Chitral Times

Nov 22, 2018

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • گلگت بلتستان کےعوام بھارتی حکومت اور متحدہ اپوزیشن کے پروپیگنڈے کو مسترد کرتی ہے۔۔۔رانی صنم

    May 28, 2018 at 7:20 pm

    گلگت ( چترال ٹائمز رپورٹ ) گورننس آرڈر 2018 ؁ء گلگت بلتستان کو جہاں بھارتی حکومت نے مسترد کر دیا ہے تو وہاں مقامی اپوزیشن رہنماؤں کی سخت مخالفت سے واضح ہوگیا ہے کہ بھارتی حکومت اور مقامی اپوزیشن رہنماؤں کا موقف ایک ہی ہے ۔ایسا لگ رہا ہے کہ یہ لوگ ہاں میں ہاں ملارہے ہیں۔ گلگت بلتستان کے عوام بھارتی حکومت اور متحدہ اپوزیشن کے پروپیگنڈے کو مسترد کرتے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان مسلم لیگ “ن” خواتین ونگ کی سینئر نائب صدر رانی صنم فریاد ؔ کی صدارت میں منعقدہ پارٹی ورکر اجلاس میں کیاگیا ۔ اجلاس میں کہا گیا کہ نیا آئینی مسؤد ہ 2018 ؁ء گزشتہ پیپلز پارٹی کے مسؤدہ 2009 ؁ء سے کئی گنا بہتر اور بااختیار ہے۔ اسی وجہ سے ہمارے اذلی دشمن بھارت کے پیٹ میں بھی درد ہونا شروع ہوگیا ہے اور ان کے ساتھ مقامی نام نہاد اپوزیشن لیڈر شور شرابہ کر ارہے ہیں۔ ان کے شور شرابوں اور احتجاجی دھرنوں کے پیچھے ان کے ذاتی مفادات کار فرما ہیں ۔ ان میں سے بعض اپوزیشن لیڈروں کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ اپنے بچوں و عزیز و اقارب کے لیے اعلیٰ سرکاری عہدے ڈھونڈ رہے ہیں اور پیغامات بھیج رہے ہیں تو دوسری طرف سادہ عوام کو بے وقوف بنا رہے ہیں ۔ اجلاس میں یہ بھی کہا گیا کہ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمٰن بہادر اور قوم کے لیے باعث فخر لیڈر ہیں جن کی مخلصانہ کوششوں سے گلگت بلتستان میں نہ صرف امن و خوشحالی کے پھول کھل چکے ہیں بلکہ علاقہ تعمیر و ترقی کی شاہراہ پر گامزن ہے۔

  • error: Content is protected !!