Chitral Times

Sep 24, 2021

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

آپ مجھے ووٹ دیں……پروفیسرعبدالشکورشاہ

شیئر کریں:


ٓہائے افسوس آپ کے بیٹے نے بی اے کیا ہوا ہے اور ابھی تک نوکری نہیں ملی!میرے ساتھ رابطے میں رہنا میں آپ کو نوکری دوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں ہر گھر میں ایک نوکری دوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں وزیراعظم بنوں گا اور آپ کے علاقے کی تقدیر بدل کر رکھ دوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں آپ کو پل دوں گا۔یہ میں نے نہیں کہا تھاآپ کے بچوں کو دریا برد کرنے کے بعد، احتجاجوں اور دھرنوں کے بعد پل دوں گا۔ میں نے یہ بھی نہیں کہا تھا پل تو دوں گا مگر اس کے بعد سٹے بھی کروا دوں گا تاکہ نہ تو مجھ سے شکوہ کر سکیں اور نہ ہی پل ملے۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں سارا سال آپکی سڑک کھلی رکھوں گا۔ برف تو یورپ میں بھی پڑتی ہے مگر وہاں سڑکیں بند نہیں ہوتیں۔ میں نے یورپ کی مثال دی تھی آپ بھی میری باتوں میں آگئے اس میں میرا کیا قصور ہے۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں پیسہ لینے کا ماہر ہوں۔ میاں نواز شریف صاحب میرے رشتہ دار ہیں میں فنڈز لینا جانتا ہوں۔

آپ مجھے ووٹ دیں میں آپکی روڈ کو موٹروے بنا دوں گا۔ میں نے یہ تو نہیں کہا تھا میں 17 ارب کا منصوبہ 3 ارب پر لے آوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں میرٹ لاوں گا اور اس میرٹ کے زریعے میں تیسرے نمبر والے کو پہلے نمبر پر لاکر نوکری دوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میرا پی آر او اپنی ڈھارے بنوا کر واچر لگوائے گا جب کام ہو جائے تو وہ سٹے کروا دے گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں نوکریوں کا جھانسا دے کر لاکھواں میں رشوت لوں گا پھر عارضی آرڈر کروا کر سٹے کرواداوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں آفات سماوی کے پیسے کھاجاوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں لائن آف کنڑول پر بنکرز فائلوں میں بناوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں ایسے ہسپتال بناوں گا جہاں پرنہ تو ڈاکٹرز ہو ں گے اور نہ ہی دوایاں۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں میں ایسی سڑکیں بنواواں گا جہاں پر آئے روز گاڑیاں کھایوں میں گر یں گی۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں سڑک کے لاکھوں روپے کھا کر آپ کو اپنے نام کی ایک تختی دے دوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں سرکاری سکولوں کوتو بہتر بنانے کی اہلیت نہیں رکھتا تاہم آپ پر پرائیویٹ سکولز مسلط کردوں گا۔

آپ مجھے ووٹ دیں میں اپنے بھتیجے کو اہم عہدے پر لگوا دوں گا۔ آپ مجھے ووٹ تو دیں میں جیتنے کے بعد دورازے کے باہر گارڈ بیٹھا دوں گا اور اگر ضرورت پڑی تو ڈنڈے بھی پڑواداوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں جیت کر پنڈی اسلام آباد اور مظفرآباد ڈیرے ڈال لوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں نیلم میں اپنا گھر بنا کر بیوی بچے بنی گالہ بسا لوں گا۔آپ مجھے ووٹ دیں میں اساتذہ کو آپ کے علاقے میں آن ڈیوٹی کروا کر، محکمہ تعلیم ٹھیکے پر دلوا کر انہیں مظفرآباد بھیجوا داوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں سید سے خواجہ، خواجہ سے اعوان، اعوان سے ملک، ملک سے بٹ، بٹ سے گجر اور گجر سے کچھ بھی بن جاوں گا۔آپ مجھے ووٹ دیں اور قسم لے لیں میں اپوزیشن نہیں کروں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں اگلی مرتبہ دوسری پارٹی میں چلاجاوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں نیلم کے رقبے کو لیز پہ اپنے رشتہ داروں کو دے دوں گا۔

آپ مجھے ووٹ دیں میں آزادکشمیر کو بھی مقبوضہ کشمیر بنادوں گا اور آئے روز کنڑول لائن پر شہادتیں ہوں گی۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں نیلم میں منشیات متعارف کروا دوں گا۔آپ مجھے ووٹ دیں میں آپ کو بیماریوں کی ماں کالے پائپ دوں گا جنہیں این جی اوز نے رد کر دیا ہوا ہے۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں سعودی عرب اور ایشین ڈولپمنٹ بینک کے پیسے بھی کھا جاوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں جونئیر اساتذہ کو سنئیر پر مسلط کر دوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں مخالف پارٹی کے ملازمین کو ہلمٹ تبادلہ کروادوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں پانچھ سال میں ایک سکول بھی نہیں بناوں گا۔ جو سکول پہلے سے موجود ہیں ان کا بیڑہ بھی غرق کردوں گا۔ نہ انکی دیوار ہو گی، نہ چھت، نہ فرنیچر نہ استاد۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں این ٹی ایس کومعذور بنا دوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں سڑکوں کا جال بچھا دوں گا اور یہ ایساجال ہو گا اس میں  سے آپ اگلے کئی سالوں تک پھنسے رہیں گے۔ یہ ایسا جال ہو گا جس میں سے میری پارٹی کے لوگ پیسہ کھا کر باآسانی نکل جائیں گے۔ سڑکوں کا یہ جال میری چال ہو گی اور یہ سڑکیں پانچھ سال بھی پورے نہیں کر پائیں گی۔

آپ مجھے ووٹ دیں اور میرا نمبر سیو کر لیں میں الیکشن جیتتے ہیں نمبر بندکردوں گا پھر آپ پانچھ سال نمبر ملاتے رہنا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں جنگل کو گاجر مولی کی طرح کاٹوں گا تاکہ آپ کبڈی کھیل سکیں۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں جڑی بوٹی کو ختم کر کے رکھ دوں گا اور جڑی بوٹی سمگلنگ کے بادشاہ کو اپنے ساتھ خاص عہدے پر تعینات کردوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں آپ کے علاقے کی ساری معدنیات اور قیمتی پتھروں کا صفایا کروادوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں شونٹھر ٹنل منصوبہ بند کروادوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں گریس کے لوگوں کو چھ ماہ تک برف میں بند کر کے رکھ دوں گا وہ اپنے پیاروں کے جنازوں پر بھی نہیں پہنچ سکیں گے۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں مختلف محکموں کو آپس میں لڑوا دوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں ٹرانسپورٹ مافیا کو بے لگام کر دوں گا۔ وہ من مانی کریں گے اور اپنی مرضی کا کرایہ وصول کریں گے کوئی پوچھنے والا نہیں ہو گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں مسائل کے حل کے وقت میں کہہ دوں گا ڈی سی میری نہیں سنتا۔

آپ مجھے ووٹ دیں میں ایک پل رکھ کر سارے حلقے کو پانچھ سال اس کے طواف کرواوں گا اور سب کو کہوں گا یہ پل آپ کے علاقے ہی کا ہے اور آخر میں کسی ایک کو پل دے کر سٹے کروادوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں سڑکوں کا جال بچھا کر خود گھوڑے پر سوار ہو کر جاوں گا کیونکہ سڑک بہت نازک میڑیل سے بنی ہے گاڑی زیادہ وزنی ہے خراب نہ ہو جائے۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں پی ٹی آئی میں جانے کی پوری کوشش کروں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں الیکشن کے قریب تسبیح پکڑ کر گاوں گاوں جاوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں آپ کے پانچھ سال پہلے فوت ہونے والوں کی فاتحہ کے بہانے اپنی الیکشن مہم چلاوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں سٹے سرکار بن جاوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میں ہار کر اگلے پانچھ سال اپنا منہ بند رکھوں گا اور حکومت کے خلاف ایک لفظ تک نہیں بولوں گا۔ آپ مجھے ووٹ دیں میرے بال سفید بھی ہو جائیں میں آپ کی جان نہیں چھوڑوں گا اور آپ کو دھوکہ دیتا رہوں گا۔

آپ کے لیے میں نالے بھی پار کروں گا، کدل بھی پار کروں گا، چڑھائیاں بھی چڑھوں گا، گروں گا اٹھوں گا ڈگمگاوں گا سنبھلوں گا مگر آپکی جان نہیں چھوڑوں گا کیونکہ مجھے یقین ہے میری اتنی شاندار کارکردگی کے بعد آپ جیسے احمق مجھے پھر سے ووٹ دیں گے۔ ماضی کے تجربے نے مجھے ایک بار پھر آپ کے پاس آنے پر مجبور کر دیا ہے۔ میں اس امید پر آتا ہوں کہ آپ ہر بار میری باتوں، وعدوں اور جھوٹی تسلیوں کے جھانسے میں آتے ہوئے بیوقوف بن کر مجھے ووٹ دیتے رہے ہیں اور مجھے یقین ہے اس مرتبہ بھی آپ بیوقوف بنیں گے اور میں مزید پانچھ سال کے لیے مزے کروں گا۔آپکو پنچ سورہ کی قسم مجھے ووٹ ضرور دینا۔ الانسان خطا البشرمیں آج یہ کہتا ہوں آج سے تیس سال پہلے بھی یہی کہتا تھا اگر آپ کو تیس سال میں اس کی سمجھ نہیں آئی تو اس میں میرا کیا قصور ہے میں تویہ کہتا رہوں گا۔ بس آپ مجھے ووٹ دیں۔ 


شیئر کریں: