Chitral Times

Nov 17, 2018

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • جنرل پرویز مشرف کے کاغذات برائےقومی اسمبلی این اے ون چترال میں جمع کرائے گئے

    June 11, 2018 at 6:33 pm

    چترال ( محکم الدین ) سابق صدر پاکستان اور آل پاکستان مسلم لیگ کے صدر پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی این اے ون چترال کیلئے داخل کر دیے گئے ۔ پارٹی کے ضلعی صدر سلطان وزیر ، ویمن ونگ کی سکرٹری جنرل تقدیرہ اجمل ، فوکل پرسن وقاص احمد ایڈوکیٹ ، شہزادہ امیر الحسنات پی کے ون کے نامزد امیدوار اور محسن حیات نے پارٹی ورکروں کے ایک بڑے ہجوم میں پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی ریٹرننگ آفیسر این اے ون ایڈیشنل ڈسٹرکٹ جج چترال محمد خان کو پیش کی ۔ اس موقع پر آل پاکستان مسلم لیگ کے سابق واحد ایم این اے شہزادہ افتخارالدین بھی پاکستان مسلم لیگ ن کی طرف سے این اے ون کے کاغذات نامزدگی داخل کرنے کیلئے موجود تھے ۔ پیر کے روز کاغذات نامزدگی کے داخلے کی آخری تاریخ ہونے کی بنا پر ریٹرننگ آفیسران کے آفس کی حدود میں امیدواروں اور اُن کے حامیوں کا زبردست رش رہا ۔ اور ریٹرننگ آفیسران بھی بغیر وقفہ کئے مسلسل کام کرتے رہے ۔سابق صدر پرویز مشرف کی طرف سے کاغذات نامزدگی داخل ہونے کے بعد چترال کی انتخابی ماحول میں گرمی آگئی ہے ۔ لیکن اب بھی لوگوں کو اس بات کا یقین نہیں ہے ۔ کہ پرویز مشرف الیکشن لڑنے کیلئے پاکستان اور چترال آسکتے ہیں ۔ پرویز مشرف کی پارٹی کی طرف سے ڈاکٹر امجد این اے ون چترال ،تقدیرہ اجمل اور سلطان وزیر نے این اے ون اور پی کے ون اور شہزادہ امیرالحسنات المعروف شہزادہ گل و محسن حیات نے پی کے ون کیلئے کاغذات نامزدگی داخل کئے ۔ پرویز مشرف کی طرف سے کاغذات ناصر علی شاہ نے جمع کیا اوررسید وصول کیا جبکہ مشرف کی طرف کی تجویز کنندہ کے طور پر مشرف کے معروف دوست احمد خان آف برغوزی نے دستخط کئے جبکہ ان کے بیٹے کا نام بطور تائید کنندہ درج تھا۔ اسی طرح پاکستان مسلم لیگ ن کی طرف سے سابق ایم این اے شہزادہ افتخار الدین این اے ون ، عبدالولی خان ایڈوکیٹ پی کے ون کیلئے کاغذات نامزدگی داخل کئے ۔قبل ازین متحدہ مجلس عمل کی طرف سے صوبائی اسمبلی کے اُمیدوار ہدایت الرحمن نے جمیعت العلماء اسلام کے درجنوں کارکنان اور نامزد امیدوار این اے ون چترال مولانا عبد الاکبر چترالی کی معیت میں کاغذات نامزدگی داخل کی ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مولانا عبد الاکبر نے کہا ۔ کہ چترال کے لوگوں کی ہر مرتبہ یہ خواہش رہی ہے ۔ کہ علماء اور مذہبی جماعتوں میں اتحاد ہو ۔ اور مسجد و مدرسہ اتفاق و اتحاد کا مظاہرہ کریں ۔ تو آج یہ عوام کیلئے انتہائی خوشی کا مقام ہے ۔ کہ علماء میں اتحاد قائم ہوا ہے اور ایم ایم اے کے پلیٹ فارم سے الیکشن کیلئے میدان میں ہیں ۔ اس لئے چترال کے لوگ بھی اپنے مطالبے کا پاس رکھتے ہوئے ایم ایم اے کے امیدواروں کو بھاری اکثریت سے کامیاب کریں ۔ بعد آزان پاکستان پیپلز پارٹی کی طرف سے این اے ون چترال کیلئے سابق ایم پی اے سلیم خان اور پی کے ون کیلئے سابق ایم پی اے حاجی غلام محمد نے کاغذات نامزدگی داخل کی ۔ کاغذات نامزدگی داخل کرنے سے پہلے نامزد امیدوار سلیم خان اور حاجی غلام محمد نے کہا ۔ کہ پیپلز پارٹی جب بھی اقتدار میں آئی ہے ۔ چترال کیلئے ناقابل فراموش کام کئے ۔ چترال کے اندر ترقیاتی منصوبوں کی ایک طویل فہرست موجود ہے ۔ جنہیں پیپلز پارٹی کی حکومت اور اُن کے نمایندوں نے ممکن بنا یا ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ اقتدار میں آنے کے بعد تعلیم و صحت کے ساتھ ساتھ چترال تاجکستان روڈ ، چترال گلگت روڈ ، گولین بجلی کی ٹرانسمیشن لائن بچھانا ، چترال مستوج اور چترال ٹو بمبوریت روڈ کی تعمیر ہماری تر جیح ہیں۔ انہوں نے کہا ۔ کہ ہم ہی چترال کو دو ضلع بنائیں گے ۔ سلیم خان اور حاجی غلام محمد نے لوگوں سے اپیل کی ۔ کہ ترقی کو سامنے رکھ کر اپنے ووٹ کا استعمال کریں ۔ اس موقع پرکارکنان نے پارٹی کے حق میں زبر دست نعرے لگائے ۔ سیاسی پارٹیوں کے علاوہ بھی بڑی تعداد میں آزاد اُمیدواروں نے کاغذات نامزدگی داخل کئے ہیں ۔ جن میں سابق بیورکریٹ شہزادہ دروشپ تیمور خسرو سر فہرست ہیں جنہوں نے این اے ون کیلئے کاغذات نامزدگی داخل کی ہے ۔ جبکہ شہزادہ امان الرحمن بھی پی کے ون کیلئے کاغذات نامزدگی داخل کریں گے ۔ سیاسی پارٹیوں میں پاکستان تحریک انصاف کی طرف سے این اے ون کیلئے عبداللطیف ، پی کے ون کیلئے اسرار الدین اور عوامی نیشنل پارٹی کی طرف سے این اے ون کیلئے عیدالحسین اور پی کے ون کیلئے ڈاکٹر سردار احمد نے پہلے ہی کاغزات نامزدگی داخل کر دیے ہیں تاہم کاغذات نامزدگی داخلے کا سلسلہ جاری ہے ۔ اس لئے ریٹرننگ آفیسران کی طرف سے این اے ون چترال اور پی کے ون چترال کے امیدواروں کی فائنل فہرست کا انتظار ہے ۔





  • error: Content is protected !!