Chitral Times

Mar 25, 2023

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

کورونا کی دوسری لہر ملک میں داخل، تما م عوامی اجتماعات پر پابندی عائدکردی گئی۔وزیرصحت

شیئر کریں:

پشاور (چترال ٹائمز رپورٹ) خیبرپختونخوا میں کورونا کیسز میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے۔ ہم کورونا کی دوسری لہر میں داخل ہو چکے ہیں۔ وزیر اعظم عمران خان نے وسیع تر عوامی مفاد میں رشکئی اکانومک زون کی افتتاحی تقریب کے بڑے عوامی جلسے کو منسوخ کردیا ہے۔ اپوزیشن بھی عوام کی زندگیوں کو خطرے میں نہ ڈالے اور اپنے جلسے منسوخ کرے۔ ان خیالات کا اظہار خیبرپختونخوا کے وزیر صحت و خزانہ تیمور سلیم خان جھگڑا اور وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران خان بنگش نے وزیراعظم پاکستان عمران خان کی زیر صدارت ہونے والے نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی برائے انسداد کورونا کے اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر کامران بنگش نے بتایا کہ این سی سی کے آج ہونے والے اجلاس میں کورونا وباء کی مجموعی صورتحال اور انسداد کے لیے اقدامات پر غور کیا گیا۔ ملک میں اکتوبر کے پہلے ہفتے کورونا کے مثبت کیسز کی شرح 1.7 فیصد تھی جو کہ اب 6.4 فیصد ہو چکی ہے۔ اسی طرح اکتوبر میں 8 اموات رپورٹ ہو رہی تھیں جب کہ اب روزانہ 25 اموات رپورٹ ہو رہی ہیں۔ کامران بنگش کا کہنا تھا کہ ہم کورونا وباء کی دوسری لہر میں داخل ہو چکے ہیں۔

این سی سی اجلاس میں خیبرپختونخوا سمیت ملک بھر میں تمام عوامی اجتماعات اور جلسے جلوسوں پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کا مقصد کورونا کا پھیلاؤ روکنا اور شہریوں کی زندگیاں محفوظ بنانا ہے۔ وزیرِ اعظم عمران خان نے وسیع تر عوامی مفاد میں این سی او سی کی سفارشات پر خیبر پختونخوا میں رشکئی اکانومک زون کی افتتاحی تقریب کے موقع پر ہونے والے بڑے عوامی جلسے کو منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ رشکئی اکانومک زون سی پیک کے تحت پہلا انڈسٹریل زون ہے جس سے 2 لاکھ سے زائد روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ وزیر اعظم عمران خان نے جلسہ منسوخی کا فیصلہ اس لیے کیا تاکہ عوام کی زندگیوں کو لاحق خطرے سے بچایا جاسکے جبکہ وزیرِ اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے بھی کورونا صورت حال کا جائزہ لیتے ہوئے اپنی تمام عوامی تقریبات منسوخ کر دی ہیں۔ کامران بنگش نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کو بھی صورت حال کا پوری طرح ادراک کرتے ہوئے اپنے جلسے منسوخ کرنے چاہئے تاکہ لوگوں کی زندگیوں کو کورونا کے خطرے سے بچایا جاسکے۔

انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے جلسے تاریخی جلسے ہوتے ہیں تاہم پھر بھی وزیرِ اعظم عمران خان نے ہمیشہ کی طرح ایک دفعہ پھر بہترین عوامی مفاد کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے پہل کی اور اپنا بڑا عوامی جلسہ منسوخ کر دیا۔ صوبائی وزیر صحت و خزانہ کا تیمور جھگڑا کا اس موقع پر کہنا تھا کہ جس طرح عوام اور ہیلتھ ورکرز نے مل کر کورونا کی پہلی لہر کا مقابلہ کیا اسی حوصلے کے ساتھ دوسری لہر کا بھی مقابلہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس وائرس سے متعلق ہم ابھی تک اتنا نہیں جان سکے ہیں۔ کورونا سے نمٹنے کے لیے محکمہ صحت کی استعداد میں اضافہ کیا گیا ہے اور صوبے میں ہیلتھ سسٹم روزانہ کی بنیاد پر بہتری کی جانب گامزن ہے۔ اس وقت 4 ہزار سے زائد کورونا تشحصی ٹیسٹ ہو رہے ہیں۔ تیمور جھگڑا نے کہا کہ ملک مکمل لاک ڈاؤن کا متحمل نہیں ہوسکتا لہذا ہمیں کورونا ایس او پیز پر مکمل عمل درآمد کرنا ہو گا۔ ماسک کا صحیح موقع پر استعمال کرنا ہو گا۔ تیمور جھگڑا نے کہا کہ کورونا کی دوسری لہر بڑھ رہی ہے۔ اکتوبر کے وسط میں آئی سی یو بستروں کے استعمال کی شرح 11 فیصد تھی جو کہ اب 24 فیصد ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ اپوزیشن بھی مثبت طرزِ عمل اختیار کرتے ہوئے اپنے عوامی اجتماعات کو منسوخ کرے گی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔


شیئر کریں: