Chitral Times

May 26, 2019

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • محکمہ ہیلتھ کے تمام اسٹاف صحت کے شعبے میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں…ڈی جی

    May 3, 2019 at 7:39 pm

    چترال (نمائندہ چترال ٹائمز)ڈائریکٹر جنرل پی ایچ ایس اے ڈاکٹر ایوب روز نے چترال میں درجہ چہارم کے ملازمین کی تربیتی ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ پراونشل ہیلتھ سروسز اکیڈمی ایک بہترین ادارہ ہے جو محکمہ کے انتظامی و جنرل کیڈر کے علاوہ نرسنگ،پیرا میڈیکس اور صحت کے دیگر شعبوں میں اعلیٰ تربیت فراہم کر رہا ہے جس سے ہمارے محکمہ صحت میں کافی بہتری آئی ہے۔انہوں نے کہاکہ کلاس فورصحت کے شعبے میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے ان کو محکمہ صحت خیبر پختونخوا کی طرف سے ہر قسم کی سہولیات فراہم کی جائیگی۔ طبی عملے کی اکثریت کو مریضوں کے ساتھ بلا تفریق حسن اخلاق،خندہ پیشانی اور خلوص کے ساتھ پیش آنے اور مریضوں کے جسمانی علاج کے ساتھ ساتھ ان کے دلوں اور روحوں پر لگے زخموں کی بھی مرہم پٹی پر آمادنہ کیا جا سکے کیونکہ انسانیت کے دکھ اور تکلیف کی حقیقت کو سمجھنے،محسوس کرنے اور اس دکھ اور تکلیف کے ازالے کے لئے کردار ادا کرین۔ خیبر پختونخوا حکومت صحت کے شعبے کے فروغ کیلئے ہنگامی بنیادوں پر کام کررہی ہے تاکہ صوبے کے عوام کو بلا امتیاز صحت کی سہولیات فراہم کی جاسکیں۔انہوں نے کہاکہ اس ورکشاپ کامقصددرجہ چہارم کے تمام اسٹاف کے کمیونیکیشین سکلزاوراخلاقیات کومزیدبہترکرناہے مریض کے ساتھ نرم رویے رکھنے سے آدھابیماری ٹھیک ہوتے ہیں۔ایک مریض کئی اُمیدین لے کرہسپتال پہنچتے ہیں اُن کے اُونچے آوازاورغصے کودرگزرکرکے صبراورنرمی سے پیش آئے وہ زندگی بھرآپ کے ہمدردی کویاد رکھے گا۔انہوں نے کہاکہ اپنے سینوں میں دھڑکنے والے دل،ضمیراوراحساسات کوجھنجھوڑ کریاددلاکرپوچھو کہ اس مقدس پیشے سے وابستگی کے وقت دکھی انسانیت کی خدمت کاجوعہداوروعدہ کیاتھا۔وہ پورا کررہے ہیں کہ نہیں۔ سرکاری ہسپتالوں میں مجبور، لاچار اور بے بس مریضوں کے جسمانی اور روحانی علاج کے حقیقی تقاضوں پر مبنی احساس اور شعور کو اجاگر کرنا آپ کی ذمہ داری ہے۔انہوں نے کہاکہ پراونشل ہیلتھ سروسز اکیڈمی صوبہ بھر کے انتظامی، جنرل، نرسنگ، پیرامیڈکس اور دیگر کیڈرز کیلئے تربیتی کورسز کا اہتمام کرتا ہے جس سے محکمہ صحت کے تمام اسٹاف میں بہتری آجائے اورعوام کوفائد ہ ہوسکیں۔ ڈائریکٹر جنرل پی ایچ ایس اے ڈاکٹر ایوب روز نے تربیتی ورکشاپ میں کہاکہ پی ایچ ایس اے نیٹ ورک اور اس ادارے کی پوری ٹیم نہایت جانفشانی کے ساتھ کام کر رہی ہے تاکہ چترال کے محکمہ صحت کو رول ماڈل بنایا جاسکے۔انہوں نے کہا کہ پی ایچ ایس اے کے مذکورہ تربیتی کورسز کو ہر سطح پر سراہا جا رہا ہے جو کہ اس ادارے کی اہمیت وافادیت کا منہ بولتا ثبوت ہے۔انہوں نے کہاکہ بنیادی طورپرہسپتال کے اندرغیرقانونی داخلے کوروکنا،ہسپتال کے اندرنظم ونقش کوبحال رکھنا،کسی بھی غیرقانونی اخلاقی حرکت کوادارے کی سربراہ کے نوٹس میں لانا،اندرہسپتال گشت کرنااورگندگی پھیلانے والوں کوروکنا درجہ چہارم کے تما م ملازمین کاذمہ داری ہے۔انہوں نے چترال میں نرسنگ کالج،ایل ایچ وی پبلک سکول اورجدیدٹریننگ ہال بنانے کااعلان کرتے ہوئے متعلقہ اسٹاف کوپی سی ون بنانے کی ہدایت کی ڈی ایچ ڈی سی چترال میں جونئیرکلرک دیگرخالی آسامیوں کوپرکرنے کی بھی یقین دہانی کی۔اس موقع پرڈپٹی ڈائریکٹرپی ایچ ایس اے خیبرپختونخوا ڈاکٹراکرم اللہ صافی،ڈپٹی ڈائریکٹرڈی ایچ ڈی سی چترال ڈاکٹرارشاداحمد،پروگرام سہولت کارسابق ڈسٹرکٹ اکاونٹ افیسرافسرعلی اورشاکرالدین نے خطاب کئے۔

     

  • error: Content is protected !!