Chitral Times

Aug 23, 2019

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • پاکستان نے مقبوضہ کشمیر سے متعلق بھارتی اعلان مسترد کردیا

    August 5, 2019 at 11:49 pm

    اسلام آباد(چترال ٹائمز رپورٹ) پاکستان نے مقبوضہ کشمیر سے متعلق بھارتی اعلان مسترد کرتے ہوئے کہا بھارت کاکوئی بھی یکطرفہ قدم کشمیر کی متنازعہ حیثیت ختم نہیں کرسکتا، بھارتی حکومت کافیصلہ کشمیریوں اور پاکستانیوں کیلئیناقابل قبول ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان نے مقبوضہ کشمیر سے آرٹیکل 370 ختم کرنے کے بھارتی اعلان مسترد کردیا، ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل نے کہا مقبوضہ کشمیر بین الاقوامی طورپر متنازعہ علاقہ ہے، بھارت کاکوئی بھی یکطرفہ قدم کشمیر کی متنازعہ حیثیت ختم نہیں کرسکتا۔ترجمان کا کہنا تھا سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق یہ متنازعہ علاقہ ہے، بھارتی حکومت کافیصلہ کشمیریوں اور پاکستانیوں کیلئیناقابل قبول ہے، بطور فریق پاکستان اس غیرقانونی اقدام کے خلاف ہرممکن قدم اٹھائے گا۔ڈاکٹر فیصل نے کہا پاکستان کشمیری عوام کی ساتھ کھڑا ہے، کشمیری عوام کی سیاسی،سفارتی اوراخلاقی حمایت جاری رہیگی۔یاد رہے بھارتی پارلیمنٹ کے اجلاس میں بھارتی وزیرداخلہ نے آرٹیکل370 ختم کرنے کا بل پیش کیا، تجویز کے تحت غیر مقامی افراد مقبوضہ کشمیر میں سرکاری نوکریاں حاصل کرسکیں گے۔بعد ازاں بھارتی صدر نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کے بل پر دستخط کر دیے اور گورنر کاعہدہ ختم کرکے اختیارات کونسل آف منسٹرز کو دے دیئے، جس کے بعد مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم ہوگئی۔خیال رہے آرٹیکل تین سو ستر مقبوضہ کشمیرکوخصوصی درجہ دیتے ہوئے کشمیر کو بھارتی آئین کا پابند نہیں کرتا، مقبوضہ کشمیر جداگانہ علاقہ ہے، جسے اپنا آئین اختیارکرنے کا حق حاصل ہے۔دوسری جانب بھارتی اپوزیشن کا ایوان میں احتجاج کرتے ہوئے حکومت کا فیصلہ ماننے سے انکار کردیا ہے۔واضح رہے مقبوضہ کشمیرمیں صورتحال انتہائی کشیدہ ہے، لوگ گھروں میں محصورہوکررہ گئے، کشمیری رہنما محبوبہ مفتی،عمرعبداللہ اورسجاد لون سمیت دیگر رہنماؤں کوبھی نظربند کردیاگیا ہے۔مقبوضہ وادی میں دفعہ ایک چوالیس نافدکر کیوادی میں تمام تعلیمی اداروں کو تاحکم ثانی بنداور لوگو ں کی نقل وحرکت پربھی پابندی عائد کردی گئی ہے، سری نگر سمیت پوری وادی کشمیرمیں موبائل فون، انٹرنیٹ، ریڈیو، ٹی وی سمیت مواصلاتی نظام معطل کردیاگیا ہے جبکہ بھارتی فورسز کے اہلکاروں نے پولیس تھانوں کا کنٹرول سنبھال لیا ہے۔
    ……………………………………………………………………………………………………………………..

    آرٹیکل 370 کا خاتمہ جنگی جرم ہے،مشعال ملک کا معاملے کو اقوام متحدہ میں لے جانے کا مطالبہ
    اسلام آباد(سی ایم لنکس)حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک کا کہنا ہے کہ بھارت دنیا کا مافیا اورقبضہ گروپ ہے، آرٹیکل 370 کا خاتمہ جنگی جرم ہے، معاملے کو اقوام متحدہ میں لے جایا جائے۔تفصیلات کے مطابق کشمیری رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک نے کہا ہے کہ کشمیرکی تحریک میں آج سیاہ ترین دن ہے، مقبوضہ کشمیرکی جداگانہ حیثیت بھی ختم کردی گئی۔مشعال ملک نے کہا کہ بھارت دنیا کا مافیا اور قبضہ گروپ ہے جس نے کوئی قانون نہیں مانا، بھارت نے ا?ج تک کشمیریوں کا خون چوسا ہے۔ مقبوضہ کشمیرسے متعلق اقوام متحدہ کی قراردادیں موجود ہیں، کوئی بھی غیرمقامی قانون مقبوضہ کشمیرمیں زمین نہیں لے سکتا۔حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں اپنی فوجی نفری بڑھا رہا ہے، مسئلے کو فوری طور پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل لے جایا جائے۔مشعال ملک کا یہ بھی کہنا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیرمیں اپنی فوجی نفری بڑھا رہا ہے، جنگی ہیلی کاپٹروں سے مقبوضہ کشمیرمیں نگرانی کی جا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ 1947 میں بھارت نے ہزاروں کشمیریوں کوقتل کیا، وہی گیم پلان اب پھرسے دہرایا جا رہا ہے۔یاد رہے کہ آج بھارت نے مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کردی، بھارتی صدر نے ا?رٹیکل 370 ختم کرنے کے بل پر دستخط بھی کردیے ہیں۔مقبوضہ کشمیرکی صورت حال پربھارتی پارلیمنٹ کا اجلاس ہوا تھا، بھارتی وزیراعظم نریندر مودی پارلیمنٹ کے اجلاس میں شریک ہوئے تھے۔بھارتی وزیرداخلہ امیت شاہ نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کا بل پارلیمنٹ میں پیش کیا،بل کی تجاویز کے تحت غیر مقامی افراد مقبوضہ کشمیر میں سرکاری نوکریاں حاصل کرسکیں گے اور 370 ختم ہونے سے مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم ہوجائے گی۔بعد ازاں بھارتی صدر نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کے بل پر دستخط کر دیے اور گورنر کاعہدہ ختم کرکے اختیارات کونسل آف منسٹرز کو دے دیے۔
    ……………………………………………………………………………………………………..

    مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے سے بھارت بے نقاب ہوگیا، صدر آزاد کشمیر
    مظفرآباد(چترال ٹائمز رپورٹ)صدر آزاد جموں و کشمیرسردار مسعود خان کا کہنا ہے کہ آرٹیکل 370 بھارت نواز جماعتوں کی وفاداریاں خریدنے کے لیے بنایا گیا تھا۔تفصیلات کے مطابق صدر آزاد کشمیر مسعود خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے سے بھارت بے نقاب ہوگیا، بھارت 70 سال سے مقبوضہ کشمیر پر قابض ہے۔سردار مسعود خان نے کہا کہ آرٹیکل 370، 35 اے کے خاتمے کا تحریک آزادی پر کوئی اثر نہیں پڑے گا، آرٹیکل 370 بھارت نواز جماعتوں کی وفاداریاں خریدنے کے لیے بنایا گیا تھا۔صدر آزاد جموں و کشمیرسردار مسعود خان نے کہا کہ بھارتی اقدام سلامتی کونسل کی قرارداد 91، 122 کی کھلی خلاف ورزی ہے۔یاد رہے کہ آج بھارت نے مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کردی، بھارتی صدر نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کے بل پر دستخط بھی کردیے ہیں۔مقبوضہ کشمیرکی صورت حال پربھارتی پارلیمنٹ کا اجلاس ہوا تھا، بھارتی وزیراعظم نریندر مودی پارلیمنٹ کے اجلاس میں شریک ہوئے تھے۔بھارتی وزیرداخلہ امیت شاہ نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کا بل پارلیمنٹ میں پیش کیا،بل کی تجاویز کے تحت غیر مقامی افراد مقبوضہ کشمیر میں سرکاری نوکریاں حاصل کرسکیں گے اور 370 ختم ہونے سے مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم ہوجائے گی۔بعد ازاں بھارتی صدر نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کے بل پر دستخط کر دیے اور گورنر کاعہدہ ختم کرکے اختیارات کونسل آف منسٹرز کو دے دیے۔
    ………………………………………………………………………………………………………..

    آرمی چیف جنرل قمرباجوہ نے کل کور کمانڈرز کانفرنس طلب کرلی
    اسلام آباد (سی ایم لنکس)آرمی چیف جنرل قمرباجوہ نیکل کورکمانڈرزکانفرنس طلب کرلی، جس میں بھارت کیغیرآئینی قدم،ایل اوسی صورتحال اور بھارت کے کسی ممکنہ مس ایڈونچر کا بھرپورجواب دینے پرغور کیا جائے گا۔تفصیلات کے مطابق آرمی چیف جنرل قمرباجوہ نیکل کورکمانڈرزکانفرنس طلب کرلی ہے، کانفرنس میں بھارت کے غیر آئینی قدم، ایل اوسی صورتحال پر غور ہوگا جبکہ بھارت کے کسی ممکنہ مس ایڈونچر کا بھرپور جواب دینے پر بھی غور کیا جائے گا۔یاد رہے بھارتی پارلیمنٹ کے اجلاس میں بھارتی وزیرداخلہ نے آرٹیکل370 ختم کرنے کا بل پیش کیا، تجویز کے تحت غیر مقامی افراد مقبوضہ کشمیر میں سرکاری نوکریاں حاصل کرسکیں گے۔بعد ازاں بھارتی صدر نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کے بل پر دستخط کر دیے اور گورنر کاعہدہ ختم کرکے اختیارات کونسل آف منسٹرز کو دے دیئے، جس کے بعد مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم ہوگئی۔خیال رہے گذشتہ روز قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا تھا کہ پاکستان بھارت کی طرف سے کسی بھی جارحیت کا منہ توڑ جواب دے گا۔اجلاس میں تینوں مسلح افواج کے سربراہان شریک ہوئے، چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی نے بھی شرکت کی، ڈی جی آئی ایس پی آر، ڈی جی آئی ایس آئی، وزیر دفاع، وزیر خارجہ اور وزیر داخلہ بھی اجلاس میں شریک تھے۔قومی سلامتی کمیٹی نے کہا تھا کہ بھارت کشمیر میں ہر طرح کا اخلاقی اختیار کھو چکا ہے، کشمیر میں فوج کی غیر معمولی نقل و حرکت جلتی پر تیل کا کام کرے گی، پاکستان افغان امن عمل کے لیے بھرپور کوششیں کر رہا ہے، ایسے وقت میں بھارتی جارحیت قابل افسوس ہے۔اجلاس سے خطاب میں وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان کشمیریوں کے ساتھ ہمیشہ کھڑا رہے گا، بھارتی ہٹ دھرمی سے خطے کا امن سبوتاڑ ہو رہا ہے، بھارت عالمی قوانین کی مسلسل خلاف ورزی کر رہا ہے، عالمی رہنماؤں کی توجہ بھارتی مظالم کی طرف دلانا ہوگی۔

  • error: Content is protected !!