شامل ہیں۔
ان اہلکاروں کے خلاف الزامات کی تحقیقات کے لئے دو رکنی انکوائری کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو تین دنوں کے اندر رپورٹ پیش کرے گی۔


شیئر کریں: