Chitral Times

Feb 7, 2023

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

کرونا وائرس لاک ڈاون، چترال کے مختلف مساجدمیں لوگوں کی حاضری کم رہی

شیئر کریں:

چترال (نمائندہ چترال ٹائمز)  جمعہ کے روز چترال پولیس نے چترال شہر اور مضافات میں لاک ڈاون کو موثر بنانے اور عوام کو باہر نکلنے کی حوصلہ شکنی کے سلسلے میں ذیادہ سرگرمی دیکھائی جس سے بازار اور سڑکیں تقریباً سنسان اور موٹر گاڑیاں بھی اکا دکا نظر دیکھائی دیئے۔گزشتہ جمعہ کے برعکس مختلف مساجد میں نمازیوں کی تعداد نہ ہونے کے برابر رہا ا ور نماز جمعہ کے لئے اجتماعات تعداد کے لحاظ سے متاثر رہا۔  ڈسٹرکٹ پولیس افیسر لویر چترال وسیم ریاض خان نے میڈیا کو بتایاکہ اپر اور لویر چترال کے چالیس مختلف جامع مساجد سے حاصل کردہ اعدادوشمار کے مطابق 16600کی گنجائش کے برعکس صرف 839افراد نے نماز جمعہ پڑھ لی۔ انہوں نے بتایاکہ چترال کی تاریخی شاہی مسجد میں 35جبکہ جامع مسجد شاہی بازار، اتالیق مسجد، دواشش، ارندو خاص، کوشٹ، برنس، کوغوزی اور بونی میں پانچ پانچ نمازی موجود رہے جبکہ دروش کے بلال مسجد میں نمازیوں کی تعداد سب سے ذیادہ رہا جوکہ 100کے لگ بھگ ہے۔ انہوں نے اس بات پر مسرت کا اظہار کیاکہ گزشتہ دنوں چترال پولیس کی مسلسل آگہی مہم سے چترال کے عوام نہایت ذمہ داری کا مظاہرہ کررہے ہیں جوکہ فطرت کے لحاظ سے قانون شکنی کے مخالف ہیں اور یہی رویہ رہا تو چترال کو کرونا کی مہلک وائرس سے پاک رکھنا کوئی مشکل امر نہیں ہے۔

chitral masajid ban on crowd 2

دریں اثنا محمد ریاض خان اسسٹنٹ کمشنر مستوج ، شمشیر علی خان سب ڈویژنل پولیس آفیسر موڑکہو/تورکہو کے ہمراہ بونی جامع مسجد میں موجود نمازیوں کو آگاہ کیا کہ صوبائی حکومت نے 31 مارچ 2020 سے تمام مساجد میں 5 افراد سے ذیادہ کی موجودگی پر پابندی عائد کی ہے اور نماز با جماعت کے وقت بھی امام سمیت صرف موءذن، خادم یا مسجد کا چوکیدار اور مسجد کے اپنے افراد ہونگے جبکہ ان کی تعداد پانچ سے ذیادہ نہ ہو۔ لہذا کورانا وائرس کے پھیلاؤ کے خدشات کے تحت آپ اپنے گھروں میں نماز ادا کریں اور براہ کرام مسجد میں جمع نہ ہوں۔ اس حوالے سے پولیس مسجد کے پیش امام کے ذریعہ باضابطہ اعلان بھی کروایا۔گیا

chitral masajid ban on crowd 1

شیئر کریں: