Chitral Times

Nov 26, 2022

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

صوبے میں ایکو ٹوارزم اور ذمہ دارانہ سیاحت کو فروع دینے کیلئے ٹریک پروگرام کا اجراء

شیئر کریں:

پشاور (چترال ٹائمز رپورٹ ) وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے صوبے میں سیاحتی سرگرمیوں کے فروع کے ساتھ ساتھ سیاحتی مقامات میں قدرتی ماحول کے تحفظ کو صوبائی حکومت کی اہم ترجیح قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ صوبائی حکومت نہ صرف صوبے میں سیاحت کو فروغ دے کر لوگوں کے لئے روزگار کے مواقع فراہم کرنے پر خصوصی توجہ دے رہی ہے بلکہ ماحول دوست سیاحت کے فروع کے ذریعے ماحول اور سیاحت کے درمیان توازن کو برقرار رکھنے کے لئے بھی بیک وقت سنجیدہ اقدامات کر رہی ہے اور صوبائی محکمہ سیاحت ، عالمی بینک اور نیسلے پاکستان کے اشتراک سے “ٹریک” (TREK) پروگرام کا اجرائ اس سلسلے کی ایک اہم کڑی ہے جو صوبے کے خوبصورت سیاحتی مقامات میں ماحول دوست اور ذمہ درانہ سیاحت کے تصور اور اہمیت کو اجاگر کرنے اور سیاحتی مقامات میں قدرتی ماحول کی حفاظت کے لئے سیاحوں، مقامی آبادی، انتظامیہ، سیاحت سے وابستہ لوگوں اور تنظیموں میں بڑے پیمانے پر اگہی دینے میں ایک سنگ میل ثابت ہوگی۔

یاد رہے کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے گزشتہ روز صوبائی حکومت کے ٹریک پروگرام کا باقاعدہ اجراءکیا تھا۔ دو سالہ اس پروگرام کا مقصد صوبے میں ایکو ٹوارزم اور ذمہ دارانہ سیاحت کو فروع دینے کے لئے ایک مربوط حکمت عملی کے تحت اقدامات اٹھانا ہے۔ اس سلسلے میں یہاں سے جاری اپنے ایک بیان میں وزیر اعلی محمود خان نے ٹریک پروگرام کے اجراءکو وقت کی اہم ضرورت قرار دیتے ہوئے کہا کہ خیبر پختونخوا اس طرح کا ایک اہم پروگرام شروع کرنے والا ملک کا پہلا صوبہ ہے، اس پروگرام پر عملدرآمد سے صوبے کے سیاحتی مقامات کی قدرتی حسن کو پائیدار بنیادوں پر محفوظ کرنے میں مدد ملے گی۔

وزیر اعلی نے کہا ہے کہ سیاحتی اہمیت کے حامل مقامات قدرت کا عظیم تحفہ اور آنے والی نسلوں کی امانت ہیں جنہیں اپنی اصلی حالت میں محفوظ رکھنا حکومت کے ساتھ سب کی مشترکہ زمہ داری ہے جس کے لئے تمام متعلقہ لوگوں، اداروں اور تنظیموں کو اپنا اجتماعی اور انفرادی کردار ادا کرنا ہوگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت اس مقصد کے لئے تمام تر ضروری اقدامات اٹھائے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت صوبے میں پائے جانے والے سیاحت کے مواقع کا بھر پور استعمال یقینی بناکر یہاں کے لوگوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے کے لئے وزیر اعظم عمران کے وڑن کے مطابق دور رس اقدامات اٹھا رہی ہے اور حکومت کے ان اقدامات کے نتیجے میں یہ صوبہ عنقریب ملکی اور غیر ملکی سیاحت کا مرکز بن جائے گا جسے نہ صرف صوبے کی معیشت مستحکم ہوگی بلکہ بین الاقوامی سطح پر ہمارا مثبت تشخص بھی اجاگر ہوجائے گا۔ وزیر اعلی نے ٹریک پروگرام کے اجراءکو ممکن بنانے پر محکمہ سیاحت کی کارکردگی کی تعریف کرتے ہوئے اس پروگرام میں اشتراک کے لئے عالمی بینک اور نیسلے پاکستان کا شکریہ ادا کیا ہے اور امید ظاہر کی ہے کہ تمام شراکت دار ادارے اس پروگرام کو کامیاب بنانے اور اس کے مقاصد کے حصول میں اپنا بھر پور کردار ادا کریں گے۔
<><><><><><>


دریں اثنا وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے کورونا سے متاثرہ لیڈی ڈاکٹر پروفیسر زیب النساءکی وفات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے لواحقین سے تعزیت کی ہے۔ یہاں سے جاری اپنے تعزیتی بیان میں وزیر اعلی نے اہل خانہ سے دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے مرحومہ کی مغفرت اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ کورونا وبا کے دوران ڈاکٹر کمیونٹی کی خدمات قابل ستائش ہیں جو دوسروں کی جانیں بچانے کے لئے فرنٹ لائن پر خدمات انجام رہے ہیں، حکومت ان کی گرانقدر خدمات اور قربانیوں کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔


شیئر کریں: