Chitral Times

May 28, 2020

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

چترال پولوگراونڈ کھنڈر میں تبدیل، انتظامیہ نوٹس لے۔۔۔امیراللہ سوشل ورکر گرم چشمہ چترال

شیئر کریں:

کھیلوں کا بادشاہ اوربادشاہوں کا کھیل پولو۔

پولو دنیا کا سب سےپرانا اور ایک دلچسپ کهیل ہونے کے ساتھ چترال کا قومی کهیل بھی قرار دیا گیا ہے اور یہ بهی سب کو معلوم ہے کہ پولو دنیا میں سب سے مہنگا ترین کهیل ہے گهوڑے سے لیکر گیند یہ کافی امیر گردے والے لوگوں کا کام ہے جو کہ ان اخراجات کو پورا کر کے لوگوں کو کهیل کا لطف پیش کرتے ہیں چونکہ فری اسٹائل پولو دنیا میں ایک انوکها اور بغیر تلوار کے لڑائی تصور کیا جاتا ہے اور فری اسٹائل پولو صرف چترال اور گلگت میں کهیلا جاتا ہے ہر سال 7سے9 جولائی کو مختلف علاقوں اور مختلف ممالک کے پولو کے شایقین لوگ دنیا کے بلند ترین پولو گراونڈ شندورمیں چترال اور گلگیت کے درمیان فری اسٹائل پولو دیکهنے چترال اور گلگت کا رخ کرتے ہیں


چونکہ چترال میں ایک پولو گراونڈ موجود ہے جو کہ پولو کے علاوہ عام غریب لوگوں کی سیر و تفریح کا واحد ذریعہ ہے عمر رسیدہ لوگ اپنے دوستوں کو لیکر چناروں کے ساے تلے خوش گپیوں میں وقت گزارتے ہیں بچے لوگ فٹ بال اور کرکٹ کهلتے ہیں اور کچه لوگ چاندنی رات کو اپنے فیملیوں کو لیکر تهوڑا وقت یہاں گزارتے ہیں


گزشتہ سال ایک سازش کے تحت گراونڈ میں مٹی اور پتهر ڈال کر چترال کے اندر پولو کو ناکام بنانے کا پلان کیا گیاہے اور گراونڈ کو تباہ کر چکے ہیں کوئی پوچهنے والا نہں نہ انتظامییہ غور کرتی ہے نہ پولو ایسوسی ایشن کا غم ہے عوامی نمایئندے پشاور اور اسلام اباد کے سوہنا موسم کا مزہ لیتے ہیں عوام کا کوئی فکر نہیں

27 جولائی 2018 کی رات گزر کر 2 سال ہو گے ڈی سی سے گزرش ہے جن لوگوں نے سازش کرکے گراونڈ خراب کیے ہیں ان کو اپنے کہٹرے کهڑا کر کے اس غلطی کا سزا دیا جاے اور گراونڈ کو کهیل کے قابل بنایا جائے اور یہ بهی سنے میں ایا ہے کہ دو سالوں سے سول کهلاڑی چندہ جمع کر کے گیند خریدتے اور نہ الاونس ملتا ہے


ہم نے یہ بھی سنا ہے کہ 90 لاکھ کا فنڈ ملا تها وہ پیسه ادهر ادهر ہو کر ٹهکدار کے مطابق 60 لاکھ روپے رہ چکے ہیں اگر ڈی سی صاحب غور نہیں کیا تو ٹھیکہ دار لوگ یہ بهی کهائیں گے ڈی سی صاحب سے درخواست ہے کہ کورانا کی حالات درست ہوتے ہی پولو گراونڈ پر غور فرمائیں


شیئر کریں: