Chitral Times

Oct 15, 2018

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • بالائی اورزرین چترال میں بارش،متعدد مقامات پرسیلا ب سے فصلوں، سڑکوں اورباغات کو نقصان ،سڑکیں بند

    August 9, 2018 at 5:40 pm

    شاگرام، پرواک، دروش (نمائندگان چترال ٹائمز) بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب چترال کے پہاڑی علاقوں میں موسم کی پہلی موسلا دھار بارش کے نتیجے میں شیشی کوہ ، مداک لشٹ ، پرواک، میراگرام نمبر دو، یارخون ڈیزگ، کھوتان لشٹ، اجنوگول اور شاگرام میں سیلابی ریلے نے گندم کی تیار فصلوں، باغات اور سڑکوں کونقصان پہنچایا اور شاگرام پل بھی دریامیں بہہ گئی اور کئی ایریگیشن چینل بھی متاثر ہوگئے ۔ موسلا دھار بارش کا ضلعے کے جنوبی حصے سے داخل ہونے کے بعدشیشی کوہ وادی میں کئی گھنٹوں تک شدید بارش کا سلسلہ جاری رہا اور ندی میں شدید طغیانی کا سبب بنا جس سے کڑاس کے مقام پر دروش مداک لشٹ روڈ بند ہوگئی ۔ اسی طرح یارخون وادی کے ڈیزگ کے مقام پر سیلابی ریلے نے سڑک کو کئی سو میٹر تک بہا لے گئی ہے جس سے اپر یارخون اور بروغل کارابطہ منقطع ہوگئی جبکہ سینکروں گھرانوں کے گندم کی فصل کو بہالے گئی جس کی ابھی کٹائی ہوئی تھی ۔ ادھر پرواک گاؤں میں نیصر گول میں اونچے دریا کی سیلابی ریلے نے قریبی زمینات اور سڑک کو بہالے گئی جبکہ پرواک کے دیگر حصوں میں پہاڑوں سے بھی سیلابی ریلے نے تقریباً دو سو گھرانوں کو متاثر کیا اور فصلوں اور پھلوں کے باغات کو نقصان پہنچادیا۔ موسلادھار بارش کا سلسلہ تورکھو وادی میں بھی جاپہنچا جہاں شاگرام گاؤں میں سیلابی ریلے نے کھیتوں اور باغات کو زبردست نقصان پہنچادیا اور شاگرام پل دریا میں بہہ جانے کی وجہ سے کھوت، ریچ اور اجنو گاؤں کے ساتھ رابطہ منقطع ہوگئی ۔ ضلعی انتظامیہ کے مطابق ابھی تک کسی جگہ مکانات کے سیلاب میں بہہ جانے یا جانی نقصان کی اطلاعات موصول نہیں ہوئی ہیں ۔ متاثرہ علاقوں میں عوام فوری امداد کے منتظر ہیں ۔ خصوصی طور پر ٹریفک کو دوبارہ بحال کرنے کیلئے فوری اقدامات کا مطالبہ کررہے ہیں۔ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ چترال ٹاون و ملحقہ علاقوں میں بارش نہیں ہوئی ۔



  • error: Content is protected !!