Chitral Times

Oct 23, 2020

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

خیبرپختونخوا پبلک سروس کمیشن نے تقرریوں کے تیز ترین عمل کا آغاز کردیا ہے۔۔ترجمان

شیئر کریں:

پشاور (چترال ٹائمز رپورٹ) علیٰ خیبر پختونخوامحمود خان کی ہدایت پر خیبر پختونخوا پبلک سروس کمیشن نے کورونا وباء کے دوران لاک ڈاوٗن کے باعث سرکاری محکموں میں خالی آسامیوں پر بھرتیوں کے تعطل سے نمٹنے کیلئے تقرریوں کے تیز ترین عمل کا آغاز کر دیا ہے کمیشن کے چیئرمین فرید اللہ خان کی نگرانی میں آئندہ 4ماہ کے دوران 1لاکھ 70ہزار سے زائد امیدواروں میں سے خالی آسامیوں پر چناوٗ کیلئے تحریری امتحان اور انٹرویوز کا شیڈول جاری کر دیا گیا ہے۔ صوبائی پبلک سروس کمیشن خیبر پختونخوا کے ترجمان نے کہا کہ کمیشن کے چیئرمین فرید اللہ خان کی سربراہی میں ارکان اور عملہ پر مشتمل مستعد اور باصلاحیت ٹیم صوبائی حکومت کے محکموں اور اداروں میں خالی آسامیوں پر دستیاب ٹیلنٹ میں سے بہترین افراد کی تقرری کیلئے فعال اور سرگرم ہے جس کا اندازہ اس امر سے لگایا جا سکتا ہے کہ2018,2017اور2019کے تین سالوں کے دوران کمیشن کو بھجوائی جانے والی 12ہزار 320خالی آسامیوں کیلئے 7لاکھ 16ہزار246امیدواروں کی درخواستوں کو سکرین ٹسٹ اور تحریری امتحانات سمیت مختلف مراحل پر نمٹایا گیا جن میں 48ہزار264انٹرویو کے مرحلہ تک پہنچے ان میں سے سال 2019کے دوران 1لاکھ56ہزار196امیدوار میں سے3ہزار289خالی آسامیوں کیلئے اہل امیدواروں کا چناوٗ ہو ا جو ایک ریکارڈ تعداد ہے ان میں محکمہ صحت کی1607خالی آسامیوں کیلئے11ہزار251امیدواروں، محکمہ اعلیٰ تعلیم کی398خالی آسامیوں کیلئے19ہزار محکمہ ایلیمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن کی939خالی آسامیوں کیلئے38ہزار262محکمہ داخلہ و قبائلی امور کی13آسامیوں کیلئے1ہزار 101امیدواروں، محکمہ پولیس کی180آسامیوں کیلئے4ہزار 35امیدواروں، محکمہ زراعت، لائیو سٹاک، امداد باہمی کی61آسامیوں کیلئے7ہزار8سو53، محکمہ ماحولیات و جنگلات کی52خالی آسامیوں کیلئے4ہزار200امیدواروں، محکمہ اسٹیبلشمنٹ اینڈ ایڈمنسٹریشن کی139خالی آسامیوں کیلئے23ہزار 4سو83امید وار شامل تھے،

ترجمان نے کہا کہ رواں سال مارچ کے اوائل میں کورونا وائرس کی وباء نے جہاں زندگی کے تمام شعبوں کو لاک ڈاون اور سماجی فاصلہ جیسی احتیاطی تدابیر لینا پڑیں وہیں خیبر پختونخوا پبلک سروس کمیشن کو بھی ہزاروں لاکھوں امیدواروں کے تحفظ کی خاطر بادل نا خواستہ سلیکشن کے عمل کے مختلف مراحل میں تعطل کرنا پڑا جس کی وجہ سے شیڈول متاثر رہا تا ہم حالات میں بہتری آنے کے ساتھ ہی خیبر پختونخوا پبلک سروس کمیشن کے چیئر مین فرید اللہ خان کی ہدایت پر کمیشن نے پہلے سے کہیں زیادہ تیزی سے سلیکشن کے عمل کا آغاز کر دیا ہے جس کا اندازہ اس امر سے لگایا جا سکتا ہے کہ کمیشن نے پہلے سے کہیں زیادہ تیزی سے سلیکشن کے عمل کا آغاز کر دیا ہے جس کا اندازہ اس امر سے لگایا جا سکتا ہے کہ کمیشن نے صوبہ کے مختلف محکموں اور اداروں میں خالی آسامیوں پر تقرری کے عمل کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کیلئے مارچ 2021تک کے شیڈول کا اعلان کر دیا ہے آئندہ 4مہینے کے دوران ان خالی آسامیوں کے1لاکھ70ہزار سے زائد امیدواروں کے تحریری امتحانات اور انٹر ویوز کا انعقاد کیا جائے گا ترجمان نے واضح کیا کہ وزیر اعلیٰ محمود خان کی ہدایت پر خالی آسامیوں پر تیز ترین تقرریوں کیلئے خیبر پختونخوا پبلک سروس میں جدید عصری تقاضوں سے ہم آہنگ اصلاحات کے ایک جامع عمل کا آغاز کیا گیا ہے چیئرمین فیر ید اللہ خان نے کمیشن کے اراکین اور حکام کیلئے یہ رہنماء اصول وضع کئے ہیں کہ کمیشن کا کام محض روزگار دینا نہیں بلکہ بہترین گورننس اور نظم و نسق کیلئے صوبہ کو بہترین معیار کی مستعد بیورو کریسی کی فراہمی کو یقینی بناناہے کیونکہ کمیشن کے منتحب کرد ہ انہی امیدواروں نے آگے چل کر معاملات سنبھالنے ہیں اس لئے امیدواروں کے انتخاب میں معیار پر کسی صورت سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا کمیشن نے خالی آسامیوں کیلئے صرف امیدواروں کا انتخاب ہی نہیں کرنا بلکہ میرٹ او ر شفافیت کے اعلیٰ ترین معیا کو اولیت دیتے ہوئے بہترین امیدواروں کا چناوٗ کرنا ہے اور خیبر پختونخوا پبلک سروس کمیشن اس فریضہ کی انجام دہی کیلئے پوری طرح پر عزم ہے۔


شیئر کریں: