Chitral Times

Dec 5, 2021

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

کرونا وائزس کے ممکنہ خطرے کے پیش نظرصحت ایمرجنسی میں توسیع کا اعلان

شیئر کریں:

خیبرپختونخوا میں کورونا وباء کے ممکنہ خطرے کے پیش نظر صحت ایمرجنسی میں توسیع
حفاظتی سازوسامان اور آلات کی خریداری کے لیے رولز میں نرمی کی استدعا
.
پشاور(چترال ٹائمزرپورٹ ) محکمہ صحت خیبرپختونخوا نے صوبے میں کورونا وباء کے ممکنہ خطرے کے پیش نظر صحت ایمرجنسی میں توسیع کردی ہے۔ اس حوالے سے محکمہ نے صحت ایمرجنسی میں غیر معینہ مدت تک توسیع کا اعلامیہ جاری کر دیا ہے۔ اعلامیے کے مطابق عالمی سطح پر ہائی رسک الرٹ، ہمسایہ ممالک اور ملک کے اندر کورونا وائرس کے کنفرم کیسز سامنے آنے کی وجہ سے صحت ایمرجنسی کے نفاذ میں توسیع کی گئی ہے۔ اس سے قبل صوبائی محکمہ صحت نے گزشتہ ماہ 3 فروری کو صوبے میں صحت ایمرجنسی کے نفاذ کا اعلان کیا تھا۔ صحت ایمرجنسی کے بعد پبلک ہیلتھ کمیٹی کے ممبر محکموں کو وباء کے تدارک کے لیے ذمہ داریاں سونپی جاتی ہیں جو کہ متعلقہ محکموں نے مشترکہ حکمت عملی کے تحت سرانجام دینی ہوتی ہیں۔ محکمہ صحت نے صوبے میں صحت ایمرجنسی سے متعلق اپنے گزشتہ اعلامیے میں ترمیم کرتے ہوئے نئے نوٹیفکیشن میں اپنے ماتحت تمام اداروں، خود مختار اور نیم خودمختار انسٹیٹیوٹس کو بھی شامل کیا ہے تاکہ وہ کورونا وائرس سے بچاؤ، تدارک اور اس سے نمٹنے کے لیے وسیع پیمانے پر اقدامات کر سکیں۔ صوبے میں صحت ایمرجنسی کے نفاذ سے خیبرپختونخوا ریونیو اتھارٹی کو آگاہ کرتے ہوئے استدعا کی گئی ہے کہ محکمہ صحت کو کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر حفاظتی سازوسامان (پی پی ایز) اور دیگر آلات کی خریداری کرنی ہے جس کے لیے اتھارٹی رولز میں نرمی کرے۔

دریں اثنا محکمہ صحت خیبرپختونخوا نے صوبے میں قائم اسپیشل آئسولیش یونٹس اور سرحدی اضلاع کے ہسپتالوں کو کوورنا وائرس سے بچاؤ کے لیے حفاظتی سازوسامان و آلات کی فراہمی شروع کر دی ہے۔ اس سلسلے میں گزشتہ روز میران شاہ، خیبر، مہمند، بونیر، مردان، صوابی اور سوات کو پرسنل پروٹیکٹو ایکوپمنٹ (پی پی ایز) فراہم کیا گیا۔ ڈائریکٹر پبلک ہیلتھ خیبرپختونخوا ڈاکٹر اکرام اللہ کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر صوبے کے حساس قرار دیئے گئے اضلاع جن میں کرم، کوہاٹ، ہنگو، کرم اور اورکزئی کے ہسپتالوں اور ڈی ایچ اوز کو ترجیح بنیادوں پر حفاظتی سازوسامان فراہم کیا گیا ہے۔ اسی طرح پنجاب اور بلوچستان کے ساتھ جڑے اضلاع ڈیرہ اسماعیل خان اور نوشہرہ میں بھی یہ سامان مہیا کیا جا چکا ہے۔ کورونا وائرس سے بچاؤ کے حفاظتی سازوسامان کے حوالے سے ڈاکٹر اکرام اللہ کا کہنا تھا کہ اس میں تھرمل گنز شامل ہیں جس سے کسی کا بھی ٹمپریچر فوری چیک کیا جا سکتا ہے۔ اسی طرح اس سامان میں این 95 ماسک، دستانے، ہیڈ کور اور شو کور سمیت سر سے پاؤں تک جسم ڈھانپنے والا گاؤن ڈانگری شامل ہے۔ حفاظتی سامان سے صحت عملے کو مشتبہ مریضوں سمیت کنفرم کیسز کی دیکھ بھال میں مدد ملے گی۔


شیئر کریں: