Chitral Times

Apr 21, 2021

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

خدمات پر سیلز ٹیکس کی ادائیگی کیلئے آن لائن پورٹل کا آغاز ,معاہدے پر دستخط

شیئر کریں:

تاجر برادری کو آسانی، دفاتر اور اداروں کے چکر نہیں لگانے پڑیں گے۔ تیمور جھگڑا
مکمل لاک ڈاؤن آخری آپشن ہے، وائرس کی روک تھام کے لیے اقدامات کے مثبت نتائج سامنے آئے ہیں۔ کامران بنگش


پشاور (چترال ٹائمز رپورٹ) خیبر پختونخوا حکومت نے ایک اور شاندار قدم اٹھاتے ہوئے خدمات پر سیلز ٹیکس کی آن لائن ادائیگی شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ جس سے تاجر برادری کو ماہانہ یا سالانہ بنیادوں پر واجب الادا ٹیکس جمع کرانے کے لیے سرکاری اداروں یا دفاتر جانے کی ضرورت نہیں پڑے گی بلکہ وہ آن لائن ہی ادائیگی کر سکیں گے۔ اس سلسلے میں حکومت خیبر پختونخوا، اسٹیٹ بینک آف پاکستان اور ون لنک کے مابین پشاور میں مفاہمتی یادداشت پر دستخط ہوئے۔ اس موقع پر صوبائی وزیر صحت و خزانہ تیمور سلیم خان جھگڑا، وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و اعلیٰ تعلیم اور ترجمان صوبائی حکومت کامران خان بنگش، چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا ڈاکٹر کاظم نیاز، سیکریٹری خزانہ عاطف رحمان، ایڈیشنل سیکرٹری سفیر احمد، ڈی جی خیبرپختونخوا ریونیو اتھارٹی فیاض علی شاہ، اسٹیٹ بینک آف پاکستان اور ون لنک کے اعلیٰ عہدیداروں سمیت دیگر حکام موجود تھے۔

اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر صحت و خزانہ تیمور سلیم خان جھگڑا کا کہنا تھا کہ آن لائن پورٹل سے تاجر برادری کیلئے ٹیکسز جمع کرانے میں آسانی ہوگی اور یہ اقدام ہماری ڈیجیٹلائزیشن اور کاروبار میں آسانی کی پالیسی کی ایک کڑی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس آن لائن سروس سے تاجروں سمیت کسی کو بھی خدمات پر سیلز ٹیکس جمع کرانے کے لیے سرکاری اداروں اور دفاتر میں جانے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔ جس سے نہ صرف ان کے مسائل کم ہوں گے بلکہ نظام میں بھی مزید شفافیت آئے گی۔ خیبرپختونخوا ریونیو اتھارٹی کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے صوبائی وزیر نے کہا کہ گزشتہ سال کورونا وباء کے باوجود ٹیکسز کی مد میں 17 ارب کے محصولات اکھٹے کیے۔ اس دوران 30 کے لگ بھگ ٹیکسز کے ریٹ بھی کم کیے گئے تھے تاہم ٹیکس ریٹ میں کمی کے باوجود محصولات میں اضافہ ہوا۔

دوسری طرف جب 2018 میں اقتدار سنبھالا تو ریونیو اتھارٹی مسلسل 3 سال سے صرف 10 ارب سالانہ ریونیو اکٹھا کر رہی تھی۔ تیمور جھگڑا نے امید ظاہر کی کہ اس سال ہمارا ہدف 20 ارب روپے کا ہے تاہم پوری امید ہے کہ ریونیو اتھارٹی 21 ارب سے زائد کے محصولات اکٹھے کر لے گی۔ صوبائی محصولات میں گزشتہ دو سالوں میں 120 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ تیمور جھگڑا نے امید ظاہر کی کہ ریونیوزیادہ ہو گا تو عوام کے لیے زیادہ سے زیادہ فلاحی منصوبے شروع کر سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا کی موجودہ صورت حال چیلنجنگ ہے۔ تاجر برادری کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہیں اور ان کے تعاون پر ان کے مشکور بھی ہیں۔ پرائیویٹ سکولز، شادی ہالز مالکان سمیت دیگر تمام اسٹیک ہولڈرز صبر اور حوصلے سے کام لیں کیونکہ کورونا کی موجودہ لہر پہلی لہر سے زیادہ تیزی سے پھیل رہی ہے اور زیادہ خطرناک ثابت ہوئی ہے۔ تیمور جھگڑا نے کہا کہ ہسپتالوں پر بوجھ بڑھا ہے تاہم ہسپتالوں کی استعداد میں بھی اضافہ کر دیا گیا۔

عوام سے اپیل ہے کہ ماسک کا استعمال کریں اور رش والی جگہوں پر جانے گریز کریں۔ اس موقع پر وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران خان بنگش نے کہا کہ صوبے میں مکمل لاک ڈاؤن کا آپشن بالکل آخری آپشن ہو گا۔ حکومت چاہتی ہے کہ غریب کا چولہا جلانے کے لیے صوبے میں اقتصادی سرگرمیاں ایس او پیز کے ساتھ جاری رہنی چاہیں۔ انہوں نے کہا کہ 2 دن بین الاضلاعی پبلک ٹرانسپورٹ بند ہونے، دفاتر میں 50 فیصد حاضری اور اسکولوں کی بندش سمیت صوبائی حکومت کے دیگر حفاظتی اقدامات کے مثبت نتائج سامنے آئے ہیں۔


شیئر کریں: