Chitral Times

Dec 11, 2018

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • جی بی پروفیسر ایسوسی ایشن کے وفد کی قراقرم یونیورسٹی کے وائس چانسلر سے ملاقات۔اہم امور پر پیش رفت

    July 26, 2018 at 9:27 pm

    گلگت(چترال ٹائمز رپورٹ ) گلگت بلتستان پروفیسراینڈ لیکچرار ایسوسی ایشن کے صدر پروفیسر ارشاداحمد کی صدارت میں پروفیسرا یسوسی ایشن کے ایک وفد نے قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر عطاء اللہ کے ساتھ ایک اہم میٹنگ ان کی دفتر میں کی۔ایسویس ایشن کے صدر پروفیسر ارشاد احمد شاہ نے وائس چانسلر اور اس کی ٹیم کے سامنے گلگت بلتستان کالجز کے لیکچراروں اور پروفیسروں کی نمائندگی کرتے ہوئے درج ذیل اہم امور پر وی سی کو تفصیلی بریفنگ دی۔جن میں کے آئی بورڈ کے ایگزام کنڈیکٹنگ، پیپر اسسمنٹ، پیپر سیٹنگ اور پریکٹیکل کے حوالے پروفیسروں کے تمام تحفظات بلاکم وکاست وی سی کے سامنے رکھا۔ ارشاد احمد نے کہا کہ یونیورسٹی ایگزام کنڈکٹ کرنے کے لیے کوئی میکنزم تیار کیا جانا چاہیے۔ انسپکشن کے لیے پروفیسروں کی ٹیم تشکیل دی جانی چاہیے جن میں کالجز کی بھرپور نمائندگی ہو۔اور سیکرٹریٹ اور ڈائریکٹریٹ سے بھی نمائندے لیے جائیں۔پیپر چیک کرنے کا ریٹ اور ہیڈ ز کو دیا جانے والا الاونس بھی ناکافی ہے جو فوری طور پر بڑھایا جائے۔امتحانات کے حوالے سے۔ بہت ساری کمزوریاں پائی جاتی ہیں ان کو دور کیا جانا ازبس ضروری ہے ہر دو سال بعد بورڈ کے عملے کو چینج کیا جاوے۔ تاکہ بچوں اور والدین کو یونیورسٹی کے ساتھ بورڈ پر بھی اشکالات نہ ہوں۔ اور نہ ہی کوئی اپنی من مانی کرے۔ایگزام لینے اور پیپر سیٹنگ اور اسسمنٹ کے لیے ٹریننگ اور ورکشاپ کا انعقاد بھی لازمی طور پر کیا جانا چاہیے تاکہ پروفیسر حضرات جدید اسٹائل کے مطابق کام کرسکیں ۔پروفیسر ایسویسی ایشن کے صدر اور سیکرٹری جنرل عبدالرشید کی تمام بریفنگ سننے کے بعد ڈاکٹر عطاء اللہ نے کہا کہ میری ذاتی کوشش ہوگی کہ ان سب امور کو فوری طور پر بہتر سے بہتر بنایا جائے گا۔ وی سی نے کہا کہ ان تمام امور کے لیے ایک ایڈوائزری کمیٹی تشکیل دی جائے گی جس میں پروفیسر ایسوسی ایشن، ڈائریکٹریٹ آف ایجوکیشن، سیکرٹریٹ آف ایجوکیشن اور قراقرم یونیورسٹی کے نمائندے شامل ہوں اور میں بطور چیئرمین اس کمیٹی میں کام کروں تاکہ یہ تمام تحفظات فوری دور کیے جاسکیں۔ارشاد احمد نے مزید کہا کہ پرائیویٹ کالجز اور اسکولوں نے کے آئی یو کے ساتھ الحاق ختم کرکے فیڈرل بورڈ کے ساتھ الحاق شروع کیا ہے۔ اگر یونیورسٹی انتظامیہ کا انداز یہی رہا تو گورنمنٹ کالجز بھی اپنا الحاق فیڈرل بورڈ کے ساتھ کریں گے جو ان کا قانونی حق ہے۔قبل اس کے کہ یونیورسٹی کے ذمہ داران اپنے اعتماد کو بحال کرنے کے لیے ہنگامی اقدامات کریں۔ڈاکٹر عطاء اللہ نے پروفیسر ایسوسی ایشن کے وفد کے تمام مطالبات کو بروقت قرار دیتے ہوئے سنجیدگی سے فوری طور پر حل کرنے کا عندیہ دیا اور جلد ہی خوشخبری سنانے کا کہا۔اس پر پروفیسر ایسوسی ایشن کے صدر نے وی سی کا خصوصی شکریہ ادا کیا اور آئندہ بھی اس طرح باہمی مشاورت سے امور انجام دینے کی کوشش کو خوب سراہا۔

  • error: Content is protected !!