Chitral Times

Nov 21, 2019

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • خیبر پختو نخوا ہیلتھ کیئر کمیشن کے بورڈ آف گورنرز کا اجلاس، تین سالہ کار کردگی پیش

    July 1, 2019 at 10:49 pm

    پشاور(چترال ٹائمزرپورٹ) خیبر پختو نخوا کے وزیر صحت ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خان کی صدارت میں خیبر پختو نخوا ہیلتھ کیئر کمیشن کے بورڈ آف گورنرز کا اجلاس منعقد ہوا۔ سی ای او ہیلتھ کیئر کمیشن نے اجلاس میں تین سالہ کار کردگی پیش کی۔

    رپورٹ میں بتایا گیا کہ ہیلتھ کیئر کمیشن نے تنظیمی طور پر صوبے کو چار زونز میں تقسیم کیا ہے۔ پشاور زون (پشاور، مردان، صوابی، نوشہرہ، چارسدہ)، ہزارہ زون (ایبٹ آباد، ہری پور، مانسہرہ)، بنوں زون (کوہاٹ، بنوں، لکی مروت، کرک، ڈی آئی خان، ھنگو) اور سوات زون (ملاکنڈ، دیر، شانگلہ، مینگورہ، سوات، چترال)۔

    سی ای او ہیلتھ کیئر کمیشن نے مزید بتایا کے محکمے نے اپنے قیام کے تین سال میں 5286 صحت کی سہولیات فراہم کرنے والے اداروں کو رجسٹرڈ کیا۔ 4978 طبی مراکز صحت کو اعلیٰ معیار کی طبی سہولیات فراہم کرنے کے نوٹسز دیئے اور 3584 غیر قانونی مراکز صحت کو ناقص طبی سہولیات مہیا کرنے پر سیل کیاگیا۔ اسی طرح کمیشن کے قیام کے تین سالوں میں کمیشن نے طبی مراکز صحت کی رجسٹریشن کی مد میں مجموعی طور پر 159ملین روپے اور غیر قانونی و غیر معیاری طبی سہولیات فراہم کرنے والے اداروں سے جرمانے کی مد میں 89 ملین روپے وصول کئے۔ سی ای او نے اجلاس کو بتایا کہ ہیلتھ کیئر کمیشن، عوامی شکایات کا ہر ممکن ازالہ کرنے کے لئے مصروف عمل ہے اور اس ضمن میں اپنی تمام ترتوانائیاں بروئے کار لا رہا ہے۔

    اسی سلسلے میں ہیلتھ کیئر کمیشن کو پاکستان سیٹیزن پورٹل پر تقریبا 5 ماہ میں 1069 شکایات موصول ہوئی ہیں – جن میں سے 818 شکایات کا ازالہ کیا جا چکاہے اور 251 پر کام جاری ہے۔اس موقعے پر وزیر صحت ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خان نے کہا کہ عوام کو خدمات کی فراہمی میں کوئی کمی نہ برتی جائے اور عوام کی صحت سے کھیلنے والوں کو قانون کے مطابق سخت سزا دی جائے۔

  • error: Content is protected !!