Chitral Times

Mar 7, 2021

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

غذر کے نوجوانوں کو کسی نے ورغلایا ہے وہ اپنے بڑوں سے پوچھیں کہ شندورکس کا ہے۔عمائدین لاسپور

شیئر کریں:

چترال (نمائندہ چترا ل ٹائمز ) لاسپور ویلی سے ڈسٹرکٹ کونسل چترال کے سابق ممبر ذولفی ہنر شاہ اور ویلج کونسل لاسپورکے سابق چیئرمین لیفٹنٹ شیراعظم خان (تمغہ بسالت ) نے نوجوانان غذر کی طرف سے شندور کے اوپر گلگت بلتستان کے دعویٰ کا جواب دیتے ہوئے کہاہے کہ نوجوانوں کو کسی نے ورغلایا ہے وہ اپنے بڑوں سے پوچھیں تو معلوم ہوگا کہ لنگر اور گوکوش میں لاسپور کے لوگوں کی چراگاہیں رئیس حکومت کے وقت سے دستور اور رواج میں شامل ہیں ۔مہترسلیمان شاہ اورگوہر آمان کے زمانے میں یہ دستور برقرار رہا ، راجہ مراد خان اور راجہ حسین علی خان کے زمانے میں یہ رواج قائم رہا ، بابائے غذور نبردار اعلیٰ نیت قبول حیات نے کبھی اس دستور کو نہیں توڑا۔سرفراز شاہ ۷جولائی ۲۰۰۳کواسلام آباد میں کمیشن کے سامنے ناکام ہوا ۔۲۲جون ۲۰۱۱کو چیف کورٹ گلگت بلتستان اسٹیٹس کو برقرار رکھنے کا حکم دیا ۔لاسپور کے عمائدین نے غذر کے نوجوانوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ اپنے بڑوں سے دستور اور رواج کا پتہ لگائیں ۔


شیئر کریں: