Chitral Times

Nov 27, 2021

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

صوبائی حکومت گزشتہ پانچ سالوں میں ایک ارب پودے اُگانے کا ہدف پورا کر چکی ہے۔وزیراعلیٰ

شیئر کریں:

پشاور ( چترال ٹائمز رپورٹ ) خیبرپختونخوا میں موسم بہار کی شجر کاری مہم برائے سال 2021 کا آغاز کردیا گیا۔ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے جمعرات کے روزوزیراعلیٰ ہاوس کے لان میں زیتون کا پودا لگا کر مہم کا باضابطہ اجراءکیا ہے ۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ شجرکاری مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں تاکہ شجرکاری کے حوالے سے قومی سطح پر مقررہ اہداف کا حصول ممکن ہو سکے ۔ اُنہوں نے کہاکہ خیبرپختونخوا کی صوبائی حکومت گزشتہ پانچ سالوں میں ایک ارب پودے اُگانے کا ہدف پورا کر چکی ہے جسے قومی اور بین الاقوامی سطح پر زبردست پذیرائی ملی ہے ۔

اُنہوں نے کہاکہ قومی سطح پر 10 ارب پودے اُگانے کی مہم کے تحت خیبرپختونخوا میں مزید ایک ارب پودے اُگائے جارہے ہیں جس میں متعلقہ اداروں ، نجی تنظیموں اور عوام و خواص کو بڑھ چڑھ کر کردار اادا کرنے کی ضرورت ہے ۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ قومی سطح پر شجرکاری کا مذکورہ منصوبہ ماحولیاتی تبدیلی کے مضر اثرات سے نمٹنے ، جنگلات کی دیر پا بنیادوں پر ترقی ، ذرائع روزگار کی فراہمی ، جنگلات کے رقبے میں اضافے جیسی اہم ضروریات اور اہداف کو مدنظر رکھ کر ڈیزائن کیا گیا ہے جس کی متعلقہ قومی و بین الاقوامی اداروں کی طرف سے مسلسل نگرانی کی جارہی ہے تاکہ شفاف اور موثر انداز میں مطلوبہ اہداف حاصل کئے جا سکیں۔ بعدازاں وزیراعلیٰ کو صوبے میں شجرکاری کے حوالے سے اقدامات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا گیا کہ موسم بہار کی رواں شجرکاری مہم کے دوران صوبے میں 250 ملین سے زائد پودے لگائے جائیں گے ۔ یہ شجرکاری مہم قومی سطح پر 10بلین ٹری پراجیکٹ کے سلسلے کی کڑی ہے جس کے تحت مالی سال 2020-21 کے دوران صوبے میں مجموعی طور پر 382ملین سے زائد پودے لگانے کا ہدف رکھا گیا ہے ۔

اس موقع پر آگاہ کیا گیا کہ گزشتہ سال مون سون کی شجرکاری مہم کے دوران صوبے میں 132 ملین سے زائد پودے لگائے گئے تھے جبکہ مجموعی طور پر منصوبے کے تحت اب تک تقریباً 300 ملین پودے لگائے جا چکے ہیں ۔ وزیراعلیٰ کو آگاہ کیا گیا کہ صوبے میں زیتون کی شجرکاری پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے، پانچ سالہ منصوبے کے تحت صوبے میں30 ہزار ایکٹر رقبے پر زیتون کے 40 لاکھ پودے لگانے جبکہ 20 لاکھ قلم کاری کا ہدف مقرر کیا گیا ہے ۔ زیتون کی قلم کاری کے منصوبے کی تکمیل سے 10 سالوں میں 27 ارب روپے کی آمدن متوقع ہے ۔ صوبے بھر بشمول ضم اضلاع میں قلم کاری کیلئے زیتون کے 73 ملین پودے دستیاب ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

دریں اثنا وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان کی طرف سے جمعہ کے روز پی ٹی آئی کے ممبران صوبائی اسمبلی کے لیے ظہرانے کا اہتمام کیا گیا۔ ممبران صوبائی اسمبلی کے علاوہ اسپیکر صوبائی اسمبلی مشتاق غنی اور وفاقی وزیر دفاع پرویز خٹک نے بھی ظہرانے میں شرکت کی۔ سینٹ انتخابات کے لئے پی ٹی آئی کے نامزد امیدوار بھی ظہرانے میں شریک تھے۔ اس موقع پر ممبران صوبائی اسمبلی کو سینٹ انتخابات کے لیے ووٹ ڈالنے کے طریقہ کار پر بریفنگ دی گئی جبکہ نئے ممبران اسمبلی کو سینٹ انتخابات کے طریقہ کار پر باقاعدہ تربیت دینے کا فیصلہ کیا گیا۔ پانچ ممبران اسمبلی کے علاوہ دیگر تمام ممبران اسمبلی ظہرانے میں شریک تھے جو گھر میں بیماری اور دیگر ناگزیر وجوہات کی بناءپر شریک نہ ہوسکے جس کے لیے انہوں نے وزیر اعلیٰ سے رابطہ کرکے ان سے باقاعدہ اجازت لی تھی۔ ظہرانے کے شراکاءسے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ محمود خان نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف سینٹ انتخابات میں اپنی تمام نشستیں جیتے گی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف انتخابات میں مکمل شفافیت کی علمبردار ہے اس لیے شو آف ہینڈز کے ذریعے انتخابات کا انعقاد چاہتی ہے۔ محمود خان کا کہنا تھا کہ سینٹ انتخابات کے لئے پارٹی ٹکٹس میرٹ کی بنیاد پر ٹکٹس تقسیم کئے گئے ہیں اور پارٹی کے تمام کارکنان نے اس سلسلے میں پارٹی اور پارٹی چیئرمین عمران خان کے فیصلے کے ساتھ کھڑے ہیں۔

cm kp speech to kp MPAs and senate candidates

شیئر کریں: