Chitral Times

Aug 23, 2019

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • گولین سیلاب؛ پانچ پل اور روڈ مکمل تباہ، مین بجلی گھرکوجذوی نقصان،بجلی اورپانی کی سپلائی منقطع

    July 8, 2019 at 5:25 pm

    چترال ( نمائندہ چترال ٹائمز ) چترال کی سیاحتی خوبصورت وادی گولین کے جام اشپار نامی گلئشیر کے پھٹنے سے گذشتہ رات سے رات سےسیلاب کا سلسلہ جاری ہے . سیلاب سے گولین ویلی روڈ , پانچ پل , ایک منی ہائیڈل پاور سٹیشن تین گھروں , دکانوں , مویشی خانوں اور بڑی مقدار میں زرعی آراضی , باغات کو نقصان پہنچا ہے . جبکہ ازغور کے مقام پر قدرتی جنگلات کے درخت جو سیلاب میں بہہ گئے تھے .بو بکا نامی گاؤں کے سامنے سیلاب کارخ تبدیل کیا . جس سے بڑے علاقے کو نقصان پہنچا . اور یہاں موجود واٹرسپلائی سکیموں کو بہا لے گیا . وزیر اعظم پاکستان کی بہن علیمہ خان جو اپنی فیملی کے دیگر افراد کے ساتھ گولین وادی میں سیاحت کی غرض سے گئی تھی . سڑکوں اور پلوں کی تباہی کی وجہ سے واد ی کے پانچ ہزارآبادی کے ساتھ محصو ر ہو گئی ہیں . اسسٹنٹ کمشنر چترال عالمگیر خان نےچترال ٹائمزڈآٹ کام کو بتایا . کہ گولین وادی کی سڑکیں مکمل طور پر ختم ہو چکی ہیں . اس لئے زمینی راستے کے ذریعے علیمہ خان اور فیملی کے دیگر افراد کو گولین سے نکالنا ممکن نہیں . اس لئے ان کو ریسکیو کرنے کے لئے ہیلی کاپٹر کی فراہمی کے سلسلے میں بات کی گئی ہے . انہوں نے کہا . کہ ابھی تک متاثرین تک نہیں پہنچا جا سکا ہے . اس لئے کسی بھی قسم کی ریلیف متاثرین کو نہیں دی جاسکی ہے . تاہم ان تک پہنچنے کیلئے امدادی ٹیمیں اور ریسکیو 1122مسلسل کوشش کر رہے ہیں . سیلاب سے گولین ہائیڈل پاور سٹیشن کا ہیڈ ڈیم بڑے بڑے پتھروں اور ملبے سے بھر گیا ہے . اور بجلی منقطع ہے. اطلاعات کے مطابق اس کی صفائی پر کئی دن لگ سکتے ہیں . کیونکہ صفائی کیلئے ایسکیویٹر وہاں پہنچانا بھی جان جو کھوں کا کام ہے . اگرچہ کوئی جانی نقصانات نہیں ہو ئے . تاہم کئی مرد و خواتین سیلاب کے دوران بھکڈر مچ جانے اور محفوظ مقامات کی طرف جاتے ہوئے زخمی ہوئے . مقامی شہری ٹی ایم او چترال قادر ناصر اور سفیر اللہ کے مطابق علاقے کے لوگ انتہائی مشکلات سے دوچار ہیں . اور ادویات و خوراک کی کمی کا سامنا ہے . اور حکومت کی طرف سے ایمرجنسی بنیادوں پر اقدامات نہیں کئے گئے . تو متاثرین سنگین نقصانات کا شکارہو سکتے ہیں . ابھی تک کسی بھی سرکاری آفیسریا اہلکار کی رسائی متاثرہ وادی تک نہیں ہوئی . اس لئےانتظامیہ کے پاس مکمل نقصانات کی اطلاعات نہیں ہیں . سیلاب سے گولین بجلی گھر کے سامنے دکانیں ختم ہو چکی ہیں . اور مشکیلی آر سی سی پل جو چترال بونی روڈ پر واقع ہے . کو بھی سیلاب سے نقصان پہنچنے کا خطرہ ہے . درین اثنا گولین سیلاب سے چترال ٹاون واٹر سپلائی سکیم کو نقصان پہنچنے سے چترال شہر میں پینے کے پانی کی شدید قلت پیدا ہو گئی ہے .اور ڈبلیو ایس یو نے پائپ لائن کے نقصانات کے باعث پانی کم استعمال کرنے کئلیے شہریوں سے اپیل کی ہے .
    اخری اطلاع کے مطابق علیمہ خان اور فیملی کو پیر کی شام بذریعہ ہیلی ریسکیو کرکے چترال پہنچا دیا گیاہے . دریں اثناالخدمت فاونڈیشن کے رضاکاروں‌نے پہاڑی راستوں سے ہوتے ہوئے امدادی اشیاء متاثرین تک پہنچا کرواپس کیمپ پہنچ گئے ہیں. جبکہ ریسکیو
    1122کے اہلکارہیوی میشنری کے ساتھ موقع پر موجود ہیں‌مگر راستہ نہ ہونے کی وجہ سے ہیوی مشینری اگے نہیں‌جاسکے ہیں‌. جس کی بنا پر ریسکیو اہلکار پیدل کیلئے راستہ بنانے کی کوششوں‌میں مصروف ہیں.



  • error: Content is protected !!