Chitral Times

Jan 30, 2023

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

وزیراعلیٰ‌کی چیف سیکریٹری سمیت تمام داروں‌کے سربراہوں‌کوایمرجنسی صورتحال سے نمٹنے کی ہدایات

Posted on
شیئر کریں:

پشاور(چترال ٹائمز رپورٹ )‌وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے پاک بھارت کشیدگی کے تناظر میں چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل آف پولیس، سیکرٹری داخلہ اور تمام محکموں اور اداروں کے سربراہان کو ایمر جنسی صورتحال سے نمٹنے کیلئے خصوصی ہدایات جاری کی ہیں۔ہسپتالوں میں 25% بیڈزایمرجنسی سے نمٹنے کے لئے مختص کئے جائیں۔ ہر قسم کی ایمرجنسی کی صورتحال سے نمٹنے کے لئے مکمل تیاری ہونی چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ وفاق اور صوبہ دونوں کسی بھی ہنگامی صورتحال کا مقابلہ کرنے کیلئے تیار ہیں۔ بھارت پاکستان کی امن کی خواہش اور اس کے صبر و تحمل کو کمزوری نہ سمجھے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج صوبائی محکموں کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلیٰ نے محکموں کو ہدایت کی کہ انتظامی اور آپریشنل سرگرمیوں کے لئے ہمہ وقت تیاررہیں، ریسکیواور حفاظتی اقدامات مکمل کئے جائیں۔ وزیراعلیٰ نے ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کو مشکل صورتحال سے نمٹنے کے لئے تمام اقدامات اٹھانے کی بھی ہدایت کی۔ محکمہ صحت، ریلیف و بحالی، سیٹلمنٹ سمیت محکمہ خوراک، کمیونیکیشن، سوشل ویلفیئر ، ایجوکیشن اور انڈسٹری حالات پر نظر رکھیں اور اپنی ذمہ داریوں کے لئے کل وقتی تیاری پکڑیں۔ وزیراعلیٰ نے دشمن کو تیز تر جواب دینے پرپاکستان کی مسلح افواج اور فضائیہ کو پر خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان نے ہمیشہ امن کی بات کی ہے اور آج بھی خطے میں امن کیلئے کوشاں ہے ۔ پاکستان کسی جارحیت پر یقین نہیں رکھتا ۔ بھارت کی طرف سے کھلم کھلا دراندازی کے باوجود پاکستان کی سیاسی قیادت اور افواج نے انتہائی ذمہ داری کا مظاہرہ کیا ہے اور بھارت کو امن کا راستہ اختیار کرنے کی تجویز دی ہے تاہم وزیراعلیٰ نے کہاکہپاکستان کی امن کی کوششوں ،صبرو تحمل اور برداشت کو کمزوری نہیں سمجھنا چاہئے،دشمن کو منہ توڑ جواب دیناپوری قوم کی آواز ہے۔پوری قوم اپنے بہادر جوانوں کے ساتھ کھڑی ہے۔پاکستان کسی بھی جارحیت کا مقابلہ کرنے اور اپنے دفاع کی بھر پور صلاحیت رکھتا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ خطے میں امن پاکستان ، بھارت اور پورے خطے کے مفاد میں ہے ۔ انہوں نے بین الاقوامی برادری سے بھی کہاکہ وہ بھارت کیطرف سے کشیدگی اور دراندازی کا نوٹس لے۔
…………………………………………………………

پشاور(چترال ٹائمز رپورٹ )‌وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے ایبٹ آباد ، ڈی آئی خان، اور سوات میں زمونگ کور کے کیمپس کھولنے کی منظوری دی ہے ۔ انہوں نے پشاور میں بچیوں کیلئے بھی زمونگ کور کا علیحدہ کیمپس قائم کرنے کی منظوری دی ۔ انہوں نے زمونگ کور کے مذکورہ چار کیمپس کے قیام کیلئے پہلے سے دستیاب عمارتوں یا زمین کی فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ یہ زمونگ کور پراجیکٹ کو مضبوط کرنے اور اسے توسیع دینے کے حوالے سے صوبائی حکومت کے منصوبے کا نقطہ آغاز ہے ۔ مستقبل میں اسے دیگر اضلاع تک بھی توسیع دی جائے گی ۔ وہ وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں زمونگ کور کے حوالے سے اجلاس کی صدارت اور آزاد فاؤنڈیشن یو کے کے وفد سے گفتگو کر رہے تھے ۔ وزیراطلاعات شوکت یوسفزئی ،وزیر مواصلات اکبر ایوب اور سیکرٹری سوشل ویلفیئر اور پی ڈی زمونگ کور بھی اس موقع پر موجود تھے ۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ زمونگ کور سٹیٹ چلڈرن کیلئے اپنی نوعیت کا ایک منفرد ماڈل ہے ۔ اُن کی حکومت زمونگ کو ر پراجیکٹ کو ایبٹ آباد، سوات اور ڈی آئی خان تک توسیع دینے جارہی ہے ۔ اس کے بعد مستقبل میں صوبے کے دیگر علاقوں تک بھی زمونگ کور کو توسیع دی جائے گی ۔اس موقع پر فاؤنڈ یشن کے وفد نے سٹیٹ چلڈرن کی بحالی بشمول اُن کی دیکھ بھال ، تعلیم اور اُنہیں معاشرے کا مفید شہری بنانے کے حوالے سے تفصیلی بریفینگ دی ۔ اجلاس میں انکشاف کیا گیا کہ سٹیٹ چلڈرن میں سے ایک بچہ بہترین کھلاڑی بن چکا ہے جس نے پاکستان پریمیئر فٹبال لیگ کراچی میں شرکت کی ہے ۔ اجلاس میں سٹیٹ چلڈرن کے سماجی تحفظ کیلئے پی ٹی آئی حکومت کے سابقہ فیصلوں ، اس سلسلے میں کی گئی قانون سازی کے علاوہ معاشرے کے کمزور اور غیر محفوظ لوگوں ، گداگروں ، چائلڈ لیبر اور جیو میپنگ کے ذریعے ڈیٹا جمع کرنے کے حوالے سے فاؤنڈیشن کی طرف سے تیار کردہ مجوزہ گائیڈ لائنز پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا ۔ اجلاس میں سٹیٹ چلڈرن کے سماجی اور فزیکل جائزے کی بھی تجویز پیش کی گئی تاکہ اُن کے ٹیلنٹ کا اندازہ ہو سکے اور اُنہیں مجموعی سماجی فریم میں لایا جا سکے ۔ اس موقع پر بچوں کے تحفظ اور فلاح کیلئے زمونگ کور کے ذریعے صوبائی حکومت کی کاوشوں اور دیگر اقدامات کو سراہا گیا ۔چترال ٹائمز ڈاٹ کام ذرائع کے مطابق فاؤنڈیشن نے اس موقع پر سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ خیبرپختونخوا کے ساتھ ایک مفاہمتی یاداشت پر دستخط بھی کئے جو قانون سازی کیلئے صوبائی اسمبلی میں پیش کیا جائے گا۔ وفد سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے زمونگ کور ماڈل کو صوبے کے دیگر علاقوں تک توسیع دینے کا یقین دلایااور کہا کہ غیر محفوظ بچوں کو تحفظ دینے اور اُن کی بحالی کیلئے زمونگ کور کے دیگر اضلاع میں بھی کیمپس کھولے جائیں گے ۔ انہوں نے فاؤنڈیشن سے کہاکہ وہ سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کے ساتھ بیٹھ جائے اور ایک مکمل پلان وضع کرے ۔ انہوں نے یقین دلایا کہ اس پلان کی منظوری دی جائے گی اور سٹیٹ چلڈرن کی فلاح اور تحفظ کیلئے مزید ضروری نوعیت کی قانون سازی بھی کی جائے گی ۔ وزیراعلیٰ نے غیر محفوظ اور بے سہارا بچوں کے اعداد و شمار کے حوالے سے پہلے سے بہتر بیس لائن کو بھی سراہااور کہاکہ اس کی مدد سے پلان وضع کرنے میں مدد ملے گی اور سٹیٹ چلڈرن کو ایک تعلیم یافتہ یوتھ میں تبدیل کرنے اور صوبے کے مستقبل کا اثاثہ بنانے میں مدد ملے گی ۔ انہوں نے سٹیٹ چلڈرن کی بحالی کیلئے کثیر الجہتی حکمت عملی سے اتفاق کرتے ہوئے گھروں سے بھاگ جانے والے بچوں ، گداگروں اور چائلڈ لیبرز کے رویے اور طور طریقوں کے مطالعے کی ضرورت پر بھی زور دیا تاکہ حکومت اُن کی بحالی کیلئے حقیقت پسندانہ حکمت عملی وضع کر سکے ۔ محمود خان نے سٹیٹ چلڈرن کی معیاری تعلیم و تربیت کا بھی یقین دلایاتا کہ اُن کی استعداد اور صلاحیتوں کو نکھارا جا سکے ۔ انہوں نے کہاکہ حکومت معاشرے کے کمزورخاندانوں اور غیر محفوظ بچوں کی آمدنی میں اضافہ کیلئے تجاویز اور اقدامات کو بھی خوش آمدید کہے گی ۔ وزیر اعلیٰ نے کمیونٹی سے بھی کہاکہ وہ آگے آئے اور معاشرے کے بے سہارا اور کمزور خاندانوں اور بچوں کی معاونت کیلئے کوششوں میں اپنا کردار ادا کرے ۔ انہوں نے کہاکہ حکومت ان لوگوں کی استعداد میں اضافے کیلئے بھی کام کرے گی تاکہ معاشرے میں موجود کمزوریوں کی وجہ سے خلاء کو پر کیا جاسکے ۔ محمود خان نے سٹیٹ چلڈرن کے محفوظ مستقبل کا یقین دلایا اور کہاکہ ہم معاشرے کے غریب طبقے کیلئے کام کرنے کیلئے سیاسی عزم کا اظہار بدستور کر چکے ہیں اور اس پر کام بھی کر رہے ہیں ۔انہوں نے پاکستان سے باہر رہنے والے پاکستانیوں کے سٹیٹ چلڈرن کی فلاح کیلئے حکومتی کوششوں کا حصہ بننے کے حوالے سے عزم اور اخلاص کو بھی خوش آمدید کہا ۔ محمود خان نے کہاکہ وہ پی ٹی آئی کی حکومت پر سمندر پار پاکستانیوں کے اعتماد کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ انہوں نے یقین دلایا کہ حکومت لوگوں کی توقعات پر پورا اُترے گی ۔
…………………………………………………………

وزیر اعلیٰ کی احتشام خان کو ضلع ناظم اعلیٰ مردان منتخب ہونے پر مبارکباد
پشاور(چترال ٹائمز رپورٹ )‌خیبرپختونخوا کے وزیر اعلیٰ محمود خان نے ضلع ناظم مردان کے انتخابات میں پاکستان تحریک انصاف کے اُمیدوارا حتشام خان کو کامیابی پر مبارکباد دی ہے اور اُن کی فتح کو پاکستان تحریک انصاف کی عوامی مقبولیت اور صوبائی حکومت کے عوامی فلاح اور نظام کی اصلاح کیلئے اُٹھائے گئے اقدامات اورپالیسیوں کا مظہر قرار دیا ہے اُنہوں نے احتشام خان کے نام جاری تہنیتی پیغام میں کہا ہے کہ یہ واضح کامیابی عمران خان کی قیادت اور پی ٹی آئی پر مردان کے عوام کے غیر متزلزل اعتماد کی عکاس ہے۔ لوگ اپنے مستقبل کیلئے صرف پی ٹی آئی پر اعتماد کرتے ہیں ۔ پاکستان تحریک انصاف کی جملہ کاوشوں کا مرکز و محور عام آدمی کی فلاح ہے روایتی سیاستدان تحریک انصاف کا مقابلہ نہیں کر سکتے ۔ وزیر اعلیٰ نے اس اُمید کا اظہار کیا کہ نومنتخب نا ظم اعلیٰ اپنے علاقے کی تعمیر و ترقی، عوامی مسائل کے حل اور پارٹی کو مزید مضبوط بنانے کیلئے مخلصانہ کردار ادا کریں گے اور سرکاری محکموں اور اداروں سے کرپشن و اقرباء پروری کا خاتمہ کرکے انہیں عوامی توقعات کا آئینہ دار بنانے کے مشن میں ہر اول دستے کا کردار ادا کریں گے اُنہوں نے سیاسی بالغ نظری کا مظاہر ہر کرنے پر مردان کے باشعور عوام کو بھی خراج تحسین پیش کیا۔
………………………………………………………………………………….

وزیراعلیٰ‌نے مختلف قسم کی 60 گاڑیاں محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے آفسیرز کے حوالے کی ہیں
پشاور(چترال ٹائمز رپورٹ )‌خیبرپختونخوا کے وزیر اعلیٰ محمود خان نے مختلف قسم کی 60 گاڑیاں محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے آفسیرز کے حوالے کی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کو گاڑیوں کی تقسیم سے محکمے کی کارکردگی اور بھی بہتر ہو جائے گی ۔ انہوں نے منشیات روک تھام بل بہت جلد صوبائی اسمبلی سے پاس کرانے کا عندیہ دیا ہے جس سے صوبے میں منشیات کے ناسور سے مکمل چھٹکار ا مل جائے گا۔ انہوں نے محکمہ ایکسائز میں سروسر سٹرکچر کو بہتر بنانے کیلئے کمیٹی بنانے کا اعلان بھی کیااور کہاکہ ڈیپارٹمنٹ کے اہلکاروں کیلئے جزا و سزا کا قانون ہو گا۔ چیمبراور بزنس کمیونٹی کے مسائل حل کرنے کیلئے بھی صوبائی حکومت کوشاں ہے ۔ محکمہ ایکسائز کے افسروں کیلئے اضلاع میں سرکاری دفاتر مہیا کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے ۔ وزیراعلیٰ نے محکمہ ایکسائز کی مختلف قسم کی 13 گاڑیاں یتیم خانوں اور سکولوں کو عطیہ کرنے کا بھی اعلان کیا ہے ۔وزیراعلیٰ نے اپنے ہاتھوں سے محکمہ ایکسائز کی طرف سے ایک بولان گاڑی یتیم خانہ جو کہ عبد الصمد میموریل ٹرسٹ کے زیر انتظام ہے، کو باضابطہ طور پر عطیہ کی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ایکسائز کے افسران کی مختلف اضلاع میں رہائش کیلئے ہر ممکن اقدام اُٹھائیں گے ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جو اچھا کرے گا اُن کو جز ا اور جو غلط کرے گا اُسے سزاملے گی ۔ ان خیالات کا اظہار وزیراعلیٰ نے ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے افسروں کو گاڑیاں تفویض کرنے کی قیوم سٹیڈیم میں منعقدہ ایک پروقار تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ صوبائی حکومت کے ترجمان و وزیراعلیٰ کے مشیر برائے قبائلی اضلاع اجمل وزیر ، وزیر زراعت محب اﷲ خان ، ایم پی ایز جہانداد خان ، ملک واجد ، سیکرٹری ایکسائز ، ڈی جی ایکسائز اور سرحد چیمبر آف کامرس کے صدر فیض محمد خان و دیگر حکام نے تقریب میں شرکت کی۔ سیکرٹری ایکسائزاینڈ نارکوٹکس اور ڈی جی ایکسائز و نارکوٹکس نے محکمہ کے حوالے سے وزیراعلیٰ کو تفصیلی بریفنگ دی ۔ وزیراعلیٰ نے محکمہ ایکسائز کے سنٹرلائزڈنظام متعارف کرنے ،جس سے ڈیپارٹمنٹ بین الاقوامی معیار کے مطابق کام کرنا شروع کردے گا اور صوبے میں جاری گاڑیوں کی رجسٹریشن بکس کو سمارٹ کارڈ میں تبدیل کرنے کے لائحہ عمل کو بہت سرا ہاجس سے نہ صرف فیلڈ سٹاف کو چیکنگ میں آسانی ہو گی بلکہ صارفین کے وقت کی بچت بھی ہو گی ۔انہوں نے محکمہ ایکسائز کو پراپرٹی ٹیکس کی ڈیجٹیلائزیشن اور ای۔ پیمنٹس کے عمل کو جلد سے جلد متعارف کرانے کی ہدایت بھی کی ۔وزیراعلیٰ نے صوبے کو تمام اضلاع میں ٹیکس فسلیٹیشن سنٹر ز (ٹی ایف سی) کے قیام کا عندیہ دیا ہے جس سے لوگوں کو ٹیکس پیمنٹ میں آسانی اور سہولت میسر آئے گی ۔ انہوں نے حیات آباد میں محکمہ ایکسائز کے ٹیکس فسلیٹیشن سنٹر اور دیگر دفاتر کیلئے آٹھ کنال زمین محکمے کو واپس دلانے کی بھی یقین دہانی کرائی ہے ۔ وزیراعلیٰ نے سرحد چیمبر آف کامرس اور بزنس کمیونٹی کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرانے کی یقین دہانی کرائی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف کے پچھلے دور حکومت میں بھی صوبائی حکومت نے محکمہ ایکسائز میں تجدیدی کام کئے تھے اور اب بھی اس صوبے میں دوبارہ تحریک انصاف کی حکومت ہے ۔ ہم نے تمام محکموں کو جدیدیت کی طرف لیکر جانا ہے ۔ محکمہ ایکسائز وٹیکسیشن جیسا کہ اس کے نام سے واضح ہے بہت اہم محکمہ ہے ۔ آج کے اس عمل سے اس محکمے کی کارکردگی مزید بہتر ہو جائے گی جو صوبے کیلئے خوش آئند بات ہے ۔ صوبائی حکومت محکمے کی مضبوطی اور استحکام کیلئے ہر ممکن سپورٹ اور مدد فراہم کرے گی ۔ انہوں نے محکمہ ایکسائز کے افسران کو یقین دلایا کہ جو آپ کا حق ہے چاہے وہ دفاتر کے حوالے سے ہے یا دیگر مسائل ہیں ہماری حکومت آپ کے ساتھ کھڑی ہو گی ۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ وہ اُمید رکھتے ہیں کہ افسران اپنے فرائض منصبی ایمانداری سے ادا کریں گے ۔اس موقع پر وزیراعلیٰ نے اچھی کارکردگی دکھانے والے افسران میں انعامات اور سرٹیفکیٹس بھی تقسیم کئے ۔ وزیراعلیٰ نے ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن آفیسر اکرام اﷲ کو ریٹائرمنٹ کے موقع پر شیلڈ بھی پیش کی ۔ اس موقع پر سیکرٹری ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن نے وزیراعلیٰ اور اجمل وزیر کو اعزازی شیلڈ بھی پیش کی ۔ تقریب سے سیکرٹری اور ڈی جی ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن ، سرحد چیمبر آف کامرس کے صدر فیض محمد خان نے بھی خطاب کیا۔
………………………………………………………….

مودی سرکارکوآج صحیح انجکشن لگاہے.. وزیراعلیٰ‌
پشاور(چترال ٹائمز رپورٹ )‌ خیبرپختونخوا کے وزیر اعلیٰ محمود خان نے کہا ہے کہ مودی سرکاری کو جنگ کا بخار چڑھا ہوا ہے اور جب بخار ہوجائے تو علاج ضروری ہوتا ہے ۔ آج ان کو صحیح انجکشن لگا ہے ۔ان خیالات کا اظہار قیوم سٹیڈیم پشاور میں ایک تقریب کے دوران میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ جہاد فرض ہے ہم پر اور ایسا نہ ہو کہ انڈیا کا نام دُنیا کے نقشے سے مٹ جائے ۔ پوری قوم پاک فوج کے ساتھ کھڑی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مودی سرکاری گزارا کرے ورنہ انڈیا تاریخ کا حصہ بن کر رہ جائے گا۔ اس حوالے سے ہم نے صوبائی اسمبلی اور قومی اسمبلی سے قرارداد بھی پاس کی ہے ۔ میں بطور وزیراعلیٰ پختون قوم کی طرف سے انڈیا کو یہ پیغام دینا چاہتا ہوں کہ ہم ویسے بھی حالت جنگ میں ہیں ایسا نہ ہو کہ انڈیا کا وجود ہی دُنیا سے ختم ہو جائے ۔ اس جنگ میں تمام صوبائی حکومتیں، وفاقی حکومت اور پاک فوج ایک پیج پر ہیں ۔ خطاب کے دوران پورا ہال پاکستان زندہ باد کے نعروں سے گونج اُٹھا ۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ پاکستان قوم کو نہ آزمایاجائے اور نہ ہی ہمارے صبر کو ہماری کمزور ی سمجھا جائے ۔ پوری قوم پاک فوج کے پیچھے کھڑی ہے ۔ ہم ملک کے دفاع کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ۔


شیئر کریں: