- Chitral Times - https://chitraltimes.com - Chitral Times

غذر، نالہ برصوات سے سیلابی پانی کے اخراج کا سلسلہ جاری ، انتظامیہ الرٹ، ٹینٹ ویلیج قائم کردیا

اشکومن(کریم رانجھا) ؔ نالہ برصوات سے سیلابی پانی کے اخراج کا سلسلہ جاری ،ضلعی انتظامیہ الرٹ،متا ثرین کے لئے ٹینٹ ویلیج قائم کردیا گیا،محکمہ صحت اور آغا خان ہیلتھ والوں نے سکول کی عمارت میں میڈیکل کیمپ قائم کردیا ،مریضوں کا علاج جاری،جی بی ڈی ایم اے کے ذمہ داران فوکس اور مقامی والنٹئیرز کے تعاون سے بحالی کے کاموں میں مصروف ،پانی کے بہاؤ میں اضافے کی وجہ سے بلہنز گاؤں کے نشیبی علاقوں میں مقیم افراد نے محفوظ مقامات کی جانب منتقل ہونا شروع کردیا۔مورخہ 17جولائی کی شام نالہ برصوات میں گلئشئیر کے ٹوٹنے کی وجہ سے آنے والے سیلاب نے علاقے میں درجنوں گھروں کو نقصان پہنچایا اور اب تک وقفے وقفے سے سیلابی ریلہ آنے کا سلسلہ جاری ہے،بلہنز کے مقام پر دریائی کٹاؤ کے باعث مرکزی سڑک بلاک ہوچکی ہے،ڈپٹی کمشنر غذر شجاع عالم نے محکمہ صحت،تعمیرات،جی بی ڈی ایم اے ودیگر محکموں کے ذمہ داران کے ہمراہ متاثرہ علاقے کا پیدل دورہ کیا اور خیمے ادویات سمیت دیگر ضروری سامان متاثرہ علاقے تک پہنچا دئے گئے ہیں ۔محکمہ صحت نے آغا خان ہیلتھ سروس کے تعاون سے میڈیکل کیمپ قائم کردیا ہے جہاں مریضوں کا علاج جاری ہے ،جی بی ڈی ایم اے اور فوکس کے اہلکاران بھی موقع پر پہنچ گئے ہیں اور بحالی کے کاموں میں حصہ لے رہ ہیں۔بلہنز کے مقام پر خیمہ بستی قائم کیا گیا ہے جہاں متاثرین کو سہولیات فراہم کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔

دریں اثنا نالہ برصوات سے آگے 180 گھرانوں کا رابطہ تاحال منقطع ،تین روز گزر جانے کے باوجود ادویات اور خوراک نہیں پہنچائی جاسکی ،متاثرہ علاقے میں ہیضہ کی وباء پھوٹ پڑنے کی اطلاع،محکمہ برقیات کے اکلوتے واکی ٹاکی کے ذریعے حالات سے آگاہی لی جارہی ہے،بلہنز کے مقام پر تحصیلدار اشکومن خالد انور نے میڈیا کو بتایا کہ برصوات نالے سے آگے آٹھ گاؤں کے 180گھرانوں تک امدادی اشیاء پہنچانے کے لئے کوششیں جاری ہیں تاہم اب تک کامیابی نہیں ملی ہے،علاقے کو ملانے والا واحد پل سیلاب کی نذر ہوچکا ہے ،مذکورہ علاقے کے 600افراد تک امداد پہنچانے میں کامیابی نہیں ملی ہے۔میڈیا سے بات کرتے ہوئے جی بی ڈی ایم اے کے اہلکار نے بتایا کہ ہمارا بنیادی فوکس انسانی جانوں کو بچانا ہے،اس کے علاوہ متاثرہ علاقوں میں پھنسے افراد تک پہنچنے کی کوششیں جاری ہیں تاکہ ان تک ادویات اور خوراک پہنچا یا جا سکے۔مقامی افراد نے میڈیا کو بتا یا کہ علاقے میں ہیضہ کی وباء پھوٹنے کی بھی اطلاعات ہیں لہذاصوبائی حکومت ہیلی کاپٹر کے ذریعے ادویات اور کھانے پینے کی اشیا ء پہنچانے کا بندوبست کرے۔