Chitral Times

Dec 3, 2021

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

حالیہ رپورٹ کے مطابق تعلیم کے لحاظ سے صوبہ خیبرپختونخوا سب سے اگے ہے۔۔ محمد عاطف

شیئر کریں:

پشاور ( چترال ٹائمز رپورٹ ) خیبر پختونخوا کے وزیر تعلیم محمد عاطف نے کہا ہے کہ صوبے میں تعلیم کے انفراسٹرکچر کوملک کے تمام صوبوں بشمول دارالحکومت اسلام آباد کے مقابلے میں آگے لے جانے کے بعد پاکستان تحریک انصاف کی زیر قیادت صوبائی حکومت نے تعلیم کے معیار اور صنفی مساوات کے پیش نظر ایسی کئی درجہ زیادہ سبقت کے حصول کیلئے اپنی توجہ مرکوز کر رکھی ہے۔ اس سلسلے میں خیبر پختونخوا میں پی ٹی آئی حکومت کو اس وقت سراہا گیا جب رپورٹ میں یہ بات سامنے آئی کہ پرائمری سکولوں کے انفراسٹرکچر سکور میں پنجاب اور اسلام آباد کے مقابلے میں خیبر پختونخوا کو سب سے اعلیٰ درجہ دیا گیا ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان بشمول آزاد کشمیر میں بجلی کی دستیابی کیلئے دس پرفارمنگ اضلاع میں سے آٹھ خیبر پختونخوا میں ہیں جبکہ سکولوں میں پینے کے پانی کی دستیابی کے حوالے سے ٹاپ ٹین کا درجہ حاصل کرنے والے اضلاع میں بھی پانچ اضلاع خیبر پختونخوا کے ہیں اسی طرح پاکستان میں ٹوائلٹ کی سہولت کی دستیابی کے حوالے سے بھی دس ٹاپ اضلاع میں سے چھ اضلاع خیبر پختونخوا کے ہیں جبکہ چاردیواری رکھنے والے سکولوں کے حوالے سے ٹاپ دس اضلاع میں سے بھی چھ اضلاع خیبر پختونخوا کے ہیں جبکہ مجموعی ضلعی تعلیم کے حوالے سے سکور میں بھی خیبر پختونخوا کا ضلع ہری پور سب سے اعلیٰ درجے پر ہے۔رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ مڈل سکولوں میں انفراسٹرکچر سہولیات کے حوالے سے پورے پاکستان میں خیبر پختونخوا میں ملاکنڈ پروٹیکٹڈ ایریا سب سے پہلے درجے پر ہے جس کے بعد پھر خیبر پختونخوا کے ہی ضلع صوابی کا درجہ ہے۔الف اعلان کے تحت ڈسٹرکٹ ایجوکیشن رینکنگ 2017 کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے خیبر پختونخوا کے وزیر تعلیم محمد عاطف نے یہ بھی کہا کہ صوبائی حکومت نے تعلیمی اداروں میں سہولیات کی فراہمی کے ساتھ ساتھ شعبہ تعلیم میں سیاسی مداخلت بشمول ٹیچرز کے تبادلوں اور تعیناتیوں کو ختم کر دیا ہے اس کے علاوہ بائیو میٹرک سسٹم شروع کر کے اساتذہ کی غیر حاضریوں کو بھی ختم کر دیا ہے اور دوسری جانب اساتذہ کی بھرتیاں این ٹی ایس کے ذریعے شفاف طور پر کی جا رہی ہیں جبکہ تعلیم کے شعبے میں صنفی محرومی کے خاتمے کیلئے 70فیصد نئے سکول یا ترقیاتی بجٹ صوبے میں لڑکیوں کی تعلیم کیلئے مختص کر دیا گیا ہے جبکہ دور دراز اور پسماندہ اضلاع اور ایسے اضلاع جن میں صنفی خلاء پایا جائے کی طالبات کو باقاعدگی سے وظائف اور سکالر شپس دئیے جا رہے ہیں۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ مذکورہ گرلز سکولوں کی ہیڈ ٹیچرز کو سپیشل الاؤنس دئیے جا رہے ہیں تاکہ وہ طالبات کی تعلیم پر خصوصی توجہ دیں۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم میں بنیادی مسئلہ سیاسی مداخلت اور گورننس کا ہے جس کو پی ٹی آئی نے سنجیدگی سے لیا اور اس کی کامیابی کا نتیجہ رپورٹ میں نمایاں طور پر ظاہر ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ ڈیوٹی سے غیر حاضریوں پر سینکڑوں اساتذہ کے خلاف کارروائیاں کی گئی ہیں لیکن ہماری مہم یہاں محدود نہیں تھی بلکہ اس دوران محنتی اور اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے اساتذہ کو باقاعدگی سے انعامات بھی دئیے جارہے ہیں جبکہ دوسری جانب اساتذہ کی تربیت پر بھی خصوصی توجہ دی جا رہی ہے۔


شیئر کریں: